All Pakistani Dramas Lists
Latest Episodes of Dramas - Latest Politics Shows - Latest Politics Discussions

View RSS Feed

Kajal89

Shaitaan ki tazah khuwahish

Rate this Entry
      
   
تو نے جس وقت یہ انساں بنایا یارب
اس گھڑی مجھ کو اک آنکھ نہ بھایا یارب

اس لیے میں نے اپنا سر نہ جھکایا یارب
لیکن اب پلٹی ہے کچھ ایسی ہی کایا یارب

عقلمندی اسی میں ہے کہ میں توبہ کر لوں!
سوچتا ہوں اب اس انساں کو سجدہ کر لوں

ابتدا تھی بہت نرم طبیعت اس کی
قلب و جاں پاک تھے، شفاف تھی طنیت اس کی

پھر بتدریج بدلنے لگی خصلت اس کی
اب تو خود مجھ پر مسلط ہے شرارت اس کی

اس سے پہلے کہ میں اپنا ہی تماشہ کر لوں
سوچتا ہوں اب اس انساں کو سجدہ کر لوں



پکتا رہتا ہے ہمیشہ لاوا اس میں

ایک اک سانس ہے اب صورت شعلہ اس میں
آگ موجود تھی کیا مجھ سے زیادہ اس میں

اپنا آتشکدہ ذات ہی ٹھنڈا کر لوں
سوچتا ہوں کہ اب انساں کو سجدہ کر لوں

اب تو یہ خوں کہ رشتوں سے بھی اکڑ جاتا ہے
باپ سے، بھائی سے، بیٹے سے بھی لڑ جاتا ہے

جب کبھی طیش میں ہتھے سے اکھڑ جاتا ہے
خود مرے شر کا توازن بھی بگڑ جاتا ہے۔

اب تو لازم ہے کہ میں خود کو سیدھا کرلوں
سوچتا ہوں کہ اب انساں کو سجدہ کر لوں

کچھ جھجکتا ہے، نہ ڈرتا ہے، نہ شرماتا ہے
میں برا سوچتا رہتا ہوں، یہ کر جاتا ہے

کیا ابھی اس کی مریدی کر لوں
سوچتا ہوں کہ اب انساں کو سجدہ کر لوں
__________________
Categories
poetry

Comments

Log in