All Pakistani Dramas Lists
Latest Episodes of Dramas - Latest Politics Shows - Latest Politics Discussions

Page 1 of 6 123 ... Last

Thread: افسوسناک خبر

      
   
  1. #1
    Rujail's Avatar
    Rujail is offline Its Amer. . .
    Andaz Apne Dekhte Hai Aaine
    Mein Woh... Aur Yeh Bhi Dekhte
    Hai Koi Dekhta Na Ho...
     
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    In search
    Posts
    2,893
    Quoted
    709 Post(s)

    افسوسناک خبر

    سنو ایسا بھی ہوتا ہے۔ ۔ ۔ افسوسناک خبر

    اسلام و علیکم ۔ ۔ ۔

    اس غم کے ماحول کو پر تائثر بنانے کیلئے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے۔ ۔ ۔۔
    ۔
    ۔
    ۔
    ۔
    ۔
    اہو ہوہووہہو۔ ۔ یہ بول کون رہا ہے۔ ۔ ۔ میں نے کہا خاموش۔ ۔۔
    ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
    ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔
    ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
    ارے اب بولو بھی۔ ۔ ۔بتائو نہ ایک منٹ ہو گیا بھی یا نہیں۔ ۔ عجیب لوگ ہو تم بھی یار۔ ۔ ۔ ذرا ٹائم دو۔ ۔سو ہی جاتے ہو۔ ۔ ۔
    اور آج مجھے زیادہ نہ بلوانا۔ ۔ ۔موڈ کا کدّو کش ہو گیا ہے۔ ۔ ۔

    آج ایف کے کی تمام سہیلیوں سے معافی مانگنے کا دن ہے۔ ۔ کیوں کے انکو ایک دلدوز خبر ملنے والی ہے۔ ۔ ۔
    وہ یہ کہ میری منگنی اور نکاح ہو گیا۔ ۔ ۔ ہاں ہاں۔ ۔ ایک دن کے فرق سے ۔ ۔ بلکہ بارہ گھنٹے کے فرق سے۔ ۔ ۔ یعنی اب ہم سلمہہ ہو گئے۔ ۔

    میں جانتا ہوں کے آپ لوگوں کی شدید صدمہ اور دکھ ہوا ہگا۔ ۔ کچھ کو دل کو دورہ بھی دماغ میں اٹھا ہوگا۔ ۔ ۔پر میں دلی طور پرآپ سب سے ہمدردی رکھتا ہوں اور تعزیتی طور پر تمام لڑکیوں سے معذرت ہے جن کے دل ٹوٹے ہیں۔ ۔ اب کیا کریں عمرو تو ایک ہی ہے ناں۔ ۔ ۔ کہاں سے لائیں ڈھونڈ کے یہ محبوب و محبوبہ۔ ۔ ۔۔ ہا ہا ہا ہا

    سننا چاہیں گے یہ سب کیسے ہوا۔ ۔ ۔ لو سنو۔ ۔ ۔

    سن نے والوں، سنو ایسا بھی ہوتا ہے۔ ۔ ۔
    جو جتنا اچھلے، اتنا ہی پھسلتا ہے۔ ۔
    حرکتیں ایسی جو کرتا ہے۔ ۔
    اور ابّا سے بھی ڈرتا ہے۔ ۔
    آئو تم بھی آج سن لو۔ ۔ ۔
    داستان ہے یہ کہ ایک تھا لونڈا،
    جسے سب ہی کہتے تھے دیوانہ۔ ۔۔
    اس دیوانہ کی دیوانگی کا
    دنیا بھر میں تھا مشہور افسانہ۔ ۔ ۔
    لونڈے کی یہ کہانی سن کے کہتے سبھی۔ ۔ اوئے لانتی تم لانتی تم۔ ۔ ۔(اب کیا سچی مچی کی لعنت سے دوں۔ ۔ ہنہہ۔ ۔ ۔ )

    سب کو مستی ہے چڑھی۔ ۔ گانا سننا ہے۔ ۔ یہ نہین سے بولیں سیدھی طرح بکو۔ ۔ پر نہیں۔ ۔ تفریح چاہئے سب کو۔ ۔ ۔

    گھر سے پیغام آیا۔ ۔ ۔جمعرات کو۔ ۔ ۔ ابا کا۔ ۔ ۔ ٹکٹ بھیج رہا رہو۔ ۔ جلدی کراچی مرو۔ ۔ ۔۔ ۔ اب مرو انہوں نے نہیں کہا تھا ۔ ۔ پر مطلب یہی تھا۔
    پھر ہم چلے کراچی۔ ۔ کچھ لوگ کہتے ہیں نہ کرانچی۔ ۔تو کرانچی میں اترا۔
    گھر پہنچا، اماں دیکھ کے جھوم اٹھیں۔ اب نے وقت ضائع کئے بغیر فریش ہونے کو باتھ روم بھیج دیا۔ مجھے ڈر ہوا کے آج کہین یہ مجھے خود نہ نہلا دیں۔ ۔ ۔ بنا پانی کے پائپ سے۔ ۔ ۔ جو کے میں پہلے بھی کئی بار اس نعمت بے بہا سے مشرف ہو چکا ہوں۔
    ابھی نہا کے نکلا تو گھر لوگوں سے بھرا ہوا تھا۔ انجانے چہرے۔ کوئی لفٹ بھی نہیں کرا رہا تھا۔
    بہن کی نظر پڑی تو جھٹ آئی اور بازو پکڑ کے ڈرائنگ روم میں لے گئی۔ ابّا نے ترچھی نظر نے ہمیں انکے برابر والے صوفہ پر بیٹھنے پر مجبور کر دیا۔
    انکل کو سلام کرو۔ ابا نے سامنے بیٹھے ہوئے خوبرو انسان کی طرف اشارہ کر کے کہا۔ ہم سوچ میں پڑ گئے کہ یہ انکل تو کسی اینگل سے نہیں لگتا۔ لونڈا سا ہے۔
    اتنی دیر لگتی ہے سلام کرنے میں۔ ۔ ابا نے گھور کر دیکھا اور ہم نے پھر بھی اپنی جگہ پر بیٹھے بیٹے سلام داغ دیا۔
    بیٹا یہ تمہارے انکل ہیں، جائو ہاتھ ملا کر آئو۔ ابا نے دانت پیس کر کہا۔ ابا کون انکل۔ ۔ کیا یہ لونڈا ۔ ۔ ۔مطلب لڑکا۔
    ابا نے قریب تھا اٹھ کے ایک دھپ لگا دیں، پر ہم نے اپنی عزت بچاتے ہوئے لونڈے انکل سے مصافحہ کیا تو تب پتا چلا، بالوں میں کلر لگا ہوا ہے، اور عمرکے پکے ہیں۔
    اچھا تو آپ انکے بیٹے ہیں۔ کیا نام ہے؟
    ابھی منہ سے کچھ اور نکلنے والا تھا کے جانتے بھی ہو اور نام بھی نہیں پتا، ابا کی نظروں کی تپش محسوس کرتے ہوئے سیدھا جواب دیا ۔ ۔ عمرو۔
    کیا کرتے ہیں آپ؟
    یہ لفط آپ پر ہر بار ہنسی نکل جاتی ہے۔ ۔ ۔ کے تھوڑا دیر ہمارے ساتھ رہنے کے بعد بندہ خود تو تڑاک پر اتر آتا ہے ہمارے ساتھ۔ ۔ ہا ہا ہا ہا۔ ۔ ۔
    جی انجنئیرنگ فرم میں ہوں۔ ۔ ۔تو آجکل تو سائیٹ پر ہوگے ۔ ۔ انہوں نے جھت دوسرا پانسا پھینکا؟ ہم تو چپ، جی جی۔ ۔ سائٹ ہر ہی ہوں۔ ۔ ۔
    جبھی رنگ تھوڑا سیاہ پڑ گیا ہے۔ ۔ ہا ہا ہا ۔ ۔انتنا کہہ کر جناب خود ہی ہنسنے لگے۔ ۔ ۔
    آفس کیسا جا رہا ہے؟ دبئی کا موسم تو گرم ہوگا کافی؟ جی جی 45 درجہ تک درجئ حرات ہوتا ہے۔ ۔ ۔47 بیٹا، کل کی یہی رپورٹ ہے۔
    اب ہم سے رہا نہیں گیا۔ ۔ ۔ ۔اب تو میرہ ہٹ گئی۔
    اس بار بارش کا بھی کوئی چانس ہے یا نہیں، 3 سال سے ایک بوند نہیں ٹپکی دبئی میں؟ میں نے خود ہی سوال کر دیا۔ ۔ ۔4 سال بیٹا۔ ۔ ۔اللہ مالک ہے دیکھو کیا ہوتا۔ ۔ دل کیا کے سر پھاڑ لو۔ ۔ یہ کیسا انٹرویو ہے جس میں سوال اور جواب ایک ہے شخص نے دینے ہیں۔

    بیٹا یہ بتائو، دبئی میں کام کی کیا پوزیشن ہے۔ کنسٹرکشن تو ہو نہیں رہی۔ بزنس کے اعتبار سے ایساکیا کیا جاسکتا ہے؟ ٹوالیٹ۔ ۔ ۔میں ٹوائلیٹ سے ہو آوں۔۔ ۔ میں تو اتنا کہہ کر ابا کے پاس سے اٹھ آیا۔ کیوں کے اب برداشت نہیں ہو رہا تھا۔ ابے ہم سب کی تپاتے ہین۔ ۔ توم ہماری تپا رہے ہو۔

    پھر تھوڑی دیر گیلری میں ہوا خوری کی تو خیال آیا کے بہن کی ہونے والے سسرال والے لگتے ہیں۔ ابا نے ایک بار پھر بلایا۔
    بیٹا ۔ ۔یہاں کرسی پر بیٹھ جائو۔ ہم بیٹھ گئے۔ ابھی پوری طرح سنبھلے بھی نہ پائے تھے کے گھر کے تمام افراد اور مہمان ہمارے گرد جمع ہو گئے۔ اور ہمین یوں تکنے لگے جیسے ۔ ۔ نیا نیا چڑیا گھر مین گوریلا آجائے تو سب لوگ اسے دیکھنے جاتے ہیں۔
    ایک مہذب سی خاتون نے ہمارے گلے میں پھولوں کا کنٹھا ڈالا۔ ۔ ۔ یہ تمہاری ہونے والی ساس ہیں۔ ۔ ۔کانوں میں کسی کے کھسر پھسر کرنے کی آواز ائی۔ ۔ جو کے کوئی اور نہیں میری فسادی بہن تھی۔
    دماغ سن۔ ۔ جسم من بھر وزنی ہو گیا۔ ۔ ہم اب تک یہی سمجھ رہے تھے کے بہن کی دن تاریخ یا پھر سیدھا بارات ہی ہوگی۔ ۔ کیوں کے ہم سے مشورہ کرنا یا کسی معاملے میں شامل کرنا کوئی ضروری سمجھتا نہیں۔ پر یہ تو کہانی ہی کچھ اور تھی۔
    ابھی یہ سوچنے کی کوش ہی جاری تھی کے ابا نے منہ میں قلاقند سے بھرا چمچا ٹھونس دیا۔ ۔ ۔ ۔ اللہ نصیب اچھا کرے۔ ابا نے دعا دی، امان نے گلے لگایا۔
    یہ تمہاری ساس۔ ۔ یہ سسر۔ ۔ یہ چچا اور یہ ماموں۔ ۔ ۔ابا ہمارے پاس کھڑے ہو کر سارے رشت ےایک کے بعد ایک گنوانے لگے اور ہم ابا کو سخت ناراضگی اور سرخ آنکھوں سے گھورتے رہے۔ ابا نے وجابی طور پر ہمارے کاندھے پر ہاتھ رکھ لیا کے کہیں ہم کوئی چراند نہ کر دیں۔
    یہ خالو کی تو۔ ۔ ۔ اس بری طرح منہ میٹھا کیا۔ ۔ جیسے چمچا منہ میں ڈالا نہین بلکہ گھسیڑا ہو۔ ۔ ۔اور ہمارا مسوڑہ چھیل ڈالا۔ ۔ دو منٹ کیلئے تو ہوش و حواس گم ہو گئے۔ ۔ جیسا کومہ میں چلا گیا ہوں۔ ۔ اس زور کی کلیف ہوئی۔ ۔ ۔۔ ۔
    ھے ھے ھے ۔ لگ گئی۔ ۔کوئہ بات نہیں ۔ ۔یہ کہہ کر ہنسنے لگے ۔ ۔دل تو کرا چمچا انکی چمکتی ٹنڈ پر مار دوں۔
    اس سے زیادہ زہریلی مٹھائی زندگی مین نہ کھائی تھی۔ موڈ سخت خراب۔ ۔ اور منصوبہ یہ کہ رات ہی کو دبئی واپسی ہوگی۔
    رات ۔ ۔ ۔ہم کیسی رات اور کہاں کا سفر۔ ۔۔ ۔ 2 گھنٹے تک یہی ادھم بازی چلتی رہی۔ ۔ اور رات کے 2 بج گئے۔
    اماں نے پیار سے سر پہ ہاتھ پھیرا۔ ۔ جیسی میری حالت مسجھ گئیں ہوں، اور بہن بھی میر تیور دیکھ کے سہم گئی تھی۔
    اسکے بعد ڈنر جسے میں نے بالکل ہاتھ نہیں لگایا۔ زبردستی دسترخوان پر بٹھایا۔ ہمارے ہاں بیٹھ کر کھانا کھایا جاتاہے، چاہے کیسا مہمان ہو اور کیسی تقریب۔ ۔ ۔
    ابا نے ایک نہیں 100 بار کہا،کے کھانا کھائو۔ ۔ پر میں بھی ضدی۔ ۔ نا کھانا تھا نہ کھایا۔ ۔ ۔ ابا نے دبے لفظوں کہا کے لوگ کیاکہیں گے۔ ۔ کتنا بے کہنا لڑکا ہے۔ ۔ ۔ اور ہم نے آگے سے کہا ۔ ۔ جو کہ ےگا منہ کی کھائے گا۔ ۔ ۔ ابا نے سوچا بدتمیز کہیں بے عزتی نا کرادے ۔ ۔ اس لئے خاموش ہوگئے۔
    تکلیف کیسی ہو ، پر نیند سے پہلے تک دکھ کا احساس رہتا ہے۔ ۔ ۔ کھانے کے دوران میں اٹھ گیا اور، اپنے روم میں چلا گیا۔ ۔ کچھ دیر لیتا معلوم ہی نہیں چلا کہ سو گیا۔ یاروں صبح 4 بجےاٹھتے ہیں فجر کیلئے۔ ۔ نیند تو آئے گی ہی ناں۔
    صبح ابا نے اٹھایا ناشتے کیلئے۔ کل نا دن میں کھانا کھایا تھا، کیوں کے جہاز کا کھانا پسند نہیں آتا ہمیں، رات میں دال ہی کالی تھی۔
    پوریاں پر حملہ ہوا، تو رات کی کہانی بھی یاد آگئی۔
    ابا نے تفصیل بتائی کے ۔ ۔ ایسے ایسے لوگ ہیں۔ امان نے لڑکی کے بارے میں بتانا شروع کر دیا۔ مین چپ چاپ سنتا رہا۔ ۔ مائی اللہ۔ ۔ اس دن مجھ پر ایسی چپ لگی تھی کے شائد منہ توڑ بھی دیتے تو ایک لفظ نا نکلتا۔
    میں واپس جا رہا ہوں۔ ۔ میں نے ساری باتوں کا بس اتنا جواب دیا۔
    واپس جائے گا۔ ۔ ابا نے کہا ۔۔ ہاں جائوں گا ۔ ۔ ایک ۔ ۔دو ۔ ۔ تین۔ ۔ اممممم۔ ۔ تین یا پھر چار دھپ لگائیں ابا نے کر میں تو میرا رکا سانس بحال ہو گیا، اور گنگ زبان کھل گئی۔ ۔ جائونگا جائونگا جائونگا۔ ۔ ایک اور دھپ ۔ ۔ ۔ ۔ بڑے میاں صاحب بہادر کا ہاتھ بڑا بھاری ہے۔ ۔ ۔ مار دیں۔ ۔تو بندہ سکتہ میں چلا جاتا ہے تھوڑی دیر کو۔ ۔ ۔
    چلا جا۔ ۔ تیرا پاسپورٹ میرے پاس ہے۔ ۔ ابا نے انکشاف کیا۔ ۔
    یار یہ کیا چیٹنگ پہ چیٹنگ ہے۔ ۔ ۔ مجھے بتانا تو تھا نا ایک بار۔ ۔
    اچھا اب ہو گیا آپکا مقصد پورا۔ ۔ ۔ اب مجھے جانے دیں۔ میں نے منہ بسورنا شروع کر دیا۔ ۔ ایسا کیسے ہوتاہے۔ ۔ ۔ حد ہوتی ہے نا یار۔
    چپ کر کے آگے کی بات سنو۔ ۔ ابا نے کہا ۔۔ نہیں سنوں گا میں کچھ بھی۔ ۔ ایک اور دھپ۔ ۔ بیٹھا رہ یہیں پر ۔ ۔ ہلنا مت اپنی جگہ سے۔ ۔ ۔ اگر کہین ادھر ادھر ہوا نا تو خیر نہیں۔ ۔
    اماں۔ ۔ خبردار جو کسی نے مجھے میری جگہ سے ہلانے کی کوشش کی ۔ ۔ ۔سنا نہیں ابا نے منع کیا ہے۔ ۔ ۔مجھے اپنے آپ پر غصہ تھا کے میں یہاں آیا ہی کیوں۔
    صبح سے ظہر ہوگئی۔ ۔ وہیں بٹھا کے رکھا مجھے۔ ۔ ۔
    ابا کو علم ہو چلا تھا۔ ۔ اب لونڈا ضد پر آگیا ہے۔ ۔ ایسے نہیں مانے گا۔ ۔
    اچھا سن میں نے آج کے دن تہمارا نکاح رکھ دیا ہے۔ اور جب تم مناسب سمجھو مجھے بتا دو، رخصتی کر دیں گے۔ اب ہم کب تک یہ ذمہ داریاں اٹھائیں۔ ۔۔
    کیا؟ نکاح۔ ۔ ۔کیا مطلب کل منگنی آج نکاح۔ نہ چٹ کا انتظار نہ پٹ کو دیکھا۔ ۔ جہاں آپ نے سارے کام کر دیے تو یہ ایک رخصتی کا گناہ مجھ پر کیوں۔ ۔ یہ بھی آپ ہی طے کر دیں۔۔ ۔ مجھے تو سخت غصہ آیا ہوا تھا۔ ۔ بلکہ کل رات سے مسلسل غصے میں تھا اور اب تو تھک چکا تھا۔ وہ کیا ہے کے اتنی دیر غصے میں رہا نہیں جاتا ناں۔ ۔ ۔سر درد کر رہا تھا۔ ۔
    بھئی اب تمہاری بھی مرضی ہونی چاہئے، ہم کوئی اتنے بھی ظالم نہیں ہیں۔ یہ میرے ابّا کو دیکھو۔ ۔ میرے باپ ہی ہیں نہ آخر۔ ۔ ۔۔
    بیل بج رہی تھی۔ ۔ دروازے پر کوئی آیا تھا۔ ۔
    ابا انکل آئے تھے، دروازے سے ہی یہ لفافہ پکڑا کر چلے گئے ، کے جلدی میں ہوں شام کا انتطام کرنا ہے۔ ابّا نے لفافہ میرے آگے کر دیا کے دیکھ کے بتائوں اس میں کیا ہے۔
    اس ساری بات میں ابھی تک لڑکی کا کہیں کوئی ذکر نہیں۔ ۔ ۔
    لفافے میں کیا تھا ۔ ۔ نکاح نامہ تھا۔ ۔ اور جس چیز نے مجھے سب سے زیادہ چونکا دیا وہ تھا۔ ۔ ۔ ۔
    لڑکی کا نام اور اسکے دستخط۔ ۔ ۔میرے لئے ایک بالکل نیا نام۔ ۔ اور میں صد فیصد انجان۔
    یہ چل کیا رہا ہے۔ ۔ یہ کون۔ ۔ دستخط کیسے کر دیئے۔ ۔ دل کی بات دل میں ہی رہ گئی۔
    ابا نے نکاح نامہ میرے ہاتھ سے لے لیا اور دیکھنے لگے۔ دیکھ لو۔ ۔ اب کچھ نہیں ہو سکتا۔ عصر میں تمہارا نکاح ہے۔ جائو تیاری کرو۔
    ابا چلے گئے اور میں وہیں پر بیٹھا سوچتا رہا کے چلو مین اس لڑکی کو نہیں جانتا خیر ہے۔ ۔ پر اس نے کیسے ایک انجان شخص کو ۔ ۔چلو بنا دیکھے ہی صحیح۔ ۔ پر کیسے۔ ۔ اتنا بڑا جوا۔ ۔ ۔ چلو میں دور کا ہی سہی۔ ۔ رشتہ دار ہی ہوتا۔ ۔ ۔ اور ابھی منگنی ختم ہوئی نہیں ۔ ۔اور یہ نکاح۔ ۔ ۔۔ یہ لڑکیاں بھی کتنا عجیب ہوتی ہیں۔ ۔ ۔ نہیں مانتی تو کسی کی نہیں مانتی ۔۔ اور جب مانتی ہیں تو ایسا کے ڈھونڈے سے مثال نہ ملے۔
    کب عصر ہوئی۔ ۔ کب مسجد گیا۔ ۔ دیھان ہی نہیں رہا۔ نکاح خوان نے جب ہم سے تیسری بار پوچھا اور ابا نے پیچھے سے ٹھوکا دیا تو ہم نے ایکدم یکسر سب کچھ بھلاکر پوری قوت سے انکار کرنا چاہ پر سوائے اس کے کہ کہا ہاں میں نے قبول کیا، منہ س کچھ اور نہیں نکلا۔۔ ۔ آپ لوگ بھی کہہ رہ ہونگے ۔ ۔ گھر آئی لکشمی کو کون ٹھکرائے۔ ۔ ۔ بندر کے ہات ناریل۔ ۔ دل میں لڈو۔ ۔ ۔ یہ سب ہو سکتا تھا پر اسطرح سے۔ ۔ ۔ ہم نے صرف اپنی سوچ سے تخلیق ہی کر سکتے ہین یا پھر کسی فلم کا سین ہو سکتا ہے۔ ۔
    مبارکبادیں۔ ۔مصافحہ معانقہ۔ ۔ کچھ پتا نہیں۔ ۔ مسجد سے گھر تک پہنچنے می ایک ہی بات دماغ میں تھی کہ ۔ ۔ میں نے ہاں کیوں کر دی۔
    مغرب کے بعد اماں نے ایک نیا سوٹ لا دیا اور پیار سے کہا ۔ ۔بیٹا یہ پہن لو۔ ۔ ۔
    اماں کل سے یہ میرا تیسرا سوٹ ہے۔ ۔ کیا میں کپڑتے ہی تبدیل کرتا رہونگا۔ ۔ ۔ میں نے اماں سے التجائیہ انداز میں کہا۔ ۔ بیٹا۔ ۔ ابھی تمہاےر سسرال جانا ہے ۔ ۔وہاں تمہاری دعوت ہے۔ ۔ ۔میں اماں کو پر شکوہ نظروں سے دیکھتا رہ گیا۔
    بیٹا یہ تمہارا اور تمہارے ابا کا معاملہ ہے۔ جو ہوا سو ہوا۔ ۔ تمکو پتا ہے اپنے ابو کا۔ ۔ ۔ طریقہ ٹھیک نہیں ہے۔ ۔ پر کام تو ٹھیک ہے نا۔ چلو شاباش کھڑے ہو جائو۔ خوشی کا موقع ہے اور گھر میں اداسی۔ ۔ یہ اچھی بات نہیں۔ چلو جلدی سے کھڑے ہو جائو۔
    یہ بات ٹھیک تھی ۔ ۔ کے میری موڈ کا اثر پورے گھر پر تھا۔ ۔ ۔ پر مین ہوں ہی ایسا۔ ۔ ۔جہاں سب کا موڈ بناتا ہوں۔ ۔ وہیں اس بات کا خود خیال رکھتا ہوں کے میرا موڈ گڑبڑ نا ہو۔ ۔ ورنہ تو بس۔ ۔ ہو گیا کام۔
    سسرال گئے۔ ۔ ڈنر کیلئے عالیشان دسترخوان لگایا گیا۔ خوب عزت اور آئو بھگت ہوئی۔ پر ہمارا دل ہی نہیں تھا کے کسی سے بات کریں۔ ۔ کتنے ہی لوگ ۔ ۔ لڑکے ۔ ۔لڑکیاں پاس آئے۔ ۔ پر ایک آدھ بات کے بعد کوئی ہم سے دوبارہ ہم کلام ہونے کی جرات نہ کر سکا۔ کہہ رہیں ہونگے کے لڑکی کی قسمت پھوٹ گئی۔ بہن نے بھی ایک بار آکر کہاکے موڈ تو ٹھیک کر لو۔ کافی کچھ سنائی ۔ ۔ آخر میں کہہ گئی ۔ ۔ ضدی نا ہو تو۔ ۔ ۔ سل گیا تھا میرا منہ۔
    کھانہ چکھنے کی حد تک کھایا۔ کھانے کے بعد ایک اور سرپرائز تھا۔ ۔ وہ یہ کہ دلھا اور دلہن کی رسم۔ ۔ اب یہ بتا نہیں کیا بلا تھی۔ ایسی سخت کوفت ہوئی نا کے بس۔ ۔ ۔ حالنکہ کے میں ایسی محفلوں میں رہتا ہوں ۔ ۔جہاں چھچچورا پن کا کویئ نہ کوئی موقع ضرور ہو۔ ۔
    ایک صوفہ پر بٹھایا گیا۔ ۔ ابھی ٹھیک سے بیتھ بھی نہیں پایا تھا کے سامنے سے ایک دلہن نما لڑکی۔ ۔ جسے کئی لوگ یوں تھامے ہوئے تھے ۔ ۔ جیسے کے ابھی گری اور جب گری۔ ۔ کو لائے اور ہمارے برابر بٹھا دیا۔
    زندگی میں سینکڑوں بار لڑکیوں کے برابر بیٹھا ہونگا۔ ۔ ۔ پر اتنی جھجک ۔ ۔ شائس پہلی بار محسوس ہوئی اور میں تھوڑا فاصلے پر سرک گیا۔ جس پر میرا خوب مذاق بھی اڑایا گیا کے لڑکا لڑکی سے زیادہ شرما رہا ہے۔
    درجنوں لڑکے لڑکیوں کے جھرمٹ میں، جہاں گھر کے بڑے بوڑھے بھی موجود ہوں۔ ۔ ہم سے ڈیمانڈ کی گئی کے ایک نظر دلھن پر بھی ڈال دیں۔ ۔ کیوں کے میں سارا وقت سر جھکا کے بیٹھا رہا تھا۔ پر ہم سے نہ ہوا۔ سوال اٹھا کے نام ہی ہوچھ لو۔ ۔ سلام ہی کر لو۔ ۔ ۔ تو منہ بندکرنے کیلئے ہم نے اتنا کہا کے ۔ ۔ سلام بنا مصافحہ(ہاتھ ملانا) اور ملاقات بلا معانقہ (گلے ملنا) ہمیں پسند نہیں۔
    اس پر سب کو معلوم ہو گیا کے ہمارے منہ میں بھی زبان ہے۔کتنیدیر رسم چلی معلوم نہیں۔ پر نہ میں نے نظر اٹھا کے دیکھا ۔ ۔خیر اسکی شرم اسے اجازت نہ دے رہی ہوگی ۔ ۔جابھی اس نے بھی نہیں دیکھا۔
    رسم ختم ہوتے ہی میں جھٹ سے جانے کیلئے کھڑا ہو گیا۔ بہت نرسو تھا۔ ۔ اور تیزی میں نقصان ہوا۔ ۔ فلمی سین۔ ۔ ۔ کسی ماں کے لاڈلے نے میرے ہم دونوں کے بھاری بھرکم پھولوں کے کنٹھوں کو جو لمبے بھی تھے۔ ۔ آخر سے باندھ دیا تھا۔
    اب ہم اٹھے تو گلا گردن جھکے اور محترمہ کو جھٹکالگے۔ ۔ ایک دو بار تو معلوم نہیں ہوا۔ ۔ ایک ہلچل سی مچ گئی۔ ۔ اور خوب ہی ہی ہاہا ہو ہو ہوا۔ ۔ ۔
    ہم تو بالکل ہی گڑبڑا گئے۔ ۔ حالت پہلے ہی ڈائون تھی۔ ۔ ۔ ہاتھ پائوں پھول گئے۔ ۔ ۔ اس وقت اونٹ کے گلے ڈلی گھنٹی نکالنے کی کشمکش میں ایک بار نظروں سے نظروں کا ٹکرائو ہوا۔
    میں کنجوس آدمی نہیں ۔ ۔ خوبصورتی کی تعریف ضرور کرتا ہوں اور دل سے کرتا ہوں۔ ۔ کوئی شک نہیں ایک دلکش چہرہ میرے سامنے تھا۔ پر میں کچھ کہے بنا اپنی جان چھڑا کر مجمع سے باہر آگیا۔

    رات دیر سے گھر پہنچے۔ ۔ ۔ کسی کا سونے کا موڈ نہین تھا۔ ۔ ہر چہرہ میری خوشی کے خاطر کھل رہا تھا۔ ۔سوائے میرے تھوبڑے کے۔ بیٹھک میں خوش گپیوں کا ماحول تھا۔ ایک ایک کر کے سب اپنے کمرے میں جانے لگے۔ ابا اماں اور میں باقی رہ گئے۔
    بیٹا دیکھ میری بات سنو۔ بھلے لوگ ہیں۔ لڑکی اچھی ہے۔ دعائیں دو گے ہمیں۔ مجھے معلوم تھا کے تم اتنی جلدی پر راضی نہیں ہوگے۔ ۔ پر بیٹا میری خوشی کی خاطر خوش ہوجا۔ ابا نے اور بھی بہت کچھ کہہ کر مجھے سمجھایا۔
    ابا مجھے واپس جانا ہے۔ میرا پاسپورٹ دے دیں۔ میں نے فقط اتنا ہی کہا۔ ابا میری بات پر خاموش ہو گئے۔
    پلیز مجھے جاناہے۔ میں نے ایک بار پھر کہا۔
    جیسے تمہاری مرضی۔ تمہارے پاسپورٹ وہیں ہے جہاں تم نے رکھا تھا۔ ابا نے افسردگی سے کہا اور کمرے کی طرف جانے لگے۔
    جانے سے پہلے ملکر تو جائو گے ناں؟ ابا نے پوچھا اور میں نے کوئی جواب نہیں دیا۔
    میں کمرے میں گیا اور اپنا ہینڈ بیگ چیک کیاتو معلوم ہوا کے ابا نے پاسپورٹ لیا ہی نہیں تھا۔ ۔ ابے بدھو۔ ۔ چیک تو کر لیتا پہلے۔ ۔ ابا کو کیسے معلوم ہوا کے پاسپورٹ کیاں ہے۔ ۔ دفع ہو۔ ۔ خود کو کوسنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں تھا۔
    صبح ناشتے پر اپنے سامان کے ساتھ پہنچا۔ جسکا صاف مطلب تھا کے مین واپس جا رہا ہوں۔
    اماں یہ دیکھ کے تڑپ اٹھیں۔ بیٹا کچھ دن اور رک جا۔ ابھی ایک دن ہی تو ہوا ہے۔
    اماں ابھی تو جانا ہے۔ اتنا کہہ کر ناشتے کرنے لگا۔ اماں ابا کو اشارے میں کچھ کہنے لگیں۔ سب نے چپ چاپ ناشتہ کیا۔ فارغ ہوا تو مٹرو کیب آچکی تھی۔
    اماں سے گلے ملا۔ اماں ہر دفع کی طرح اس بار بھی رخصت ہونے پر زاروقطار رو رہی تھیں۔ شائد اس بار پہلے سے زیادہ رو رہی تھیں۔ کئی بار گلے لگایا۔ ابا سے گلے ملا۔۔ ۔ بیٹا کچھ دن تو رک جا۔ اس طرح تو مت جا۔ ابا نے آخر اپنے منہ سے کہہ ہی دیا۔ ۔ ۔ کہاوت ہے نہ درخت ہی سایہ کرنے کو جھکتا ہے۔ ۔ اس لئے ابا ہی نے کہا۔
    ابا ۔ ۔ گھبرائیں مت۔ ۔ ہمیشہ کیلئے نہیں جا رہا۔ ۔ ۔ واپس آئونگا۔
    بہن سے ملکر اسکا ماتھا چوما اور کیب کی طرف بڑھ گیا۔
    بھائی۔ ۔ بہن نے پیچھے سے آواز دی۔ ۔ اور قریب آکر مجھے ایک پرچی تھمادی۔ ۔ ۔ فون کر لینا۔ ۔ اتنا کہہ کر چلی گئی۔
    میں گاڑی میں بیٹھ کر ائر پورٹ کی جانب چل پڑا۔ ۔ سوچون کے انبار میں مجھے پرچی کی یاد آئی تو کھول کر دیکھا۔ اس میں ایک فون نمبر لکھا تھا۔ ۔ غالبا” یہ "انہی" کا نمبر تھا۔ کچھ دیر میں نے تکا۔ ۔ ۔ پھر گاڑی کی کھڑکی کا شیشہ نیچے کر کے، اسکے دو ٹکڑ ےکئے اور ہوا میں اڑا دیا۔
    دیکھا دوستوں۔ ۔ ۔ میں کیسا ضدی ہوں۔ ۔ ۔سنگدل۔ ۔ ۔ سب لوگوں کے اپنے انتظار میں چھوڑ آیا۔ ۔ ۔
    ابا نے جو کیا۔ ۔ ۔ اس پر میرا رد عمل انکو بھگتنا تھا۔ ۔ یہ انہین معلوم تھا۔ ۔ ۔ اور "انکی" غلطی یہ کے انہوں نے ہمیں ہم س ےپہلے چن لیا تھا۔
    ہاں یہ سچ ہے۔ ۔ میں جل گیا۔ ۔ کے میں کسی کو سلیکٹ کروں۔ ۔ یہ مجھے منظور ہے۔ ۔ پر کوئی مجھے سلیکٹ کر۔ ۔ یہ میری جھوٹی انا کے خلاف بات ہے۔ ۔ ۔
    میں رسک لے سکتا ہوں۔ ۔ لئے بھی ہیں۔ ۔ پر ساری لائف کو کسی ایک مقصد کو پانے کی آگ میں جھونک دینے کی ہمت جو ‘انہوں" نے کی ہے۔ ۔ اتنی ہمت کم از کم مجھ میں تو نہیں۔ مطلب کون ہے یہ۔ ۔ اور کیا ہے یہ۔ ۔ ۔
    زندگی میں 3 مقام پر میں لڑکیوں کے آگے لڑکوں کو کمزور سمجھتا ہوں۔ ایک جب اعتماد کرنا ہو کسی پر۔ دو قربانی دینی ہو تو۔ تین اپنا حق وصولنا ہو تو۔
    مجھے اپنی ہار سے اتنی نفرت نہیں جتنی کسی لڑکی کے جیتنے سے ہے۔ ۔ ہاں ہاں سچ کہہ رہا ہوں۔ ۔ ۔ انسان ہوں نا بھئی ۔ ۔ فرشتہ تو نہیں۔ غصہ آتا ہے جب کوئی لڑکی کسی میدان میں مجھ سبقت لے جائے۔
    پر اس بات کا یہ مطلب ہر گز نہیں ہے کہ میں انکا دشمن ہو جاتا ہوں۔ نفرت کرنا اور حسد کرنا اور بات ہے۔ ۔ ۔دشمنی اور بات ہے۔ بس اپنی کمزوری پر بجائے ماننے کے اور شرمندہ ہونے کے ۔ ۔ خود پر غصہ آتا ہے۔ ۔ جو دوسروں پر نکلتا ہے۔
    دوستوں۔ ۔ آپکے سامنے خواتین جس بھی رن و روپ و رشتے میں سامنے آئیں۔ ۔ کبھی انکو سمجھنے کی خود سے کوشش نہ کرنا۔ سوائے اس بات کے کہ انکا تعلق صنف نازک سے ہے۔ ۔ ۔ جو ہر چیز اور معاملے میں نزاکت پسند ہے۔ سوائے معاملے کی نزاکت کے۔ ۔ کیونکے معاملے کی نزاکت اور اسکا سمجھنا انکا نہیں بلکہ مردوں کا کام ہے۔

    ایک راز کی بات بتا دوں۔ ۔ ۔انکی محفل میں میرا موڈ سوائے اسکے اور کچھ نہیں کے وہ میرے بارے میں ایک ایسی رائے قائم کریں جسکا تعلق مجھ سے نہیں۔ یعنی انکو مس گائیڈ کرنا تھا۔ ۔
    بابا ہمارے ساتھ سرپرائز کھیلنا ہے تو ہم سا بن کر کھیلیں۔ ۔ پر کیا کریں جی۔ ۔ ہم سا کوئی کیسے بنے ۔ ۔ عمرو تو ایک ہی ہے۔ ۔ ہا ہا ہا ہا

    تو دوستون ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔آیئے اور مبارکباد دیجئے ہمیں ۔ ۔ اس بات پر کہ ۔ ۔ ۔ ۔

    عمرو ویڈز نازنین

    بہت بہت شکریہ
    اور اب میں ایک سنجیدہ انسان ہو گیا ہوں۔ ۔ ۔ اور خبردار اس بات کو کسی نے سنجیدگی سے لیا۔ ۔ ھاھاھھاھاھھا



    Most of the time in my life, it is better to have Nothing then something

    wo shaks hi kya jo der jaye halaat ki khuni gardish se,
    Us daur me jeena lazim hai jis daur mei jina mushkil ho.


  2. #2
    Haz!L's Avatar
    Haz!L is offline Crazy 0v3r y3w :x
    Blessed Alhamdullilah :)
     
    Join Date
    May 2011
    Location
    $acha1 k1 dunya lVla1n
    Posts
    18,454
    Blog Entries
    9
    Quoted
    2056 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by Zairo_o_Zabbar View Post
    سنو ایسا بھی ہوتا ہے۔ ۔ ۔ افسوسناک خبر

    اسلام و علیکم ۔ ۔ ۔

    اس غم کے ماحول کو پر تائثر بنانے کیلئے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے۔ ۔ ۔۔
    ۔
    ۔
    ۔
    ۔
    ۔
    اہو ہوہووہہو۔ ۔ یہ بول کون رہا ہے۔ ۔ ۔ میں نے کہا خاموش۔ ۔۔
    ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
    ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔
    ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
    ارے اب بولو بھی۔ ۔ ۔بتائو نہ ایک منٹ ہو گیا بھی یا نہیں۔ ۔ عجیب لوگ ہو تم بھی یار۔ ۔ ۔ ذرا ٹائم دو۔ ۔سو ہی جاتے ہو۔ ۔ ۔
    اور آج مجھے زیادہ نہ بلوانا۔ ۔ ۔موڈ کا کدّو کش ہو گیا ہے۔ ۔ ۔

    آج ایف کے کی تمام سہیلیوں سے معافی مانگنے کا دن ہے۔ ۔ کیوں کے انکو ایک دلدوز خبر ملنے والی ہے۔ ۔ ۔
    وہ یہ کہ میری منگنی اور نکاح ہو گیا۔ ۔ ۔ ہاں ہاں۔ ۔ ایک دن کے فرق سے ۔ ۔ بلکہ بارہ گھنٹے کے فرق سے۔ ۔ ۔ یعنی اب ہم سلمہہ ہو گئے۔ ۔

    میں جانتا ہوں کے آپ لوگوں کی شدید صدمہ اور دکھ ہوا ہگا۔ ۔ کچھ کو دل کو دورہ بھی دماغ میں اٹھا ہوگا۔ ۔ ۔پر میں دلی طور پرآپ سب سے ہمدردی رکھتا ہوں اور تعزیتی طور پر تمام لڑکیوں سے معذرت ہے جن کے دل ٹوٹے ہیں۔ ۔ اب کیا کریں عمرو تو ایک ہی ہے ناں۔ ۔ ۔ کہاں سے لائیں ڈھونڈ کے یہ محبوب و محبوبہ۔ ۔ ۔۔ ہا ہا ہا ہا

    سننا چاہیں گے یہ سب کیسے ہوا۔ ۔ ۔ لو سنو۔ ۔ ۔

    سن نے والوں، سنو ایسا بھی ہوتا ہے۔ ۔ ۔
    جو جتنا اچھلے، اتنا ہی پھسلتا ہے۔ ۔
    حرکتیں ایسی جو کرتا ہے۔ ۔
    اور ابّا سے بھی ڈرتا ہے۔ ۔
    آئو تم بھی آج سن لو۔ ۔ ۔
    داستان ہے یہ کہ ایک تھا لونڈا،
    جسے سب ہی کہتے تھے دیوانہ۔ ۔۔
    اس دیوانہ کی دیوانگی کا
    دنیا بھر میں تھا مشہور افسانہ۔ ۔ ۔
    لونڈے کی یہ کہانی سن کے کہتے سبھی۔ ۔ اوئے لانتی تم لانتی تم۔ ۔ ۔(اب کیا سچی مچی کی لعنت سے دوں۔ ۔ ہنہہ۔ ۔ ۔ )

    سب کو مستی ہے چڑھی۔ ۔ گانا سننا ہے۔ ۔ یہ نہین سے بولیں سیدھی طرح بکو۔ ۔ پر نہیں۔ ۔ تفریح چاہئے سب کو۔ ۔ ۔

    گھر سے پیغام آیا۔ ۔ ۔جمعرات کو۔ ۔ ۔ ابا کا۔ ۔ ۔ ٹکٹ بھیج رہا رہو۔ ۔ جلدی کراچی مرو۔ ۔ ۔۔ ۔ اب مرو انہوں نے نہیں کہا تھا ۔ ۔ پر مطلب یہی تھا۔
    پھر ہم چلے کراچی۔ ۔ کچھ لوگ کہتے ہیں نہ کرانچی۔ ۔تو کرانچی میں اترا۔
    گھر پہنچا، اماں دیکھ کے جھوم اٹھیں۔ اب نے وقت ضائع کئے بغیر فریش ہونے کو باتھ روم بھیج دیا۔ مجھے ڈر ہوا کے آج کہین یہ مجھے خود نہ نہلا دیں۔ ۔ ۔ بنا پانی کے پائپ سے۔ ۔ ۔ جو کے میں پہلے بھی کئی بار اس نعمت بے بہا سے مشرف ہو چکا ہوں۔
    ابھی نہا کے نکلا تو گھر لوگوں سے بھرا ہوا تھا۔ انجانے چہرے۔ کوئی لفٹ بھی نہیں کرا رہا تھا۔
    بہن کی نظر پڑی تو جھٹ آئی اور بازو پکڑ کے ڈرائنگ روم میں لے گئی۔ ابّا نے ترچھی نظر نے ہمیں انکے برابر والے صوفہ پر بیٹھنے پر مجبور کر دیا۔
    انکل کو سلام کرو۔ ابا نے سامنے بیٹھے ہوئے خوبرو انسان کی طرف اشارہ کر کے کہا۔ ہم سوچ میں پڑ گئے کہ یہ انکل تو کسی اینگل سے نہیں لگتا۔ لونڈا سا ہے۔
    اتنی دیر لگتی ہے سلام کرنے میں۔ ۔ ابا نے گھور کر دیکھا اور ہم نے پھر بھی اپنی جگہ پر بیٹھے بیٹے سلام داغ دیا۔
    بیٹا یہ تمہارے انکل ہیں، جائو ہاتھ ملا کر آئو۔ ابا نے دانت پیس کر کہا۔ ابا کون انکل۔ ۔ کیا یہ لونڈا ۔ ۔ ۔مطلب لڑکا۔
    ابا نے قریب تھا اٹھ کے ایک دھپ لگا دیں، پر ہم نے اپنی عزت بچاتے ہوئے لونڈے انکل سے مصافحہ کیا تو تب پتا چلا، بالوں میں کلر لگا ہوا ہے، اور عمرکے پکے ہیں۔
    اچھا تو آپ انکے بیٹے ہیں۔ کیا نام ہے؟
    ابھی منہ سے کچھ اور نکلنے والا تھا کے جانتے بھی ہو اور نام بھی نہیں پتا، ابا کی نظروں کی تپش محسوس کرتے ہوئے سیدھا جواب دیا ۔ ۔ عمرو۔
    کیا کرتے ہیں آپ؟
    یہ لفط آپ پر ہر بار ہنسی نکل جاتی ہے۔ ۔ ۔ کے تھوڑا دیر ہمارے ساتھ رہنے کے بعد بندہ خود تو تڑاک پر اتر آتا ہے ہمارے ساتھ۔ ۔ ہا ہا ہا ہا۔ ۔ ۔
    جی انجنئیرنگ فرم میں ہوں۔ ۔ ۔تو آجکل تو سائیٹ پر ہوگے ۔ ۔ انہوں نے جھت دوسرا پانسا پھینکا؟ ہم تو چپ، جی جی۔ ۔ سائٹ ہر ہی ہوں۔ ۔ ۔
    جبھی رنگ تھوڑا سیاہ پڑ گیا ہے۔ ۔ ہا ہا ہا ۔ ۔انتنا کہہ کر جناب خود ہی ہنسنے لگے۔ ۔ ۔
    آفس کیسا جا رہا ہے؟ دبئی کا موسم تو گرم ہوگا کافی؟ جی جی 45 درجہ تک درجئ حرات ہوتا ہے۔ ۔ ۔47 بیٹا، کل کی یہی رپورٹ ہے۔
    اب ہم سے رہا نہیں گیا۔ ۔ ۔ ۔اب تو میرہ ہٹ گئی۔
    اس بار بارش کا بھی کوئی چانس ہے یا نہیں، 3 سال سے ایک بوند نہیں ٹپکی دبئی میں؟ میں نے خود ہی سوال کر دیا۔ ۔ ۔4 سال بیٹا۔ ۔ ۔اللہ مالک ہے دیکھو کیا ہوتا۔ ۔ دل کیا کے سر پھاڑ لو۔ ۔ یہ کیسا انٹرویو ہے جس میں سوال اور جواب ایک ہے شخص نے دینے ہیں۔

    بیٹا یہ بتائو، دبئی میں کام کی کیا پوزیشن ہے۔ کنسٹرکشن تو ہو نہیں رہی۔ بزنس کے اعتبار سے ایساکیا کیا جاسکتا ہے؟ ٹوالیٹ۔ ۔ ۔میں ٹوائلیٹ سے ہو آوں۔۔ ۔ میں تو اتنا کہہ کر ابا کے پاس سے اٹھ آیا۔ کیوں کے اب برداشت نہیں ہو رہا تھا۔ ابے ہم سب کی تپاتے ہین۔ ۔ توم ہماری تپا رہے ہو۔

    پھر تھوڑی دیر گیلری میں ہوا خوری کی تو خیال آیا کے بہن کی ہونے والے سسرال والے لگتے ہیں۔ ابا نے ایک بار پھر بلایا۔
    بیٹا ۔ ۔یہاں کرسی پر بیٹھ جائو۔ ہم بیٹھ گئے۔ ابھی پوری طرح سنبھلے بھی نہ پائے تھے کے گھر کے تمام افراد اور مہمان ہمارے گرد جمع ہو گئے۔ اور ہمین یوں تکنے لگے جیسے ۔ ۔ نیا نیا چڑیا گھر مین گوریلا آجائے تو سب لوگ اسے دیکھنے جاتے ہیں۔
    ایک مہذب سی خاتون نے ہمارے گلے میں پھولوں کا کنٹھا ڈالا۔ ۔ ۔ یہ تمہاری ہونے والی ساس ہیں۔ ۔ ۔کانوں میں کسی کے کھسر پھسر کرنے کی آواز ائی۔ ۔ جو کے کوئی اور نہیں میری فسادی بہن تھی۔
    دماغ سن۔ ۔ جسم من بھر وزنی ہو گیا۔ ۔ ہم اب تک یہی سمجھ رہے تھے کے بہن کی دن تاریخ یا پھر سیدھا بارات ہی ہوگی۔ ۔ کیوں کے ہم سے مشورہ کرنا یا کسی معاملے میں شامل کرنا کوئی ضروری سمجھتا نہیں۔ پر یہ تو کہانی ہی کچھ اور تھی۔
    ابھی یہ سوچنے کی کوش ہی جاری تھی کے ابا نے منہ میں قلاقند سے بھرا چمچا ٹھونس دیا۔ ۔ ۔ ۔ اللہ نصیب اچھا کرے۔ ابا نے دعا دی، امان نے گلے لگایا۔
    یہ تمہاری ساس۔ ۔ یہ سسر۔ ۔ یہ چچا اور یہ ماموں۔ ۔ ۔ابا ہمارے پاس کھڑے ہو کر سارے رشت ےایک کے بعد ایک گنوانے لگے اور ہم ابا کو سخت ناراضگی اور سرخ آنکھوں سے گھورتے رہے۔ ابا نے وجابی طور پر ہمارے کاندھے پر ہاتھ رکھ لیا کے کہیں ہم کوئی چراند نہ کر دیں۔
    یہ خالو کی تو۔ ۔ ۔ اس بری طرح منہ میٹھا کیا۔ ۔ جیسے چمچا منہ میں ڈالا نہین بلکہ گھسیڑا ہو۔ ۔ ۔اور ہمارا مسوڑہ چھیل ڈالا۔ ۔ دو منٹ کیلئے تو ہوش و حواس گم ہو گئے۔ ۔ جیسا کومہ میں چلا گیا ہوں۔ ۔ اس زور کی کلیف ہوئی۔ ۔ ۔۔ ۔
    ھے ھے ھے ۔ لگ گئی۔ ۔کوئہ بات نہیں ۔ ۔یہ کہہ کر ہنسنے لگے ۔ ۔دل تو کرا چمچا انکی چمکتی ٹنڈ پر مار دوں۔
    اس سے زیادہ زہریلی مٹھائی زندگی مین نہ کھائی تھی۔ موڈ سخت خراب۔ ۔ اور منصوبہ یہ کہ رات ہی کو دبئی واپسی ہوگی۔
    رات ۔ ۔ ۔ہم کیسی رات اور کہاں کا سفر۔ ۔۔ ۔ 2 گھنٹے تک یہی ادھم بازی چلتی رہی۔ ۔ اور رات کے 2 بج گئے۔
    اماں نے پیار سے سر پہ ہاتھ پھیرا۔ ۔ جیسی میری حالت مسجھ گئیں ہوں، اور بہن بھی میر تیور دیکھ کے سہم گئی تھی۔
    اسکے بعد ڈنر جسے میں نے بالکل ہاتھ نہیں لگایا۔ زبردستی دسترخوان پر بٹھایا۔ ہمارے ہاں بیٹھ کر کھانا کھایا جاتاہے، چاہے کیسا مہمان ہو اور کیسی تقریب۔ ۔ ۔
    ابا نے ایک نہیں 100 بار کہا،کے کھانا کھائو۔ ۔ پر میں بھی ضدی۔ ۔ نا کھانا تھا نہ کھایا۔ ۔ ۔ ابا نے دبے لفظوں کہا کے لوگ کیاکہیں گے۔ ۔ کتنا بے کہنا لڑکا ہے۔ ۔ ۔ اور ہم نے آگے سے کہا ۔ ۔ جو کہ ےگا منہ کی کھائے گا۔ ۔ ۔ ابا نے سوچا بدتمیز کہیں بے عزتی نا کرادے ۔ ۔ اس لئے خاموش ہوگئے۔
    تکلیف کیسی ہو ، پر نیند سے پہلے تک دکھ کا احساس رہتا ہے۔ ۔ ۔ کھانے کے دوران میں اٹھ گیا اور، اپنے روم میں چلا گیا۔ ۔ کچھ دیر لیتا معلوم ہی نہیں چلا کہ سو گیا۔ یاروں صبح 4 بجےاٹھتے ہیں فجر کیلئے۔ ۔ نیند تو آئے گی ہی ناں۔
    صبح ابا نے اٹھایا ناشتے کیلئے۔ کل نا دن میں کھانا کھایا تھا، کیوں کے جہاز کا کھانا پسند نہیں آتا ہمیں، رات میں دال ہی کالی تھی۔
    پوریاں پر حملہ ہوا، تو رات کی کہانی بھی یاد آگئی۔
    ابا نے تفصیل بتائی کے ۔ ۔ ایسے ایسے لوگ ہیں۔ امان نے لڑکی کے بارے میں بتانا شروع کر دیا۔ مین چپ چاپ سنتا رہا۔ ۔ مائی اللہ۔ ۔ اس دن مجھ پر ایسی چپ لگی تھی کے شائد منہ توڑ بھی دیتے تو ایک لفظ نا نکلتا۔
    میں واپس جا رہا ہوں۔ ۔ میں نے ساری باتوں کا بس اتنا جواب دیا۔
    واپس جائے گا۔ ۔ ابا نے کہا ۔۔ ہاں جائوں گا ۔ ۔ ایک ۔ ۔دو ۔ ۔ تین۔ ۔ اممممم۔ ۔ تین یا پھر چار دھپ لگائیں ابا نے کر میں تو میرا رکا سانس بحال ہو گیا، اور گنگ زبان کھل گئی۔ ۔ جائونگا جائونگا جائونگا۔ ۔ ایک اور دھپ ۔ ۔ ۔ ۔ بڑے میاں صاحب بہادر کا ہاتھ بڑا بھاری ہے۔ ۔ ۔ مار دیں۔ ۔تو بندہ سکتہ میں چلا جاتا ہے تھوڑی دیر کو۔ ۔ ۔
    چلا جا۔ ۔ تیرا پاسپورٹ میرے پاس ہے۔ ۔ ابا نے انکشاف کیا۔ ۔
    یار یہ کیا چیٹنگ پہ چیٹنگ ہے۔ ۔ ۔ مجھے بتانا تو تھا نا ایک بار۔ ۔
    اچھا اب ہو گیا آپکا مقصد پورا۔ ۔ ۔ اب مجھے جانے دیں۔ میں نے منہ بسورنا شروع کر دیا۔ ۔ ایسا کیسے ہوتاہے۔ ۔ ۔ حد ہوتی ہے نا یار۔
    چپ کر کے آگے کی بات سنو۔ ۔ ابا نے کہا ۔۔ نہیں سنوں گا میں کچھ بھی۔ ۔ ایک اور دھپ۔ ۔ بیٹھا رہ یہیں پر ۔ ۔ ہلنا مت اپنی جگہ سے۔ ۔ ۔ اگر کہین ادھر ادھر ہوا نا تو خیر نہیں۔ ۔
    اماں۔ ۔ خبردار جو کسی نے مجھے میری جگہ سے ہلانے کی کوشش کی ۔ ۔ ۔سنا نہیں ابا نے منع کیا ہے۔ ۔ ۔مجھے اپنے آپ پر غصہ تھا کے میں یہاں آیا ہی کیوں۔
    صبح سے ظہر ہوگئی۔ ۔ وہیں بٹھا کے رکھا مجھے۔ ۔ ۔
    ابا کو علم ہو چلا تھا۔ ۔ اب لونڈا ضد پر آگیا ہے۔ ۔ ایسے نہیں مانے گا۔ ۔
    اچھا سن میں نے آج کے دن تہمارا نکاح رکھ دیا ہے۔ اور جب تم مناسب سمجھو مجھے بتا دو، رخصتی کر دیں گے۔ اب ہم کب تک یہ ذمہ داریاں اٹھائیں۔ ۔۔
    کیا؟ نکاح۔ ۔ ۔کیا مطلب کل منگنی آج نکاح۔ نہ چٹ کا انتظار نہ پٹ کو دیکھا۔ ۔ جہاں آپ نے سارے کام کر دیے تو یہ ایک رخصتی کا گناہ مجھ پر کیوں۔ ۔ یہ بھی آپ ہی طے کر دیں۔۔ ۔ مجھے تو سخت غصہ آیا ہوا تھا۔ ۔ بلکہ کل رات سے مسلسل غصے میں تھا اور اب تو تھک چکا تھا۔ وہ کیا ہے کے اتنی دیر غصے میں رہا نہیں جاتا ناں۔ ۔ ۔سر درد کر رہا تھا۔ ۔
    بھئی اب تمہاری بھی مرضی ہونی چاہئے، ہم کوئی اتنے بھی ظالم نہیں ہیں۔ یہ میرے ابّا کو دیکھو۔ ۔ میرے باپ ہی ہیں نہ آخر۔ ۔ ۔۔
    بیل بج رہی تھی۔ ۔ دروازے پر کوئی آیا تھا۔ ۔
    ابا انکل آئے تھے، دروازے سے ہی یہ لفافہ پکڑا کر چلے گئے ، کے جلدی میں ہوں شام کا انتطام کرنا ہے۔ ابّا نے لفافہ میرے آگے کر دیا کے دیکھ کے بتائوں اس میں کیا ہے۔
    اس ساری بات میں ابھی تک لڑکی کا کہیں کوئی ذکر نہیں۔ ۔ ۔
    لفافے میں کیا تھا ۔ ۔ نکاح نامہ تھا۔ ۔ اور جس چیز نے مجھے سب سے زیادہ چونکا دیا وہ تھا۔ ۔ ۔ ۔
    لڑکی کا نام اور اسکے دستخط۔ ۔ ۔میرے لئے ایک بالکل نیا نام۔ ۔ اور میں صد فیصد انجان۔
    یہ چل کیا رہا ہے۔ ۔ یہ کون۔ ۔ دستخط کیسے کر دیئے۔ ۔ دل کی بات دل میں ہی رہ گئی۔
    ابا نے نکاح نامہ میرے ہاتھ سے لے لیا اور دیکھنے لگے۔ دیکھ لو۔ ۔ اب کچھ نہیں ہو سکتا۔ عصر میں تمہارا نکاح ہے۔ جائو تیاری کرو۔
    ابا چلے گئے اور میں وہیں پر بیٹھا سوچتا رہا کے چلو مین اس لڑکی کو نہیں جانتا خیر ہے۔ ۔ پر اس نے کیسے ایک انجان شخص کو ۔ ۔چلو بنا دیکھے ہی صحیح۔ ۔ پر کیسے۔ ۔ اتنا بڑا جوا۔ ۔ ۔ چلو میں دور کا ہی سہی۔ ۔ رشتہ دار ہی ہوتا۔ ۔ ۔ اور ابھی منگنی ختم ہوئی نہیں ۔ ۔اور یہ نکاح۔ ۔ ۔۔ یہ لڑکیاں بھی کتنا عجیب ہوتی ہیں۔ ۔ ۔ نہیں مانتی تو کسی کی نہیں مانتی ۔۔ اور جب مانتی ہیں تو ایسا کے ڈھونڈے سے مثال نہ ملے۔
    کب عصر ہوئی۔ ۔ کب مسجد گیا۔ ۔ دیھان ہی نہیں رہا۔ نکاح خوان نے جب ہم سے تیسری بار پوچھا اور ابا نے پیچھے سے ٹھوکا دیا تو ہم نے ایکدم یکسر سب کچھ بھلاکر پوری قوت سے انکار کرنا چاہ پر سوائے اس کے کہ کہا ہاں میں نے قبول کیا، منہ س کچھ اور نہیں نکلا۔۔ ۔ آپ لوگ بھی کہہ رہ ہونگے ۔ ۔ گھر آئی لکشمی کو کون ٹھکرائے۔ ۔ ۔ بندر کے ہات ناریل۔ ۔ دل میں لڈو۔ ۔ ۔ یہ سب ہو سکتا تھا پر اسطرح سے۔ ۔ ۔ ہم نے صرف اپنی سوچ سے تخلیق ہی کر سکتے ہین یا پھر کسی فلم کا سین ہو سکتا ہے۔ ۔
    مبارکبادیں۔ ۔مصافحہ معانقہ۔ ۔ کچھ پتا نہیں۔ ۔ مسجد سے گھر تک پہنچنے می ایک ہی بات دماغ میں تھی کہ ۔ ۔ میں نے ہاں کیوں کر دی۔
    مغرب کے بعد اماں نے ایک نیا سوٹ لا دیا اور پیار سے کہا ۔ ۔بیٹا یہ پہن لو۔ ۔ ۔
    اماں کل سے یہ میرا تیسرا سوٹ ہے۔ ۔ کیا میں کپڑتے ہی تبدیل کرتا رہونگا۔ ۔ ۔ میں نے اماں سے التجائیہ انداز میں کہا۔ ۔ بیٹا۔ ۔ ابھی تمہاےر سسرال جانا ہے ۔ ۔وہاں تمہاری دعوت ہے۔ ۔ ۔میں اماں کو پر شکوہ نظروں سے دیکھتا رہ گیا۔
    بیٹا یہ تمہارا اور تمہارے ابا کا معاملہ ہے۔ جو ہوا سو ہوا۔ ۔ تمکو پتا ہے اپنے ابو کا۔ ۔ ۔ طریقہ ٹھیک نہیں ہے۔ ۔ پر کام تو ٹھیک ہے نا۔ چلو شاباش کھڑے ہو جائو۔ خوشی کا موقع ہے اور گھر میں اداسی۔ ۔ یہ اچھی بات نہیں۔ چلو جلدی سے کھڑے ہو جائو۔
    یہ بات ٹھیک تھی ۔ ۔ کے میری موڈ کا اثر پورے گھر پر تھا۔ ۔ ۔ پر مین ہوں ہی ایسا۔ ۔ ۔جہاں سب کا موڈ بناتا ہوں۔ ۔ وہیں اس بات کا خود خیال رکھتا ہوں کے میرا موڈ گڑبڑ نا ہو۔ ۔ ورنہ تو بس۔ ۔ ہو گیا کام۔
    سسرال گئے۔ ۔ ڈنر کیلئے عالیشان دسترخوان لگایا گیا۔ خوب عزت اور آئو بھگت ہوئی۔ پر ہمارا دل ہی نہیں تھا کے کسی سے بات کریں۔ ۔ کتنے ہی لوگ ۔ ۔ لڑکے ۔ ۔لڑکیاں پاس آئے۔ ۔ پر ایک آدھ بات کے بعد کوئی ہم سے دوبارہ ہم کلام ہونے کی جرات نہ کر سکا۔ کہہ رہیں ہونگے کے لڑکی کی قسمت پھوٹ گئی۔ بہن نے بھی ایک بار آکر کہاکے موڈ تو ٹھیک کر لو۔ کافی کچھ سنائی ۔ ۔ آخر میں کہہ گئی ۔ ۔ ضدی نا ہو تو۔ ۔ ۔ سل گیا تھا میرا منہ۔
    کھانہ چکھنے کی حد تک کھایا۔ کھانے کے بعد ایک اور سرپرائز تھا۔ ۔ وہ یہ کہ دلھا اور دلہن کی رسم۔ ۔ اب یہ بتا نہیں کیا بلا تھی۔ ایسی سخت کوفت ہوئی نا کے بس۔ ۔ ۔ حالنکہ کے میں ایسی محفلوں میں رہتا ہوں ۔ ۔جہاں چھچچورا پن کا کویئ نہ کوئی موقع ضرور ہو۔ ۔
    ایک صوفہ پر بٹھایا گیا۔ ۔ ابھی ٹھیک سے بیتھ بھی نہیں پایا تھا کے سامنے سے ایک دلہن نما لڑکی۔ ۔ جسے کئی لوگ یوں تھامے ہوئے تھے ۔ ۔ جیسے کے ابھی گری اور جب گری۔ ۔ کو لائے اور ہمارے برابر بٹھا دیا۔
    زندگی میں سینکڑوں بار لڑکیوں کے برابر بیٹھا ہونگا۔ ۔ ۔ پر اتنی جھجک ۔ ۔ شائس پہلی بار محسوس ہوئی اور میں تھوڑا فاصلے پر سرک گیا۔ جس پر میرا خوب مذاق بھی اڑایا گیا کے لڑکا لڑکی سے زیادہ شرما رہا ہے۔
    درجنوں لڑکے لڑکیوں کے جھرمٹ میں، جہاں گھر کے بڑے بوڑھے بھی موجود ہوں۔ ۔ ہم سے ڈیمانڈ کی گئی کے ایک نظر دلھن پر بھی ڈال دیں۔ ۔ کیوں کے میں سارا وقت سر جھکا کے بیٹھا رہا تھا۔ پر ہم سے نہ ہوا۔ سوال اٹھا کے نام ہی ہوچھ لو۔ ۔ سلام ہی کر لو۔ ۔ ۔ تو منہ بندکرنے کیلئے ہم نے اتنا کہا کے ۔ ۔ سلام بنا مصافحہ(ہاتھ ملانا) اور ملاقات بلا معانقہ (گلے ملنا) ہمیں پسند نہیں۔
    اس پر سب کو معلوم ہو گیا کے ہمارے منہ میں بھی زبان ہے۔کتنیدیر رسم چلی معلوم نہیں۔ پر نہ میں نے نظر اٹھا کے دیکھا ۔ ۔خیر اسکی شرم اسے اجازت نہ دے رہی ہوگی ۔ ۔جابھی اس نے بھی نہیں دیکھا۔
    رسم ختم ہوتے ہی میں جھٹ سے جانے کیلئے کھڑا ہو گیا۔ بہت نرسو تھا۔ ۔ اور تیزی میں نقصان ہوا۔ ۔ فلمی سین۔ ۔ ۔ کسی ماں کے لاڈلے نے میرے ہم دونوں کے بھاری بھرکم پھولوں کے کنٹھوں کو جو لمبے بھی تھے۔ ۔ آخر سے باندھ دیا تھا۔
    اب ہم اٹھے تو گلا گردن جھکے اور محترمہ کو جھٹکالگے۔ ۔ ایک دو بار تو معلوم نہیں ہوا۔ ۔ ایک ہلچل سی مچ گئی۔ ۔ اور خوب ہی ہی ہاہا ہو ہو ہوا۔ ۔ ۔
    ہم تو بالکل ہی گڑبڑا گئے۔ ۔ حالت پہلے ہی ڈائون تھی۔ ۔ ۔ ہاتھ پائوں پھول گئے۔ ۔ ۔ اس وقت اونٹ کے گلے ڈلی گھنٹی نکالنے کی کشمکش میں ایک بار نظروں سے نظروں کا ٹکرائو ہوا۔
    میں کنجوس آدمی نہیں ۔ ۔ خوبصورتی کی تعریف ضرور کرتا ہوں اور دل سے کرتا ہوں۔ ۔ کوئی شک نہیں ایک دلکش چہرہ میرے سامنے تھا۔ پر میں کچھ کہے بنا اپنی جان چھڑا کر مجمع سے باہر آگیا۔

    رات دیر سے گھر پہنچے۔ ۔ ۔ کسی کا سونے کا موڈ نہین تھا۔ ۔ ہر چہرہ میری خوشی کے خاطر کھل رہا تھا۔ ۔سوائے میرے تھوبڑے کے۔ بیٹھک میں خوش گپیوں کا ماحول تھا۔ ایک ایک کر کے سب اپنے کمرے میں جانے لگے۔ ابا اماں اور میں باقی رہ گئے۔
    بیٹا دیکھ میری بات سنو۔ بھلے لوگ ہیں۔ لڑکی اچھی ہے۔ دعائیں دو گے ہمیں۔ مجھے معلوم تھا کے تم اتنی جلدی پر راضی نہیں ہوگے۔ ۔ پر بیٹا میری خوشی کی خاطر خوش ہوجا۔ ابا نے اور بھی بہت کچھ کہہ کر مجھے سمجھایا۔
    ابا مجھے واپس جانا ہے۔ میرا پاسپورٹ دے دیں۔ میں نے فقط اتنا ہی کہا۔ ابا میری بات پر خاموش ہو گئے۔
    پلیز مجھے جاناہے۔ میں نے ایک بار پھر کہا۔
    جیسے تمہاری مرضی۔ تمہارے پاسپورٹ وہیں ہے جہاں تم نے رکھا تھا۔ ابا نے افسردگی سے کہا اور کمرے کی طرف جانے لگے۔
    جانے سے پہلے ملکر تو جائو گے ناں؟ ابا نے پوچھا اور میں نے کوئی جواب نہیں دیا۔
    میں کمرے میں گیا اور اپنا ہینڈ بیگ چیک کیاتو معلوم ہوا کے ابا نے پاسپورٹ لیا ہی نہیں تھا۔ ۔ ابے بدھو۔ ۔ چیک تو کر لیتا پہلے۔ ۔ ابا کو کیسے معلوم ہوا کے پاسپورٹ کیاں ہے۔ ۔ دفع ہو۔ ۔ خود کو کوسنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں تھا۔
    صبح ناشتے پر اپنے سامان کے ساتھ پہنچا۔ جسکا صاف مطلب تھا کے مین واپس جا رہا ہوں۔
    اماں یہ دیکھ کے تڑپ اٹھیں۔ بیٹا کچھ دن اور رک جا۔ ابھی ایک دن ہی تو ہوا ہے۔
    اماں ابھی تو جانا ہے۔ اتنا کہہ کر ناشتے کرنے لگا۔ اماں ابا کو اشارے میں کچھ کہنے لگیں۔ سب نے چپ چاپ ناشتہ کیا۔ فارغ ہوا تو مٹرو کیب آچکی تھی۔
    اماں سے گلے ملا۔ اماں ہر دفع کی طرح اس بار بھی رخصت ہونے پر زاروقطار رو رہی تھیں۔ شائد اس بار پہلے سے زیادہ رو رہی تھیں۔ کئی بار گلے لگایا۔ ابا سے گلے ملا۔۔ ۔ بیٹا کچھ دن تو رک جا۔ اس طرح تو مت جا۔ ابا نے آخر اپنے منہ سے کہہ ہی دیا۔ ۔ ۔ کہاوت ہے نہ درخت ہی سایہ کرنے کو جھکتا ہے۔ ۔ اس لئے ابا ہی نے کہا۔
    ابا ۔ ۔ گھبرائیں مت۔ ۔ ہمیشہ کیلئے نہیں جا رہا۔ ۔ ۔ واپس آئونگا۔
    بہن سے ملکر اسکا ماتھا چوما اور کیب کی طرف بڑھ گیا۔
    بھائی۔ ۔ بہن نے پیچھے سے آواز دی۔ ۔ اور قریب آکر مجھے ایک پرچی تھمادی۔ ۔ ۔ فون کر لینا۔ ۔ اتنا کہہ کر چلی گئی۔
    میں گاڑی میں بیٹھ کر ائر پورٹ کی جانب چل پڑا۔ ۔ سوچون کے انبار میں مجھے پرچی کی یاد آئی تو کھول کر دیکھا۔ اس میں ایک فون نمبر لکھا تھا۔ ۔ غالبا” یہ "انہی" کا نمبر تھا۔ کچھ دیر میں نے تکا۔ ۔ ۔ پھر گاڑی کی کھڑکی کا شیشہ نیچے کر کے، اسکے دو ٹکڑ ےکئے اور ہوا میں اڑا دیا۔
    دیکھا دوستوں۔ ۔ ۔ میں کیسا ضدی ہوں۔ ۔ ۔سنگدل۔ ۔ ۔ سب لوگوں کے اپنے انتظار میں چھوڑ آیا۔ ۔ ۔
    ابا نے جو کیا۔ ۔ ۔ اس پر میرا رد عمل انکو بھگتنا تھا۔ ۔ یہ انہین معلوم تھا۔ ۔ ۔ اور "انکی" غلطی یہ کے انہوں نے ہمیں ہم س ےپہلے چن لیا تھا۔
    ہاں یہ سچ ہے۔ ۔ میں جل گیا۔ ۔ کے میں کسی کو سلیکٹ کروں۔ ۔ یہ مجھے منظور ہے۔ ۔ پر کوئی مجھے سلیکٹ کر۔ ۔ یہ میری جھوٹی انا کے خلاف بات ہے۔ ۔ ۔
    میں رسک لے سکتا ہوں۔ ۔ لئے بھی ہیں۔ ۔ پر ساری لائف کو کسی ایک مقصد کو پانے کی آگ میں جھونک دینے کی ہمت جو ‘انہوں" نے کی ہے۔ ۔ اتنی ہمت کم از کم مجھ میں تو نہیں۔ مطلب کون ہے یہ۔ ۔ اور کیا ہے یہ۔ ۔ ۔
    زندگی میں 3 مقام پر میں لڑکیوں کے آگے لڑکوں کو کمزور سمجھتا ہوں۔ ایک جب اعتماد کرنا ہو کسی پر۔ دو قربانی دینی ہو تو۔ تین اپنا حق وصولنا ہو تو۔
    مجھے اپنی ہار سے اتنی نفرت نہیں جتنی کسی لڑکی کے جیتنے سے ہے۔ ۔ ہاں ہاں سچ کہہ رہا ہوں۔ ۔ ۔ انسان ہوں نا بھئی ۔ ۔ فرشتہ تو نہیں۔ غصہ آتا ہے جب کوئی لڑکی کسی میدان میں مجھ سبقت لے جائے۔
    پر اس بات کا یہ مطلب ہر گز نہیں ہے کہ میں انکا دشمن ہو جاتا ہوں۔ نفرت کرنا اور حسد کرنا اور بات ہے۔ ۔ ۔دشمنی اور بات ہے۔ بس اپنی کمزوری پر بجائے ماننے کے اور شرمندہ ہونے کے ۔ ۔ خود پر غصہ آتا ہے۔ ۔ جو دوسروں پر نکلتا ہے۔
    دوستوں۔ ۔ آپکے سامنے خواتین جس بھی رن و روپ و رشتے میں سامنے آئیں۔ ۔ کبھی انکو سمجھنے کی خود سے کوشش نہ کرنا۔ سوائے اس بات کے کہ انکا تعلق صنف نازک سے ہے۔ ۔ ۔ جو ہر چیز اور معاملے میں نزاکت پسند ہے۔ سوائے معاملے کی نزاکت کے۔ ۔ کیونکے معاملے کی نزاکت اور اسکا سمجھنا انکا نہیں بلکہ مردوں کا کام ہے۔

    ایک راز کی بات بتا دوں۔ ۔ ۔انکی محفل میں میرا موڈ سوائے اسکے اور کچھ نہیں کے وہ میرے بارے میں ایک ایسی رائے قائم کریں جسکا تعلق مجھ سے نہیں۔ یعنی انکو مس گائیڈ کرنا تھا۔ ۔
    بابا ہمارے ساتھ سرپرائز کھیلنا ہے تو ہم سا بن کر کھیلیں۔ ۔ پر کیا کریں جی۔ ۔ ہم سا کوئی کیسے بنے ۔ ۔ عمرو تو ایک ہی ہے۔ ۔ ہا ہا ہا ہا

    تو دوستون ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔آیئے اور مبارکباد دیجئے ہمیں ۔ ۔ اس بات پر کہ ۔ ۔ ۔ ۔

    عمرو ویڈز نازنین

    بہت بہت شکریہ
    اور اب میں ایک سنجیدہ انسان ہو گیا ہوں۔ ۔ ۔ اور خبردار اس بات کو کسی نے سنجیدگی سے لیا۔ ۔ ھاھاھھاھاھھا




    itni bari tahreer kon parhy ga

  3. #3
    Rujail's Avatar
    Rujail is offline Its Amer. . .
    Andaz Apne Dekhte Hai Aaine
    Mein Woh... Aur Yeh Bhi Dekhte
    Hai Koi Dekhta Na Ho...
     
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    In search
    Posts
    2,893
    Quoted
    709 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by De3p S!lence View Post
    itni bari tahreer kon parhy ga
    cha t kary baba cha tu kery. .
    parh lo . .parh lo .. time do thora sa. .

  4. #4
    Haz!L's Avatar
    Haz!L is offline Crazy 0v3r y3w :x
    Blessed Alhamdullilah :)
     
    Join Date
    May 2011
    Location
    $acha1 k1 dunya lVla1n
    Posts
    18,454
    Blog Entries
    9
    Quoted
    2056 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by Zairo_o_Zabbar View Post
    cha t kary baba cha tu kery. .
    parh lo . .parh lo .. time do thora sa. .

    kuj naye thiyo bas tym ghat aeen muqblo sakht ahay


    nahi parh rahi

  5. #5
    Rujail's Avatar
    Rujail is offline Its Amer. . .
    Andaz Apne Dekhte Hai Aaine
    Mein Woh... Aur Yeh Bhi Dekhte
    Hai Koi Dekhta Na Ho...
     
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    In search
    Posts
    2,893
    Quoted
    709 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by De3p S!lence View Post

    kuj naye thiyo bas tym ghat aeen muqblo sakht ahay


    nahi parh rahi
    tunjhi ais tesi aahi. . .

    if dont read. . u miss alot. . as u wish.

  6. #6
    Haz!L's Avatar
    Haz!L is offline Crazy 0v3r y3w :x
    Blessed Alhamdullilah :)
     
    Join Date
    May 2011
    Location
    $acha1 k1 dunya lVla1n
    Posts
    18,454
    Blog Entries
    9
    Quoted
    2056 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by Zairo_o_Zabbar View Post
    tunjhi ais tesi aahi. . .

    if dont read. . u miss alot. . as u wish.

    cha ahay munh jee marzi

    ohk i'll read it but not right nw!

  7. #7
    Rujail's Avatar
    Rujail is offline Its Amer. . .
    Andaz Apne Dekhte Hai Aaine
    Mein Woh... Aur Yeh Bhi Dekhte
    Hai Koi Dekhta Na Ho...
     
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    In search
    Posts
    2,893
    Quoted
    709 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by De3p S!lence View Post
    cha ahay munh jee marzi

    ohk i'll read it but not right nw!
    baba chari. . tujni marzi aahy. .

  8. #8
    Haz!L's Avatar
    Haz!L is offline Crazy 0v3r y3w :x
    Blessed Alhamdullilah :)
     
    Join Date
    May 2011
    Location
    $acha1 k1 dunya lVla1n
    Posts
    18,454
    Blog Entries
    9
    Quoted
    2056 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by Zairo_o_Zabbar View Post
    baba chari. . tujni marzi aahy. .

    ye chari kya hota i thnk ap chadeens likhna chah rahy thy means 'choro'

  9. #9
    Rujail's Avatar
    Rujail is offline Its Amer. . .
    Andaz Apne Dekhte Hai Aaine
    Mein Woh... Aur Yeh Bhi Dekhte
    Hai Koi Dekhta Na Ho...
     
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    In search
    Posts
    2,893
    Quoted
    709 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by De3p S!lence View Post
    ye chari kya hota i thnk ap chadeens likhna chah rahy thy means 'choro'
    nahi chair means chariya. . yani pagal .. hahahhahahha. . ab hamar asindhi driver apni bv ko yehi kehta tha. hahahahhahaha

  10. #10
    Nabbas's Avatar
    Nabbas is offline Expert Member
    Stright Forward
     
    Join Date
    Apr 2010
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakist
    Posts
    3,588
    Quoted
    322 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by Zairo_o_Zabbar View Post
    سنو ایسا بھی ہوتا ہے۔ ۔ ۔ افسوسناک خبر

    اسلام و علیکم ۔ ۔ ۔

    اس غم کے ماحول کو پر تائثر بنانے کیلئے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے۔ ۔ ۔۔
    ۔
    ۔
    ۔
    ۔
    ۔
    اہو ہوہووہہو۔ ۔ یہ بول کون رہا ہے۔ ۔ ۔ میں نے کہا خاموش۔ ۔۔
    ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
    ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔
    ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
    ارے اب بولو بھی۔ ۔ ۔بتائو نہ ایک منٹ ہو گیا بھی یا نہیں۔ ۔ عجیب لوگ ہو تم بھی یار۔ ۔ ۔ ذرا ٹائم دو۔ ۔سو ہی جاتے ہو۔ ۔ ۔
    اور آج مجھے زیادہ نہ بلوانا۔ ۔ ۔موڈ کا کدّو کش ہو گیا ہے۔ ۔ ۔

    آج ایف کے کی تمام سہیلیوں سے معافی مانگنے کا دن ہے۔ ۔ کیوں کے انکو ایک دلدوز خبر ملنے والی ہے۔ ۔ ۔
    وہ یہ کہ میری منگنی اور نکاح ہو گیا۔ ۔ ۔ ہاں ہاں۔ ۔ ایک دن کے فرق سے ۔ ۔ بلکہ بارہ گھنٹے کے فرق سے۔ ۔ ۔ یعنی اب ہم سلمہہ ہو گئے۔ ۔

    میں جانتا ہوں کے آپ لوگوں کی شدید صدمہ اور دکھ ہوا ہگا۔ ۔ کچھ کو دل کو دورہ بھی دماغ میں اٹھا ہوگا۔ ۔ ۔پر میں دلی طور پرآپ سب سے ہمدردی رکھتا ہوں اور تعزیتی طور پر تمام لڑکیوں سے معذرت ہے جن کے دل ٹوٹے ہیں۔ ۔ اب کیا کریں عمرو تو ایک ہی ہے ناں۔ ۔ ۔ کہاں سے لائیں ڈھونڈ کے یہ محبوب و محبوبہ۔ ۔ ۔۔ ہا ہا ہا ہا

    سننا چاہیں گے یہ سب کیسے ہوا۔ ۔ ۔ لو سنو۔ ۔ ۔

    سن نے والوں، سنو ایسا بھی ہوتا ہے۔ ۔ ۔
    جو جتنا اچھلے، اتنا ہی پھسلتا ہے۔ ۔
    حرکتیں ایسی جو کرتا ہے۔ ۔
    اور ابّا سے بھی ڈرتا ہے۔ ۔
    آئو تم بھی آج سن لو۔ ۔ ۔
    داستان ہے یہ کہ ایک تھا لونڈا،
    جسے سب ہی کہتے تھے دیوانہ۔ ۔۔
    اس دیوانہ کی دیوانگی کا
    دنیا بھر میں تھا مشہور افسانہ۔ ۔ ۔
    لونڈے کی یہ کہانی سن کے کہتے سبھی۔ ۔ اوئے لانتی تم لانتی تم۔ ۔ ۔(اب کیا سچی مچی کی لعنت سے دوں۔ ۔ ہنہہ۔ ۔ ۔ )

    سب کو مستی ہے چڑھی۔ ۔ گانا سننا ہے۔ ۔ یہ نہین سے بولیں سیدھی طرح بکو۔ ۔ پر نہیں۔ ۔ تفریح چاہئے سب کو۔ ۔ ۔

    گھر سے پیغام آیا۔ ۔ ۔جمعرات کو۔ ۔ ۔ ابا کا۔ ۔ ۔ ٹکٹ بھیج رہا رہو۔ ۔ جلدی کراچی مرو۔ ۔ ۔۔ ۔ اب مرو انہوں نے نہیں کہا تھا ۔ ۔ پر مطلب یہی تھا۔
    پھر ہم چلے کراچی۔ ۔ کچھ لوگ کہتے ہیں نہ کرانچی۔ ۔تو کرانچی میں اترا۔
    گھر پہنچا، اماں دیکھ کے جھوم اٹھیں۔ اب نے وقت ضائع کئے بغیر فریش ہونے کو باتھ روم بھیج دیا۔ مجھے ڈر ہوا کے آج کہین یہ مجھے خود نہ نہلا دیں۔ ۔ ۔ بنا پانی کے پائپ سے۔ ۔ ۔ جو کے میں پہلے بھی کئی بار اس نعمت بے بہا سے مشرف ہو چکا ہوں۔
    ابھی نہا کے نکلا تو گھر لوگوں سے بھرا ہوا تھا۔ انجانے چہرے۔ کوئی لفٹ بھی نہیں کرا رہا تھا۔
    بہن کی نظر پڑی تو جھٹ آئی اور بازو پکڑ کے ڈرائنگ روم میں لے گئی۔ ابّا نے ترچھی نظر نے ہمیں انکے برابر والے صوفہ پر بیٹھنے پر مجبور کر دیا۔
    انکل کو سلام کرو۔ ابا نے سامنے بیٹھے ہوئے خوبرو انسان کی طرف اشارہ کر کے کہا۔ ہم سوچ میں پڑ گئے کہ یہ انکل تو کسی اینگل سے نہیں لگتا۔ لونڈا سا ہے۔
    اتنی دیر لگتی ہے سلام کرنے میں۔ ۔ ابا نے گھور کر دیکھا اور ہم نے پھر بھی اپنی جگہ پر بیٹھے بیٹے سلام داغ دیا۔
    بیٹا یہ تمہارے انکل ہیں، جائو ہاتھ ملا کر آئو۔ ابا نے دانت پیس کر کہا۔ ابا کون انکل۔ ۔ کیا یہ لونڈا ۔ ۔ ۔مطلب لڑکا۔
    ابا نے قریب تھا اٹھ کے ایک دھپ لگا دیں، پر ہم نے اپنی عزت بچاتے ہوئے لونڈے انکل سے مصافحہ کیا تو تب پتا چلا، بالوں میں کلر لگا ہوا ہے، اور عمرکے پکے ہیں۔
    اچھا تو آپ انکے بیٹے ہیں۔ کیا نام ہے؟
    ابھی منہ سے کچھ اور نکلنے والا تھا کے جانتے بھی ہو اور نام بھی نہیں پتا، ابا کی نظروں کی تپش محسوس کرتے ہوئے سیدھا جواب دیا ۔ ۔ عمرو۔
    کیا کرتے ہیں آپ؟
    یہ لفط آپ پر ہر بار ہنسی نکل جاتی ہے۔ ۔ ۔ کے تھوڑا دیر ہمارے ساتھ رہنے کے بعد بندہ خود تو تڑاک پر اتر آتا ہے ہمارے ساتھ۔ ۔ ہا ہا ہا ہا۔ ۔ ۔
    جی انجنئیرنگ فرم میں ہوں۔ ۔ ۔تو آجکل تو سائیٹ پر ہوگے ۔ ۔ انہوں نے جھت دوسرا پانسا پھینکا؟ ہم تو چپ، جی جی۔ ۔ سائٹ ہر ہی ہوں۔ ۔ ۔
    جبھی رنگ تھوڑا سیاہ پڑ گیا ہے۔ ۔ ہا ہا ہا ۔ ۔انتنا کہہ کر جناب خود ہی ہنسنے لگے۔ ۔ ۔
    آفس کیسا جا رہا ہے؟ دبئی کا موسم تو گرم ہوگا کافی؟ جی جی 45 درجہ تک درجئ حرات ہوتا ہے۔ ۔ ۔47 بیٹا، کل کی یہی رپورٹ ہے۔
    اب ہم سے رہا نہیں گیا۔ ۔ ۔ ۔اب تو میرہ ہٹ گئی۔
    اس بار بارش کا بھی کوئی چانس ہے یا نہیں، 3 سال سے ایک بوند نہیں ٹپکی دبئی میں؟ میں نے خود ہی سوال کر دیا۔ ۔ ۔4 سال بیٹا۔ ۔ ۔اللہ مالک ہے دیکھو کیا ہوتا۔ ۔ دل کیا کے سر پھاڑ لو۔ ۔ یہ کیسا انٹرویو ہے جس میں سوال اور جواب ایک ہے شخص نے دینے ہیں۔

    بیٹا یہ بتائو، دبئی میں کام کی کیا پوزیشن ہے۔ کنسٹرکشن تو ہو نہیں رہی۔ بزنس کے اعتبار سے ایساکیا کیا جاسکتا ہے؟ ٹوالیٹ۔ ۔ ۔میں ٹوائلیٹ سے ہو آوں۔۔ ۔ میں تو اتنا کہہ کر ابا کے پاس سے اٹھ آیا۔ کیوں کے اب برداشت نہیں ہو رہا تھا۔ ابے ہم سب کی تپاتے ہین۔ ۔ توم ہماری تپا رہے ہو۔

    پھر تھوڑی دیر گیلری میں ہوا خوری کی تو خیال آیا کے بہن کی ہونے والے سسرال والے لگتے ہیں۔ ابا نے ایک بار پھر بلایا۔
    بیٹا ۔ ۔یہاں کرسی پر بیٹھ جائو۔ ہم بیٹھ گئے۔ ابھی پوری طرح سنبھلے بھی نہ پائے تھے کے گھر کے تمام افراد اور مہمان ہمارے گرد جمع ہو گئے۔ اور ہمین یوں تکنے لگے جیسے ۔ ۔ نیا نیا چڑیا گھر مین گوریلا آجائے تو سب لوگ اسے دیکھنے جاتے ہیں۔
    ایک مہذب سی خاتون نے ہمارے گلے میں پھولوں کا کنٹھا ڈالا۔ ۔ ۔ یہ تمہاری ہونے والی ساس ہیں۔ ۔ ۔کانوں میں کسی کے کھسر پھسر کرنے کی آواز ائی۔ ۔ جو کے کوئی اور نہیں میری فسادی بہن تھی۔
    دماغ سن۔ ۔ جسم من بھر وزنی ہو گیا۔ ۔ ہم اب تک یہی سمجھ رہے تھے کے بہن کی دن تاریخ یا پھر سیدھا بارات ہی ہوگی۔ ۔ کیوں کے ہم سے مشورہ کرنا یا کسی معاملے میں شامل کرنا کوئی ضروری سمجھتا نہیں۔ پر یہ تو کہانی ہی کچھ اور تھی۔
    ابھی یہ سوچنے کی کوش ہی جاری تھی کے ابا نے منہ میں قلاقند سے بھرا چمچا ٹھونس دیا۔ ۔ ۔ ۔ اللہ نصیب اچھا کرے۔ ابا نے دعا دی، امان نے گلے لگایا۔
    یہ تمہاری ساس۔ ۔ یہ سسر۔ ۔ یہ چچا اور یہ ماموں۔ ۔ ۔ابا ہمارے پاس کھڑے ہو کر سارے رشت ےایک کے بعد ایک گنوانے لگے اور ہم ابا کو سخت ناراضگی اور سرخ آنکھوں سے گھورتے رہے۔ ابا نے وجابی طور پر ہمارے کاندھے پر ہاتھ رکھ لیا کے کہیں ہم کوئی چراند نہ کر دیں۔
    یہ خالو کی تو۔ ۔ ۔ اس بری طرح منہ میٹھا کیا۔ ۔ جیسے چمچا منہ میں ڈالا نہین بلکہ گھسیڑا ہو۔ ۔ ۔اور ہمارا مسوڑہ چھیل ڈالا۔ ۔ دو منٹ کیلئے تو ہوش و حواس گم ہو گئے۔ ۔ جیسا کومہ میں چلا گیا ہوں۔ ۔ اس زور کی کلیف ہوئی۔ ۔ ۔۔ ۔
    ھے ھے ھے ۔ لگ گئی۔ ۔کوئہ بات نہیں ۔ ۔یہ کہہ کر ہنسنے لگے ۔ ۔دل تو کرا چمچا انکی چمکتی ٹنڈ پر مار دوں۔
    اس سے زیادہ زہریلی مٹھائی زندگی مین نہ کھائی تھی۔ موڈ سخت خراب۔ ۔ اور منصوبہ یہ کہ رات ہی کو دبئی واپسی ہوگی۔
    رات ۔ ۔ ۔ہم کیسی رات اور کہاں کا سفر۔ ۔۔ ۔ 2 گھنٹے تک یہی ادھم بازی چلتی رہی۔ ۔ اور رات کے 2 بج گئے۔
    اماں نے پیار سے سر پہ ہاتھ پھیرا۔ ۔ جیسی میری حالت مسجھ گئیں ہوں، اور بہن بھی میر تیور دیکھ کے سہم گئی تھی۔
    اسکے بعد ڈنر جسے میں نے بالکل ہاتھ نہیں لگایا۔ زبردستی دسترخوان پر بٹھایا۔ ہمارے ہاں بیٹھ کر کھانا کھایا جاتاہے، چاہے کیسا مہمان ہو اور کیسی تقریب۔ ۔ ۔
    ابا نے ایک نہیں 100 بار کہا،کے کھانا کھائو۔ ۔ پر میں بھی ضدی۔ ۔ نا کھانا تھا نہ کھایا۔ ۔ ۔ ابا نے دبے لفظوں کہا کے لوگ کیاکہیں گے۔ ۔ کتنا بے کہنا لڑکا ہے۔ ۔ ۔ اور ہم نے آگے سے کہا ۔ ۔ جو کہ ےگا منہ کی کھائے گا۔ ۔ ۔ ابا نے سوچا بدتمیز کہیں بے عزتی نا کرادے ۔ ۔ اس لئے خاموش ہوگئے۔
    تکلیف کیسی ہو ، پر نیند سے پہلے تک دکھ کا احساس رہتا ہے۔ ۔ ۔ کھانے کے دوران میں اٹھ گیا اور، اپنے روم میں چلا گیا۔ ۔ کچھ دیر لیتا معلوم ہی نہیں چلا کہ سو گیا۔ یاروں صبح 4 بجےاٹھتے ہیں فجر کیلئے۔ ۔ نیند تو آئے گی ہی ناں۔
    صبح ابا نے اٹھایا ناشتے کیلئے۔ کل نا دن میں کھانا کھایا تھا، کیوں کے جہاز کا کھانا پسند نہیں آتا ہمیں، رات میں دال ہی کالی تھی۔
    پوریاں پر حملہ ہوا، تو رات کی کہانی بھی یاد آگئی۔
    ابا نے تفصیل بتائی کے ۔ ۔ ایسے ایسے لوگ ہیں۔ امان نے لڑکی کے بارے میں بتانا شروع کر دیا۔ مین چپ چاپ سنتا رہا۔ ۔ مائی اللہ۔ ۔ اس دن مجھ پر ایسی چپ لگی تھی کے شائد منہ توڑ بھی دیتے تو ایک لفظ نا نکلتا۔
    میں واپس جا رہا ہوں۔ ۔ میں نے ساری باتوں کا بس اتنا جواب دیا۔
    واپس جائے گا۔ ۔ ابا نے کہا ۔۔ ہاں جائوں گا ۔ ۔ ایک ۔ ۔دو ۔ ۔ تین۔ ۔ اممممم۔ ۔ تین یا پھر چار دھپ لگائیں ابا نے کر میں تو میرا رکا سانس بحال ہو گیا، اور گنگ زبان کھل گئی۔ ۔ جائونگا جائونگا جائونگا۔ ۔ ایک اور دھپ ۔ ۔ ۔ ۔ بڑے میاں صاحب بہادر کا ہاتھ بڑا بھاری ہے۔ ۔ ۔ مار دیں۔ ۔تو بندہ سکتہ میں چلا جاتا ہے تھوڑی دیر کو۔ ۔ ۔
    چلا جا۔ ۔ تیرا پاسپورٹ میرے پاس ہے۔ ۔ ابا نے انکشاف کیا۔ ۔
    یار یہ کیا چیٹنگ پہ چیٹنگ ہے۔ ۔ ۔ مجھے بتانا تو تھا نا ایک بار۔ ۔
    اچھا اب ہو گیا آپکا مقصد پورا۔ ۔ ۔ اب مجھے جانے دیں۔ میں نے منہ بسورنا شروع کر دیا۔ ۔ ایسا کیسے ہوتاہے۔ ۔ ۔ حد ہوتی ہے نا یار۔
    چپ کر کے آگے کی بات سنو۔ ۔ ابا نے کہا ۔۔ نہیں سنوں گا میں کچھ بھی۔ ۔ ایک اور دھپ۔ ۔ بیٹھا رہ یہیں پر ۔ ۔ ہلنا مت اپنی جگہ سے۔ ۔ ۔ اگر کہین ادھر ادھر ہوا نا تو خیر نہیں۔ ۔
    اماں۔ ۔ خبردار جو کسی نے مجھے میری جگہ سے ہلانے کی کوشش کی ۔ ۔ ۔سنا نہیں ابا نے منع کیا ہے۔ ۔ ۔مجھے اپنے آپ پر غصہ تھا کے میں یہاں آیا ہی کیوں۔
    صبح سے ظہر ہوگئی۔ ۔ وہیں بٹھا کے رکھا مجھے۔ ۔ ۔
    ابا کو علم ہو چلا تھا۔ ۔ اب لونڈا ضد پر آگیا ہے۔ ۔ ایسے نہیں مانے گا۔ ۔
    اچھا سن میں نے آج کے دن تہمارا نکاح رکھ دیا ہے۔ اور جب تم مناسب سمجھو مجھے بتا دو، رخصتی کر دیں گے۔ اب ہم کب تک یہ ذمہ داریاں اٹھائیں۔ ۔۔
    کیا؟ نکاح۔ ۔ ۔کیا مطلب کل منگنی آج نکاح۔ نہ چٹ کا انتظار نہ پٹ کو دیکھا۔ ۔ جہاں آپ نے سارے کام کر دیے تو یہ ایک رخصتی کا گناہ مجھ پر کیوں۔ ۔ یہ بھی آپ ہی طے کر دیں۔۔ ۔ مجھے تو سخت غصہ آیا ہوا تھا۔ ۔ بلکہ کل رات سے مسلسل غصے میں تھا اور اب تو تھک چکا تھا۔ وہ کیا ہے کے اتنی دیر غصے میں رہا نہیں جاتا ناں۔ ۔ ۔سر درد کر رہا تھا۔ ۔
    بھئی اب تمہاری بھی مرضی ہونی چاہئے، ہم کوئی اتنے بھی ظالم نہیں ہیں۔ یہ میرے ابّا کو دیکھو۔ ۔ میرے باپ ہی ہیں نہ آخر۔ ۔ ۔۔
    بیل بج رہی تھی۔ ۔ دروازے پر کوئی آیا تھا۔ ۔
    ابا انکل آئے تھے، دروازے سے ہی یہ لفافہ پکڑا کر چلے گئے ، کے جلدی میں ہوں شام کا انتطام کرنا ہے۔ ابّا نے لفافہ میرے آگے کر دیا کے دیکھ کے بتائوں اس میں کیا ہے۔
    اس ساری بات میں ابھی تک لڑکی کا کہیں کوئی ذکر نہیں۔ ۔ ۔
    لفافے میں کیا تھا ۔ ۔ نکاح نامہ تھا۔ ۔ اور جس چیز نے مجھے سب سے زیادہ چونکا دیا وہ تھا۔ ۔ ۔ ۔
    لڑکی کا نام اور اسکے دستخط۔ ۔ ۔میرے لئے ایک بالکل نیا نام۔ ۔ اور میں صد فیصد انجان۔
    یہ چل کیا رہا ہے۔ ۔ یہ کون۔ ۔ دستخط کیسے کر دیئے۔ ۔ دل کی بات دل میں ہی رہ گئی۔
    ابا نے نکاح نامہ میرے ہاتھ سے لے لیا اور دیکھنے لگے۔ دیکھ لو۔ ۔ اب کچھ نہیں ہو سکتا۔ عصر میں تمہارا نکاح ہے۔ جائو تیاری کرو۔
    ابا چلے گئے اور میں وہیں پر بیٹھا سوچتا رہا کے چلو مین اس لڑکی کو نہیں جانتا خیر ہے۔ ۔ پر اس نے کیسے ایک انجان شخص کو ۔ ۔چلو بنا دیکھے ہی صحیح۔ ۔ پر کیسے۔ ۔ اتنا بڑا جوا۔ ۔ ۔ چلو میں دور کا ہی سہی۔ ۔ رشتہ دار ہی ہوتا۔ ۔ ۔ اور ابھی منگنی ختم ہوئی نہیں ۔ ۔اور یہ نکاح۔ ۔ ۔۔ یہ لڑکیاں بھی کتنا عجیب ہوتی ہیں۔ ۔ ۔ نہیں مانتی تو کسی کی نہیں مانتی ۔۔ اور جب مانتی ہیں تو ایسا کے ڈھونڈے سے مثال نہ ملے۔
    کب عصر ہوئی۔ ۔ کب مسجد گیا۔ ۔ دیھان ہی نہیں رہا۔ نکاح خوان نے جب ہم سے تیسری بار پوچھا اور ابا نے پیچھے سے ٹھوکا دیا تو ہم نے ایکدم یکسر سب کچھ بھلاکر پوری قوت سے انکار کرنا چاہ پر سوائے اس کے کہ کہا ہاں میں نے قبول کیا، منہ س کچھ اور نہیں نکلا۔۔ ۔ آپ لوگ بھی کہہ رہ ہونگے ۔ ۔ گھر آئی لکشمی کو کون ٹھکرائے۔ ۔ ۔ بندر کے ہات ناریل۔ ۔ دل میں لڈو۔ ۔ ۔ یہ سب ہو سکتا تھا پر اسطرح سے۔ ۔ ۔ ہم نے صرف اپنی سوچ سے تخلیق ہی کر سکتے ہین یا پھر کسی فلم کا سین ہو سکتا ہے۔ ۔
    مبارکبادیں۔ ۔مصافحہ معانقہ۔ ۔ کچھ پتا نہیں۔ ۔ مسجد سے گھر تک پہنچنے می ایک ہی بات دماغ میں تھی کہ ۔ ۔ میں نے ہاں کیوں کر دی۔
    مغرب کے بعد اماں نے ایک نیا سوٹ لا دیا اور پیار سے کہا ۔ ۔بیٹا یہ پہن لو۔ ۔ ۔
    اماں کل سے یہ میرا تیسرا سوٹ ہے۔ ۔ کیا میں کپڑتے ہی تبدیل کرتا رہونگا۔ ۔ ۔ میں نے اماں سے التجائیہ انداز میں کہا۔ ۔ بیٹا۔ ۔ ابھی تمہاےر سسرال جانا ہے ۔ ۔وہاں تمہاری دعوت ہے۔ ۔ ۔میں اماں کو پر شکوہ نظروں سے دیکھتا رہ گیا۔
    بیٹا یہ تمہارا اور تمہارے ابا کا معاملہ ہے۔ جو ہوا سو ہوا۔ ۔ تمکو پتا ہے اپنے ابو کا۔ ۔ ۔ طریقہ ٹھیک نہیں ہے۔ ۔ پر کام تو ٹھیک ہے نا۔ چلو شاباش کھڑے ہو جائو۔ خوشی کا موقع ہے اور گھر میں اداسی۔ ۔ یہ اچھی بات نہیں۔ چلو جلدی سے کھڑے ہو جائو۔
    یہ بات ٹھیک تھی ۔ ۔ کے میری موڈ کا اثر پورے گھر پر تھا۔ ۔ ۔ پر مین ہوں ہی ایسا۔ ۔ ۔جہاں سب کا موڈ بناتا ہوں۔ ۔ وہیں اس بات کا خود خیال رکھتا ہوں کے میرا موڈ گڑبڑ نا ہو۔ ۔ ورنہ تو بس۔ ۔ ہو گیا کام۔
    سسرال گئے۔ ۔ ڈنر کیلئے عالیشان دسترخوان لگایا گیا۔ خوب عزت اور آئو بھگت ہوئی۔ پر ہمارا دل ہی نہیں تھا کے کسی سے بات کریں۔ ۔ کتنے ہی لوگ ۔ ۔ لڑکے ۔ ۔لڑکیاں پاس آئے۔ ۔ پر ایک آدھ بات کے بعد کوئی ہم سے دوبارہ ہم کلام ہونے کی جرات نہ کر سکا۔ کہہ رہیں ہونگے کے لڑکی کی قسمت پھوٹ گئی۔ بہن نے بھی ایک بار آکر کہاکے موڈ تو ٹھیک کر لو۔ کافی کچھ سنائی ۔ ۔ آخر میں کہہ گئی ۔ ۔ ضدی نا ہو تو۔ ۔ ۔ سل گیا تھا میرا منہ۔
    کھانہ چکھنے کی حد تک کھایا۔ کھانے کے بعد ایک اور سرپرائز تھا۔ ۔ وہ یہ کہ دلھا اور دلہن کی رسم۔ ۔ اب یہ بتا نہیں کیا بلا تھی۔ ایسی سخت کوفت ہوئی نا کے بس۔ ۔ ۔ حالنکہ کے میں ایسی محفلوں میں رہتا ہوں ۔ ۔جہاں چھچچورا پن کا کویئ نہ کوئی موقع ضرور ہو۔ ۔
    ایک صوفہ پر بٹھایا گیا۔ ۔ ابھی ٹھیک سے بیتھ بھی نہیں پایا تھا کے سامنے سے ایک دلہن نما لڑکی۔ ۔ جسے کئی لوگ یوں تھامے ہوئے تھے ۔ ۔ جیسے کے ابھی گری اور جب گری۔ ۔ کو لائے اور ہمارے برابر بٹھا دیا۔
    زندگی میں سینکڑوں بار لڑکیوں کے برابر بیٹھا ہونگا۔ ۔ ۔ پر اتنی جھجک ۔ ۔ شائس پہلی بار محسوس ہوئی اور میں تھوڑا فاصلے پر سرک گیا۔ جس پر میرا خوب مذاق بھی اڑایا گیا کے لڑکا لڑکی سے زیادہ شرما رہا ہے۔
    درجنوں لڑکے لڑکیوں کے جھرمٹ میں، جہاں گھر کے بڑے بوڑھے بھی موجود ہوں۔ ۔ ہم سے ڈیمانڈ کی گئی کے ایک نظر دلھن پر بھی ڈال دیں۔ ۔ کیوں کے میں سارا وقت سر جھکا کے بیٹھا رہا تھا۔ پر ہم سے نہ ہوا۔ سوال اٹھا کے نام ہی ہوچھ لو۔ ۔ سلام ہی کر لو۔ ۔ ۔ تو منہ بندکرنے کیلئے ہم نے اتنا کہا کے ۔ ۔ سلام بنا مصافحہ(ہاتھ ملانا) اور ملاقات بلا معانقہ (گلے ملنا) ہمیں پسند نہیں۔
    اس پر سب کو معلوم ہو گیا کے ہمارے منہ میں بھی زبان ہے۔کتنیدیر رسم چلی معلوم نہیں۔ پر نہ میں نے نظر اٹھا کے دیکھا ۔ ۔خیر اسکی شرم اسے اجازت نہ دے رہی ہوگی ۔ ۔جابھی اس نے بھی نہیں دیکھا۔
    رسم ختم ہوتے ہی میں جھٹ سے جانے کیلئے کھڑا ہو گیا۔ بہت نرسو تھا۔ ۔ اور تیزی میں نقصان ہوا۔ ۔ فلمی سین۔ ۔ ۔ کسی ماں کے لاڈلے نے میرے ہم دونوں کے بھاری بھرکم پھولوں کے کنٹھوں کو جو لمبے بھی تھے۔ ۔ آخر سے باندھ دیا تھا۔
    اب ہم اٹھے تو گلا گردن جھکے اور محترمہ کو جھٹکالگے۔ ۔ ایک دو بار تو معلوم نہیں ہوا۔ ۔ ایک ہلچل سی مچ گئی۔ ۔ اور خوب ہی ہی ہاہا ہو ہو ہوا۔ ۔ ۔
    ہم تو بالکل ہی گڑبڑا گئے۔ ۔ حالت پہلے ہی ڈائون تھی۔ ۔ ۔ ہاتھ پائوں پھول گئے۔ ۔ ۔ اس وقت اونٹ کے گلے ڈلی گھنٹی نکالنے کی کشمکش میں ایک بار نظروں سے نظروں کا ٹکرائو ہوا۔
    میں کنجوس آدمی نہیں ۔ ۔ خوبصورتی کی تعریف ضرور کرتا ہوں اور دل سے کرتا ہوں۔ ۔ کوئی شک نہیں ایک دلکش چہرہ میرے سامنے تھا۔ پر میں کچھ کہے بنا اپنی جان چھڑا کر مجمع سے باہر آگیا۔

    رات دیر سے گھر پہنچے۔ ۔ ۔ کسی کا سونے کا موڈ نہین تھا۔ ۔ ہر چہرہ میری خوشی کے خاطر کھل رہا تھا۔ ۔سوائے میرے تھوبڑے کے۔ بیٹھک میں خوش گپیوں کا ماحول تھا۔ ایک ایک کر کے سب اپنے کمرے میں جانے لگے۔ ابا اماں اور میں باقی رہ گئے۔
    بیٹا دیکھ میری بات سنو۔ بھلے لوگ ہیں۔ لڑکی اچھی ہے۔ دعائیں دو گے ہمیں۔ مجھے معلوم تھا کے تم اتنی جلدی پر راضی نہیں ہوگے۔ ۔ پر بیٹا میری خوشی کی خاطر خوش ہوجا۔ ابا نے اور بھی بہت کچھ کہہ کر مجھے سمجھایا۔
    ابا مجھے واپس جانا ہے۔ میرا پاسپورٹ دے دیں۔ میں نے فقط اتنا ہی کہا۔ ابا میری بات پر خاموش ہو گئے۔
    پلیز مجھے جاناہے۔ میں نے ایک بار پھر کہا۔
    جیسے تمہاری مرضی۔ تمہارے پاسپورٹ وہیں ہے جہاں تم نے رکھا تھا۔ ابا نے افسردگی سے کہا اور کمرے کی طرف جانے لگے۔
    جانے سے پہلے ملکر تو جائو گے ناں؟ ابا نے پوچھا اور میں نے کوئی جواب نہیں دیا۔
    میں کمرے میں گیا اور اپنا ہینڈ بیگ چیک کیاتو معلوم ہوا کے ابا نے پاسپورٹ لیا ہی نہیں تھا۔ ۔ ابے بدھو۔ ۔ چیک تو کر لیتا پہلے۔ ۔ ابا کو کیسے معلوم ہوا کے پاسپورٹ کیاں ہے۔ ۔ دفع ہو۔ ۔ خود کو کوسنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں تھا۔
    صبح ناشتے پر اپنے سامان کے ساتھ پہنچا۔ جسکا صاف مطلب تھا کے مین واپس جا رہا ہوں۔
    اماں یہ دیکھ کے تڑپ اٹھیں۔ بیٹا کچھ دن اور رک جا۔ ابھی ایک دن ہی تو ہوا ہے۔
    اماں ابھی تو جانا ہے۔ اتنا کہہ کر ناشتے کرنے لگا۔ اماں ابا کو اشارے میں کچھ کہنے لگیں۔ سب نے چپ چاپ ناشتہ کیا۔ فارغ ہوا تو مٹرو کیب آچکی تھی۔
    اماں سے گلے ملا۔ اماں ہر دفع کی طرح اس بار بھی رخصت ہونے پر زاروقطار رو رہی تھیں۔ شائد اس بار پہلے سے زیادہ رو رہی تھیں۔ کئی بار گلے لگایا۔ ابا سے گلے ملا۔۔ ۔ بیٹا کچھ دن تو رک جا۔ اس طرح تو مت جا۔ ابا نے آخر اپنے منہ سے کہہ ہی دیا۔ ۔ ۔ کہاوت ہے نہ درخت ہی سایہ کرنے کو جھکتا ہے۔ ۔ اس لئے ابا ہی نے کہا۔
    ابا ۔ ۔ گھبرائیں مت۔ ۔ ہمیشہ کیلئے نہیں جا رہا۔ ۔ ۔ واپس آئونگا۔
    بہن سے ملکر اسکا ماتھا چوما اور کیب کی طرف بڑھ گیا۔
    بھائی۔ ۔ بہن نے پیچھے سے آواز دی۔ ۔ اور قریب آکر مجھے ایک پرچی تھمادی۔ ۔ ۔ فون کر لینا۔ ۔ اتنا کہہ کر چلی گئی۔
    میں گاڑی میں بیٹھ کر ائر پورٹ کی جانب چل پڑا۔ ۔ سوچون کے انبار میں مجھے پرچی کی یاد آئی تو کھول کر دیکھا۔ اس میں ایک فون نمبر لکھا تھا۔ ۔ غالبا” یہ "انہی" کا نمبر تھا۔ کچھ دیر میں نے تکا۔ ۔ ۔ پھر گاڑی کی کھڑکی کا شیشہ نیچے کر کے، اسکے دو ٹکڑ ےکئے اور ہوا میں اڑا دیا۔
    دیکھا دوستوں۔ ۔ ۔ میں کیسا ضدی ہوں۔ ۔ ۔سنگدل۔ ۔ ۔ سب لوگوں کے اپنے انتظار میں چھوڑ آیا۔ ۔ ۔
    ابا نے جو کیا۔ ۔ ۔ اس پر میرا رد عمل انکو بھگتنا تھا۔ ۔ یہ انہین معلوم تھا۔ ۔ ۔ اور "انکی" غلطی یہ کے انہوں نے ہمیں ہم س ےپہلے چن لیا تھا۔
    ہاں یہ سچ ہے۔ ۔ میں جل گیا۔ ۔ کے میں کسی کو سلیکٹ کروں۔ ۔ یہ مجھے منظور ہے۔ ۔ پر کوئی مجھے سلیکٹ کر۔ ۔ یہ میری جھوٹی انا کے خلاف بات ہے۔ ۔ ۔
    میں رسک لے سکتا ہوں۔ ۔ لئے بھی ہیں۔ ۔ پر ساری لائف کو کسی ایک مقصد کو پانے کی آگ میں جھونک دینے کی ہمت جو ‘انہوں" نے کی ہے۔ ۔ اتنی ہمت کم از کم مجھ میں تو نہیں۔ مطلب کون ہے یہ۔ ۔ اور کیا ہے یہ۔ ۔ ۔
    زندگی میں 3 مقام پر میں لڑکیوں کے آگے لڑکوں کو کمزور سمجھتا ہوں۔ ایک جب اعتماد کرنا ہو کسی پر۔ دو قربانی دینی ہو تو۔ تین اپنا حق وصولنا ہو تو۔
    مجھے اپنی ہار سے اتنی نفرت نہیں جتنی کسی لڑکی کے جیتنے سے ہے۔ ۔ ہاں ہاں سچ کہہ رہا ہوں۔ ۔ ۔ انسان ہوں نا بھئی ۔ ۔ فرشتہ تو نہیں۔ غصہ آتا ہے جب کوئی لڑکی کسی میدان میں مجھ سبقت لے جائے۔
    پر اس بات کا یہ مطلب ہر گز نہیں ہے کہ میں انکا دشمن ہو جاتا ہوں۔ نفرت کرنا اور حسد کرنا اور بات ہے۔ ۔ ۔دشمنی اور بات ہے۔ بس اپنی کمزوری پر بجائے ماننے کے اور شرمندہ ہونے کے ۔ ۔ خود پر غصہ آتا ہے۔ ۔ جو دوسروں پر نکلتا ہے۔
    دوستوں۔ ۔ آپکے سامنے خواتین جس بھی رن و روپ و رشتے میں سامنے آئیں۔ ۔ کبھی انکو سمجھنے کی خود سے کوشش نہ کرنا۔ سوائے اس بات کے کہ انکا تعلق صنف نازک سے ہے۔ ۔ ۔ جو ہر چیز اور معاملے میں نزاکت پسند ہے۔ سوائے معاملے کی نزاکت کے۔ ۔ کیونکے معاملے کی نزاکت اور اسکا سمجھنا انکا نہیں بلکہ مردوں کا کام ہے۔

    ایک راز کی بات بتا دوں۔ ۔ ۔انکی محفل میں میرا موڈ سوائے اسکے اور کچھ نہیں کے وہ میرے بارے میں ایک ایسی رائے قائم کریں جسکا تعلق مجھ سے نہیں۔ یعنی انکو مس گائیڈ کرنا تھا۔ ۔
    بابا ہمارے ساتھ سرپرائز کھیلنا ہے تو ہم سا بن کر کھیلیں۔ ۔ پر کیا کریں جی۔ ۔ ہم سا کوئی کیسے بنے ۔ ۔ عمرو تو ایک ہی ہے۔ ۔ ہا ہا ہا ہا

    تو دوستون ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔آیئے اور مبارکباد دیجئے ہمیں ۔ ۔ اس بات پر کہ ۔ ۔ ۔ ۔

    عمرو ویڈز نازنین

    بہت بہت شکریہ
    اور اب میں ایک سنجیدہ انسان ہو گیا ہوں۔ ۔ ۔ اور خبردار اس بات کو کسی نے سنجیدگی سے لیا۔ ۔ ھاھاھھاھاھھا




    Mujhey nazneen sahiba sey pori humdardi hai!!!!!!!!!!!!!!!!!!! Dua Goo hoon key Allah unhain janab ko jhelney ki taufeeq ata fermayee Ameen!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!

    Wesey !!!!!!!!!!!!!

    Good Luck for a Married Life!!!!!!!!!!!!!!!! Allah ap dono ko hamesha khush o khurum Rakhey!!!!!! Ameen Sum Ameen!!!!!!!!!!!!!!!!!!!

  11. #11
    smarty cat's Avatar
    smarty cat is offline Expert Member
    HaPpY EvEr AfTeR <3 :D
     
    Join Date
    Jul 2010
    Posts
    24,077
    Blog Entries
    14
    Quoted
    4544 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Congrats

    koui haal nahi bndaa kbhi serious b hojata he life me

    aoni life me jitney mrzi risk liye jaye smtimes they r appreiatable lakin jb muamla kisi b doosre shakhs ka ata he to

    atleast doosre ko bilwaja fazool ana k mslon pr saza n deni chahye

    ہم نے اتنا کہا کے ۔ ۔ سلام بنا مصافحہ(ہاتھ ملانا) اور ملاقات بلا معانقہ (گلے ملنا) ہمیں پسند نہیں۔

    koii haal nai


    ساری دنیا میں مرے جی کو لگا ایک ہی شخص
    ایک ہی شخص تھا ایسا بخدا ایک ہی شخص
    ..............
    وسعت دل میں تنگ دلی کا عالم تو دیکھیۓ
    ایک کو چاهنا، فقط اسی کو چاهنا، پھر کچھ نا چاهنا

    ............
    دل سے نکال دیجئے احساس آرزو
    مر جایئے پر کسی کی تمنا نہ کیجئے۔


  12. #12
    javeria's Avatar
    javeria is offline Expert Member
    Do not argue with an idiot. He
    will drag you down to his
    level and beat you with
    experience.
     
    Join Date
    Jul 2008
    Location
    london, uk
    Posts
    9,959
    Quoted
    4598 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Mubarak ho !!!!!!!!!

    kon hai Bechrai 'Khushnaseeb'

  13. #13
    smarty cat's Avatar
    smarty cat is offline Expert Member
    HaPpY EvEr AfTeR <3 :D
     
    Join Date
    Jul 2010
    Posts
    24,077
    Blog Entries
    14
    Quoted
    4544 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    wese mjhey aik cheezx kafi impressive lagi or wo he simplicity or masjid me nikkah n simple function

    lakin lrki ka pehle se dastakhat sahi n lagaaaaa

  14. #14
    Rujail's Avatar
    Rujail is offline Its Amer. . .
    Andaz Apne Dekhte Hai Aaine
    Mein Woh... Aur Yeh Bhi Dekhte
    Hai Koi Dekhta Na Ho...
     
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    In search
    Posts
    2,893
    Quoted
    709 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by D.A.M.A.G.E.D View Post
    wese mjhey aik cheezx kafi impressive lagi or wo he simplicity or masjid me nikkah n simple function

    lakin lrki ka pehle se dastakhat sahi n lagaaaaa

    emmmmmmmmm. . . lerki ko amooman phely hi dastakhat kerny hotey hian . .kionke masjid me tu lreki aanahi skati .. es liye oski marzi pahley ley li jati he. . .aab ne shyed kabhi nikah me shirkat nahi ki. . .

    woh aur baat he ke ager aap hamari "un" ke siggi ki bat kar rahi hian tu . .es per tu hum unki khoob kharab lain gey. . . how dare u.

  15. #15
    Hash_Rassh's Avatar
    Hash_Rassh is offline Expert Member
    Edit>
     
    Join Date
    Jul 2011
    Location
    aas pas
    Posts
    5,692
    Quoted
    190 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Aap ki daastan-e-gham parh ker aankho se aansoo tapaktay tapaktay reh gaye shukar hai .. wese yaar boht khoob hoi hai aap ke sath bhi . to main ne sahi kaha tha ke khud se baatain krne ki aadat hai honi bhi chahiye hadsa hi aisa hoa hai lolz. or bas ab ana or zid ko chorain or jo number waali parchi phaar di thi us num pr call krain kion ke jis tarha ke aap ho woh num zehn me usi time save ho gaya hoga lolz

    Bohot boht mubarak ho .. meri duayen aap dono ke sath hain




    It's
    Good BeinG StRong. .
    But
    iT
    Sucks too when People Know That
    U Are
    Strong
    &
    They
    thinK thAt
    It
    iS
    OkaY

    tO
    HURT U .. !
    __________________________________
    Koh-e-Anaa Ki Barf Thy, Dono Jamay
    Rahay,,
    Jazbo'n Ki Taiz Dhoop Mein Pighla Na Tu, Na
    MAin..!




  16. #16
    Rujail's Avatar
    Rujail is offline Its Amer. . .
    Andaz Apne Dekhte Hai Aaine
    Mein Woh... Aur Yeh Bhi Dekhte
    Hai Koi Dekhta Na Ho...
     
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    In search
    Posts
    2,893
    Quoted
    709 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by javeria View Post
    Mubarak ho !!!!!!!!!

    kon hai Bechrai 'Khushnaseeb'
    han han bechari. . .ab tum tu roi gi hi . .sorry dear. .. no chance at all. .. hahahhahahha

  17. #17
    smarty cat's Avatar
    smarty cat is offline Expert Member
    HaPpY EvEr AfTeR <3 :D
     
    Join Date
    Jul 2010
    Posts
    24,077
    Blog Entries
    14
    Quoted
    4544 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    kun n jaskti lrki masjid me??

    pehle dastakhat pr iatraz se mtlb.........lrki k sath dhoka b to hoskta he....btaya kuch jaye or bad me dastakhat koi or lrka krle


    ye to ghalat he.....nuqsan ka bht bara chance
    Quote Originally Posted by Zairo_o_Zabbar View Post

    emmmmmmmmm. . . lerki ko amooman phely hi dastakhat kerny hotey hian . .kionke masjid me tu lreki aanahi skati .. es liye oski marzi pahley ley li jati he. . .aab ne shyed kabhi nikah me shirkat nahi ki. . .

    woh aur baat he ke ager aap hamari "un" ke siggi ki bat kar rahi hian tu . .es per tu hum unki khoob kharab lain gey. . . how dare u.

  18. #18
    Mohammad Sajid's Avatar
    Mohammad Sajid is offline * خاک نشین *
    ( Meri Manzil Tak Ka Saathi
    Sirf Mera Saaya Nikla )
     
    Join Date
    Feb 2009
    Location
    Thandi Hawaaon Main
    Posts
    3,350
    Quoted
    63 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Congrats

    Pata Nahin Kis Ke Naseeb Phoote








































































    Dont Mind Mazaq Kar Raha Hoon
    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

  19. #19
    smarty cat's Avatar
    smarty cat is offline Expert Member
    HaPpY EvEr AfTeR <3 :D
     
    Join Date
    Jul 2010
    Posts
    24,077
    Blog Entries
    14
    Quoted
    4544 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    seriously mere xhn em bhi yahi baat thi ahhahahha

    wrna itna bara jigra kis ka hota he k numbr phar de wo b lrki ka
    Quote Originally Posted by Hash_Rassh View Post
    Aap ki daastan-e-gham parh ker aankho se aansoo tapaktay tapaktay reh gaye shukar hai .. wese yaar boht khoob hoi hai aap ke sath bhi . to main ne sahi kaha tha ke khud se baatain krne ki aadat hai honi bhi chahiye hadsa hi aisa hoa hai lolz. or bas ab ana or zid ko chorain or jo number waali parchi phaar di thi us num pr call krain kion ke jis tarha ke aap ho woh num zehn me usi time save ho gaya hoga lolz

    Bohot boht mubarak ho .. meri duayen aap dono ke sath hain

  20. #20
    Rujail's Avatar
    Rujail is offline Its Amer. . .
    Andaz Apne Dekhte Hai Aaine
    Mein Woh... Aur Yeh Bhi Dekhte
    Hai Koi Dekhta Na Ho...
     
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    In search
    Posts
    2,893
    Quoted
    709 Post(s)

    Re: افسوسناک خبر

    Quote Originally Posted by Nabbas View Post


    Mujhey nazneen sahiba sey pori humdardi hai!!!!!!!!!!!!!!!!!!! Dua Goo hoon key Allah unhain janab ko jhelney ki taufeeq ata fermayee Ameen!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!

    Wesey !!!!!!!!!!!!!

    Good Luck for a Married Life!!!!!!!!!!!!!!!! Allah ap dono ko hamesha khush o khurum Rakhey!!!!!! Ameen Sum Ameen!!!!!!!!!!!!!!!!!!!

    nakara bandye. . .hamari gham ki dastaan nazar na aai ..
    ye shaid ke bad londoon ka yehi haal hota he. . maloom nahi phir bhi badnaam kion hain.

    jhaailna tu pary ga. . aakhir unka fiasla tha. per abhi picture baqi he mery duddoo.

Page 1 of 6 123 ... Last

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •  

Log in