All Pakistani Dramas Lists
Latest Episodes of Dramas - Latest Politics Shows - Latest Politics Discussions

Page 1 of 2 12 Last

Thread: پردیس دے دکھ

      
   
  1. #1
    patriot19472001's Avatar
    patriot19472001 is offline Senior Member
    WELL DONE is better than well
    said!!!
     
    Join Date
    Nov 2009
    Posts
    979
    Blog Entries
    2
    Quoted
    94 Post(s)

    پردیس دے دکھ

    پردیس ایک بہت بڑی اور کڑوی حقیقت ہے جس کو اگر مناسب طریقے سے ڈیل نہ کیا جائے تو زندگی کا سکون اور چین غارت ہو سکتا ہے - پردیس کے خواب بڑے سہانے ہوتے ہیں - سوچیں ایسا تانا بانا بنتی ہیں کہ انسان حیران رہ جاتا ہے لیکن جب حقیقت سے واسطہ پڑتا ہے تو چودہ طبق روشن ہو جاتے ہیں - سوچ میں گرہیں پر جاتی ہیں اور وقتی خوشی ماند پڑنے لگتی ہے - ایک طرف محبتیں ہوتی ہیں اور دوسری طرف ان محبتوں سے جڑی مصلحتیں - آج چھٹی کے دن کی یہ سوچ اسی سلسلے کی ہے -
    -
    پردیس میں آ کر انسان کی ڈپریشن دگنی ہو جاتی ہے - اس کی ایک وجہ ویژن کا بڑا ہونا بھی ہے - پردیس میں جیسے ہی ویژن بڑا ہوتا ہے ہم اپنے ملک میں اپنی فیملی کی زندگی کو ویسے ہی چلانا چاہتے ہیں لیکن وہاں سے رسپانس بس گنا چنا ہی آتا ہے - اس کی وجہ ویژن کی کمی اور وہاں کا عمومی ماحول ہوتا ہے - تو معاملات کا ہمارے ویژن کے مطابق طے نہ ہونا بھی ہمیں ڈپریشن کا شکار بنا دیتا ہے -

    میں اکثر یہاں دوستوں سے کہتا ہوں کہ پردیس آ کر ہم اپنے ملک کے لئے ان فٹ ہو جاتے ہیں - ہمیں صاف ہوا ، اچھی خوراک ، بہترین رہائش اور خاص طور پر شخصی آزادی کا ایسا شاندار چسکا پڑتا ہے کہ اپنے ملک واپس جا کر ہم تھوڑے وقت میں ہی بیزار ہو جاتے ہیں -

    پردیس آ کر انسان دو حصّوں میں بٹ جاتا ہے - ایک حصہ سوچوں کا ہے جو ہمیشہ اپنے خاندان اور ملک کے گرد گھومتی ہیں اور ایک حصہ جسم کا ہے جو پردیس میں ہوتا ہے - بعض اوقات ہم نہ چاہتے ہوے بھی اس فرق کو مٹانے پے تل جاتے ہیں اور ویسی ہی عمومی لا پرواہی کا مظاہرہ کرتے ہیں جو اپنے گھر میں تو خاصہ ہوا کرتی تھی لیکن پردیس میں رہ خاصی دب چکی ہوتی ہے -

    پاکستان سے روانگی سے پہلے پے درپے کچھ واقعات پیش اے جنہوں نے سنجیدگی سے سوچنے پ
    ہ مجبور کر دیا -ان میں سے ایک واقعہ کچھ یوں تھا- میرے ہمسایے میں سے ایک خاتون امی سے ملنے آئیں اور مجھ سے ملاقات کی خواہش ظاہر کی - میں ملنا نہی چاہتا تھا لیکن چار و نا چار جانا پڑا - مگر سوچ کی کڑیاں یہیں پھنسیں تھیں کہ میں تو ان خاتون کو جانتا نہیں ، جانے کیا کہنا چاہتی ہیں -

    ان سے ملاقات ہوئی تو انہوں نے کہا کہ بیٹا میں نے آپکی امی سے سنا کہ آپ پاکستان سے باہر جا رہے ہیں - میں نے بتایا جی آپ نے صحیح سنا ہے - انہوں نے کہا! بیٹا میں آپ کو ایک نصیحت کروں گی کہ وہاں جا کر یہاں کے لوگوں کو بھول نہ جانا- میں ان کی اس بات
    پہ ہکا بکا رہ گیا - میں نے ان سے پوچھا کہ آپ نے ایسا کیوں کہا ؟ انہیں نے کہا ! بیٹا ، جہاں تم جا رہے ہو وہاں آج سے سات سال پہلے میرا بیٹا بھی گیا تھا - آج تک واپس نہیں آیا -صرف فون پے بات ہوتی ہے کبھی کبھار اور بس - میں نے وجہ پوچھی تو وہ خاموش ہو کر رہ گئیں -

    جب میں پاکستان سے باہر آیا تو چند باتوں کا اندازہ ہوا - سب سے پہلی بات کہ پردیس میں جہاں بھی ہوں ہمارا فیملی کے ساتھ کمیونیکشن کا ترازو نہی جھولنا چاہے اس کی قیمت کچھ ہی ادا کرنی پڑے کیوں اگر یہ ترازو دونوں میں سے ایک طرف بھی جھک گیا تو المیے رو نما ہوتے ہیں - اسی ترازو کا پلڑا اگر فیملی کی طرف سے اٹھ
    جائے تو ماں باپ اور بہن بھائیوں کو شکوہ ہوتا ہے کہ بھائی ہماری پرواہ نہیں کرتا یا نا فرمان ہو گیا ہے - اور اگر یہ پلڑا پردیس کی طرف سے اٹھ جائے تو پردیسی کو ہمیشہ یہی شکایت رہتی ہے کہ میں گھر رابطہ کرتا ہوں تو جواب مثبت نہی ہوتا - اس کا حل فیملی کے لوگ یوں کر سکتے ہیں کہ جو پردیس میں ہے اسے بھی گھر کے فیصلوں میں براہ راست شریک رکھا جائے اور اگر ممکن ہو تو وقتاً فوقتاً کچھ کام بھی اس کے ذمے لگاے جاتے رہیں تا کہ اس کی کمیونیکشن اور دلچسپی کا ترازو برابر رہے -

    مزید براں
    جب بھی پردیس آئیں تو ہر ماہ اپنی کمائی کا ایک خاص حصّہ علیحدہ کر لیں اور اس کی طرف نہ دیکھنے کے لئے کمپرومائز کر لیں - اس کی وجہ یہ بھی ہے کہ اکثر پردیسی جب گھر جاتے ہیں تو ان کی نظر میں وہ تمام رقوم ہوتی ہیں جو گھر بھیجی جا چکی ہوتی ہیں اور گھر والوں کی نظر میں پردیسی کے پاس کوئی ایسا درخت موجود ہوتا ہے جس پر پیسے کبھی ختم نہیں ہوتے لہٰذا اس وقت صورت حال شدید خراب ہو جاتی ہے جب دونوں فریقین کوان کی سوچ سے مختلف صورت حال کا سامنا ہوتا ہے -

    اس کے علاوہ پردیس جائیں اپنے اہداف متعین کر لیں - جیسے ہی وہ پورے ہوں اپنے گھر کی راہ لیں کیوں کے جیسے جیسے وقت آگے بڑھے گا خواہشات کا طوفان بڑھے گا جو صرف بربادی کا موجب بنے گا -

    یہاں سب سے اہم بات یہ ہے کہ پردیس میں کبھی فیملی پی کمپرومائز نہ کریں - رزق الله تعالیٰ کی طرف سے مقرر ہے - اگر لکھا ہوا ہے تو رات کو کوئی بھوکا نہیں سو سکتا - ایسا ہی کیا میرے ساتھی حافظ صاحب نے - ان کی زوجہ محترمہ جو کے ایک اچھے مدرسے سے دینی تعلیم حاصل کر چکی ہیں نے حافظ صاحب کو ان کے بھائی کی وفات کے بعد ہمیشہ کے لئے گھر آنے کے لئے کہا کیوں کہ حافظ صاحب کے ماں باپ کو ان کی ضرورت تھی - حافظ صاحب نے استخارہ کیا اور اس کے بعد کسی بات کی پرواہ نہ کرتے ہوۓ اصولی فیصلے کے تحت پاکستان چلے گئے جہاں تقریباً دو ماہ کی تلاش کے بعد انہوں نے پاکستان میں موجود ایک بہترین ملٹی نیشنل کمپنی میں جاب حاصل کر لی اور آج اپنے گھر بیحد آسودہ زندگی گزار رہے ہیں -

    یہاں اس سارے مضمون کا مقصد صرف ایک ہے کہ اگر انسان پردیس جائے تو اس کے زیر نظر صرف مقاصد ہونے چاہیں جن کی تکمیل کے بعد گھر کی راہ لینی چاہیے - ماں باپ اور بہن بھائیوں کی قربت کا کوئی نعمل بدل نہی ہوتا - جن گلی کوچوں میں وقت گزرا ہو ان کا بھی کوئی نعمل بدل نہیں ہوتا - دولت کبھی انسانوں کی جگہ نہیں لے سکتی - اکیلےاچھا کھانا کھانا کبھی اس مسرت کے پاسنگ نہی ہو سکتا جو مسرت خاندان کے لوگوں کے ساتھ بیٹھ کر کھانے میں ہے اور اچھا تکیہ کبھی اس سکون کا با عث نہیں ہو سکتا جو سکون ماں کی گود میں سر رکھ کے ملتا ہے


    الله ہم سب کو عافیت نصیب فرمائیں اور زندگی کے ہر موڑ پر صحیح فیصلے کرنے کی توفیق عطا فرمائیں آمین

    patriot-


    -




  2. The Following 9 Users Say Thank You to patriot19472001 For This Useful Post:

    *resham* (08-05-2013), Adiva Afafa (08-03-2013), Arsalan_Afzal (08-05-2013), Baba ki guriya (08-03-2013), Flashpro (08-03-2013), Marvimato (08-05-2013), Muhaddisa (08-03-2013), Saboo! (08-04-2013), Xtylish Sami (08-03-2013)

  3. #2
    Baba ki guriya's Avatar
    Baba ki guriya is offline Expert Member
    "AnD.. In SUJOOd I fOuNd
    'wHaT I LoSt"
     
    Join Date
    Mar 2011
    Location
    In M@m@'$ 3y3$
    Posts
    32,601
    Quoted
    1066 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    SUm Ameen

    bht acha likha ap ne Thanx for sharing !

  4. #3
    Adiva Afafa's Avatar
    Adiva Afafa is offline `~PsyCholOG!$t~`
    Excuses are but a defense
    mechanism for guilt !
     
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    Hyderabad, Sindh
    Posts
    11,473
    Blog Entries
    21
    Quoted
    1379 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Hmmmmm


    bht acha likha hay apnay
    ap pardaisi hain or aik aik soch ka izhar apnay kya

    main bhi yahi sochti hoon k agar koi mulk sy baahir jata hay tau aik time period k liye jaye then ghar return kyunk jo maza apno k sath hay wo ghairon k sath nai chahay acchy sy accha khana, kapda, kuch bhi ho.

    or us orat ka beta bhi jald ajaye jiska zikar apnay is likhai main kya k wo apkay pakistan jany sy pehly apsy milna chahti thi

    Thanx for sharing with us ....








  5. #4
    Arsal's Avatar
    Arsal is offline is A r s a L.
    Back
     
    Join Date
    Apr 2011
    Location
    Islamabad
    Posts
    4,309
    Blog Entries
    1
    Quoted
    616 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    seriously bhai bohat acha likha aap ne !!

    dil udas b hua but jo aap ne likha us ka aik perspective parh k khushi b hui waqayii ghar ghar hota hai !

    me b yeh ghalti krny chala tha , ticket booked for UAE but den Ammi k lie ruk gaya ... Allah ka shukar hai Settled hoon, Ghar walo k pass hoon , waqt acha basar horaha Alhamdulilah !

    unfortunately , hum nojwan nasal k lie fashion ban gaya hai yeh Bahir jana ... fulaan gaya hai to me b jaun ga or fir wohi sab hota hai jo aap ne likha hai ... race lag jati hai wahan kamaany ki or yahan lagany plus dikhany ki ... Allah ki pannah !!

    bahrhaal bohat bohat shukriya yeh ehsas dilany ka k ghar ghar hi hota hai or begaana des kabhi ghar nahi ban pata

    Shukriya & dher c duaaain aap k lie. Allah pak asaaniaan kary hum sab k lie .Humesha Khush rahain Ameen

  6. #5
    patriot19472001's Avatar
    patriot19472001 is offline Senior Member
    WELL DONE is better than well
    said!!!
     
    Join Date
    Nov 2009
    Posts
    979
    Blog Entries
    2
    Quoted
    94 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Quote Originally Posted by Baba ki guriya View Post
    SUm Ameen

    bht acha likha ap ne Thanx for sharing !
    آپ کا بیحد شکریہ -

    - - Updated - -

    Quote Originally Posted by Adiva Afafa View Post
    Hmmmmm


    bht acha likha hay apnay
    ap pardaisi hain or aik aik soch ka izhar apnay kya

    main bhi yahi sochti hoon k agar koi mulk sy baahir jata hay tau aik time period k liye jaye then ghar return kyunk jo maza apno k sath hay wo ghairon k sath nai chahay acchy sy accha khana, kapda, kuch bhi ho.

    or us orat ka beta bhi jald ajaye jiska zikar apnay is likhai main kya k wo apkay pakistan jany sy pehly apsy milna chahti thi

    Thanx for sharing with us ....
    آپ کا بیحد شکریہ -

  7. #6
    Daniel-7's Avatar
    Daniel-7 is offline Expert Member
    Edit>
     
    Join Date
    Jun 2010
    Posts
    8,355
    Blog Entries
    7
    Quoted
    665 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Bahot zabardast likhe hain aap. Her emotion ko ekattha ker ke, Ek ek kami jowahan apko feel hota hai, sabkuchh bahot achhitarah aap laye hain is article per. Bahot khoob.


  8. #7
    patriot19472001's Avatar
    patriot19472001 is offline Senior Member
    WELL DONE is better than well
    said!!!
     
    Join Date
    Nov 2009
    Posts
    979
    Blog Entries
    2
    Quoted
    94 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Quote Originally Posted by .t0xic. View Post
    seriously bhai bohat acha likha aap ne !!

    dil udas b hua but jo aap ne likha us ka aik perspective parh k khushi b hui waqayii ghar ghar hota hai !

    me b yeh ghalti krny chala tha , ticket booked for UAE but den Ammi k lie ruk gaya ... Allah ka shukar hai Settled hoon, Ghar walo k pass hoon , waqt acha basar horaha Alhamdulilah !

    unfortunately , hum nojwan nasal k lie fashion ban gaya hai yeh Bahir jana ... fulaan gaya hai to me b jaun ga or fir wohi sab hota hai jo aap ne likha hai ... race lag jati hai wahan kamaany ki or yahan lagany plus dikhany ki ... Allah ki pannah !!

    bahrhaal bohat bohat shukriya yeh ehsas dilany ka k ghar ghar hi hota hai or begaana des kabhi ghar nahi ban pata

    Shukriya & dher c duaaain aap k lie. Allah pak asaaniaan kary hum sab k lie .Humesha Khush rahain Ameen
    ارے اج تے وڈے وڈے لوگ تشریف لے اے نے - یہاں پر ایک معا شرتی پہلو بھی ہے -وہ یہ کہ اکثر ماں باپ اس بچے کو باہر بھیجتے ہیں جس کی عمر جوانی اور ادھیڑ عمری کے درمیان ہوتی ہے اور جس نے ساری زندگی گھر کی روٹیاں توڑنے کے سوا کچھ نہیں کیا ہوتا - غالباً اس کو بھیجنے کے پیچھے گمان یہی ہوتا ہے کہ غیر ممالک میں درختوں پر پیسے لگتے ہیں -

    تواڈی آمد دا بیحد شکریہ -


    - - Updated - -

    Quote Originally Posted by Daniel-7 View Post
    Bahot zabardast likhe hain aap. Her emotion ko ekattha ker ke, Ek ek kami jowahan apko feel hota hai, sabkuchh bahot achhitarah aap laye hain is article per. Bahot khoob.
    تواڈا بہت شکریہ -

  9. #8
    Muhaddisa's Avatar
    Muhaddisa is offline Alhamdulillah!! :x
    Do Aalam sy karti hai Begana
    dil ko...
     
    Join Date
    Aug 2010
    Location
    Na Zamin Hai Meri Qrargah
    Posts
    13,276
    Blog Entries
    5
    Quoted
    1181 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    bilkul apny Watan, apny ghar, apni galiyoN ka koi neam'ul badal nahi hota. Ap ny ek pardesi k dil ki kahi
    yeh bhi durust kaha k yahan waly smjhty hein k shyd bahar gaya frd k pas paise produce krny ki koi machine hai. Allah ta'la pardesion k haal pe rehm farmaein aur un k pasmand'gan pe bhi. Aamiin.
    Aur acha likha. Share krny k lye shukriya.

  10. #9
    Xtylish Sami is offline crazyyy for deano
    Be happy wid d little u
    have,There r sum ppl wid
    nothing who still manage to
    smile
     
    Join Date
    Feb 2013
    Location
    USA
    Posts
    4,899
    Quoted
    1020 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Bhtt ziadaaa achaa likha aapne ..Infct kaiii points to mere zehen me jo baar baar aaty hen wo apki tehreer me parhne ko mile ..like
    1 jb hum dur hoty hen to ghr wale hume ghr k muamlaat me ziada involve nhi krna chahty...n it hurtss ..bhtt taklef hoti he...or asal duri b tab hi mehsus hoty he ..halanke wo sochty hen hum yahan k masail inke sath share krke inhe kyun pareshn kren bt hum chahty hen k kisi tarahh b hume unse jure rehne ka ehsaas hota rhe..

    2. wapas jaane k baad wahan bhttt sare compromises krne honge bt hamare zehen ko is farq ko assaani se qabul krne k lie tayyyr krna he ..n is zindgi ki adat nhi dalni

    3. rukhi sukhi wid family is way far bttr den having dherr ne'mten Akele khana

    BTW nice sharingg ....n I'll badly miss my family on eid

  11. #10
    Attractive-Ey3s's Avatar
    Attractive-Ey3s is offline khatri sahrish
    khatri sahrish
     
    Join Date
    Dec 2011
    Location
    Hyderabad
    Posts
    17,595
    Quoted
    1257 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Aameen
    aapny bht acha likha hay..
    wese meri b yahi rai hay k insaan ko apna watan aur apni family ko nahi bhulna chahye pardes mai ja k...
    kuch loug batak jaty hain un ki kai wajuhat hoti hain jin ko aapny apny thread mai bataya b hay...
    aur bilkul sahi b kaha k comunication honi chahye...
    thnx for the shring
    ...........................



    " In million of books, there is only word...
    If your vision is clear, just Bismillah is enough for you"







  12. #11
    patriot19472001's Avatar
    patriot19472001 is offline Senior Member
    WELL DONE is better than well
    said!!!
     
    Join Date
    Nov 2009
    Posts
    979
    Blog Entries
    2
    Quoted
    94 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Quote Originally Posted by Muhaddisa View Post
    bilkul apny Watan, apny ghar, apni galiyoN ka koi neam'ul badal nahi hota. Ap ny ek pardesi k dil ki kahi
    yeh bhi durust kaha k yahan waly smjhty hein k shyd bahar gaya frd k pas paise produce krny ki koi machine hai. Allah ta'la pardesion k haal pe rehm farmaein aur un k pasmand'gan pe bhi. Aamiin.
    Aur acha likha. Share krny k lye shukriya.
    آپ کا بیحد شکریہ -

    - - Updated - -

    Quote Originally Posted by Xtylish Sami View Post
    Bhtt ziadaaa achaa likha aapne ..Infct kaiii points to mere zehen me jo baar baar aaty hen wo apki tehreer me parhne ko mile ..like
    1 jb hum dur hoty hen to ghr wale hume ghr k muamlaat me ziada involve nhi krna chahty...n it hurtss ..bhtt taklef hoti he...or asal duri b tab hi mehsus hoty he ..halanke wo sochty hen hum yahan k masail inke sath share krke inhe kyun pareshn kren bt hum chahty hen k kisi tarahh b hume unse jure rehne ka ehsaas hota rhe..

    2. wapas jaane k baad wahan bhttt sare compromises krne honge bt hamare zehen ko is farq ko assaani se qabul krne k lie tayyyr krna he ..n is zindgi ki adat nhi dalni

    3. rukhi sukhi wid family is way far bttr den having dherr ne'mten Akele khana

    BTW nice sharingg ....n I'll badly miss my family on eid
    آپ کا بیحد شکریہ -

    - - Updated - -

    Quote Originally Posted by Attractive-Ey3s View Post
    Aameen
    aapny bht acha likha hay..
    wese meri b yahi rai hay k insaan ko apna watan aur apni family ko nahi bhulna chahye pardes mai ja k...
    kuch loug batak jaty hain un ki kai wajuhat hoti hain jin ko aapny apny thread mai bataya b hay...
    aur bilkul sahi b kaha k comunication honi chahye...
    thnx for the shring
    ...........................
    آپ کا بیحد شکریہ -

  13. #12
    CaLmInG MeLoDy is offline Banned
    Roshni Main Andhairoun Ke
    Baad...!!!
     
    Join Date
    Jan 2011
    Location
    Islamabad
    Posts
    6,808
    Blog Entries
    25
    Quoted
    842 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    بیحد اچھے عنوان پر بے حد اچھی تحریر ، با مقصد اور سبق سے بھر پور . کاش آپ کی طرح تمام پردیسی سوچنے لگیں تو ، پردیسیوں اور دسیوں کے بیچ ، سوچ اور معیار کی جو بڑی دیوار حائل ہے وہ ختم ہو جائے. انسان پردیس کیا گیا گویا سٹریٹ فارورڈ کے نام پر تمام اخلاقیات ہی پردیس میں کہیں دفن کر آیا، وہاں کی عیش و عشرت کیا دیکھی ، کہ اپنے ہی والدین اور خونی رشتہ رکھنے والے بقیہ تمام رشتے داروں کا سٹیٹس کمتر نظر آنے لگا ، آرام کی ایسی طبیعت پا لی پردیس جا کے گویا ساری زندگی اس آرام پر نچھاور کر دی . کچھ جملے تو آپ کے اتنے عمدہ لگے کے دل کو چو گئے .

    ایک طرف محبتیں ہوتی ہیں اور دوسری طرف ان محبتوں سے جڑی مصلحتیں - آج چھٹی کے دن کی یہ سوچ اسی سلسلے کی ہے -



    پردیس آ کر انسان دو حصّوں میں بٹ جاتا ہے - ایک حصہ سوچوں کا ہے جو ہمیشہ اپنے خاندان اور ملک کے گرد گھومتی ہیں اور ایک حصہ جسم کا ہے جو پردیس میں ہوتا ہے -
    - سب سے پہلی بات کہ پردیس میں جہاں بھی ہوں ہمارا فیملی کے ساتھ کمیونیکشن کا ترازو نہی جھولنا چاہے اس کی قیمت کچھ ہی ادا کرنی پڑے کیوں اگر یہ ترازو دونوں میں سے ایک طرف بھی جھک گیا تو المیے رو نما ہوتے ہیں -

    یہاں اس سارے مضمون کا مقصد صرف ایک ہے کہ اگر انسان پردیس جائے تو اس کے زیر نظر صرف مقاصد ہونے چاہیں جن کی تکمیل کے بعد گھر کی راہ لینی چاہیے - ماں باپ اور بہن بھائیوں کی قربت کا کوئی نعمل بدل نہی ہوتا - جن گلی کوچوں میں وقت گزرا ہو ان کا بھی کوئی نعمل بدل نہیں ہوتا - دولت کبھی انسانوں کی جگہ نہیں لے سکتی - اکیلےاچھا کھانا کھانا کبھی اس مسرت کے پاسنگ نہی ہو سکتا جو مسرت خاندان کے لوگوں کے ساتھ بیٹھ کر کھانے میں ہے اور اچھا تکیہ کبھی اس سکون کا با عث نہیں ہو سکتا جو سکون ماں کی گود میں سر رکھ کے ملتا ہے


    بہت خوبصورت باتیں ، اللہ پاک آپ کو اس کا اجر ضرور دیں آمین. اور آپ کی اس سوچ کو قائم و دائم رکھے آمین.
    ہم میں سے بہت سوں کے اپنے پردیس جا کے پردیسی ہو گئے ہیں.....................................


  14. #13
    singer_zuhaib's Avatar
    singer_zuhaib is offline Musafir e Ishq e Haqeeqi
    Talash e Khudi
     
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    Jeddah to Lhr
    Posts
    1,277
    Blog Entries
    14
    Quoted
    480 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Assalam o Alaikum...patriot bhai mai jab ksa nahe gaya tha to tab bari chahat thi k jaon,ksa kesa ho ga kese loog kesa rehn sehn,or jab chala gaya tab mera mulk mera pak vohe saudia he tha or phir kabi socha bhi nahe tha k pak ana pare ga,so jo kamaya wahin kharch kia,pak mai koch saving nahe ki,or phir pak ko dekhne,apne gali mohalo or rishte daaro ki muhabat ne esi khich maari k mai daily apne mohalle poncha hota tha,kabi kisi aunty to kabi kisi aunty k ghar betha gup shup laga raha hota tha,par subha ankh khulne pe pata chalta o yaar mai to jeddah he hon,so pak bhi aa gaya ,2month k andar he mai okta gaya tha es sare ahool se,alergy hone lagi thi muje k mai jannat se nikal k dozakh mai aa gaya hon,agar jeddah ko pak se compare kia jaey to jeddah waqiye mai jannat hai,or ab mai vohe hon k har waqt jeddah ponccha howa hota hon unhe galio mai jahaan mera ghar tha,jahaan mai job karta tha,jahaan mai markets ghoomne phirne jata tha or jab ankh khulti hai to ai phir wahin pak mai dhake khane k liye phir se himat karta hon k jab vo din nahe rahe to ye din bhi nahe rahe ge,INSHAALLAH.

    - - Updated - -

    agar ap ki family dubai ya ksa shift ho to i must say that k ap es donia mai he jannat mai hain..yahaan boht problems hain,yahaan survive karna is toomuch diffcult.

    Maktab E Ishq ka Dastoor Nirala Dekha
    Os Ko Chutti Na Mili Jis Ne ''Sabaq Yaad'' Kiya

    Talaash E khudi

  15. #14
    Saboo!'s Avatar
    Saboo! is offline Expert Member
    Friends! I have no friends!!
     
    Join Date
    Dec 2012
    Location
    Canada
    Posts
    3,422
    Quoted
    787 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Bhut hi achhi aur naseehat amoze!!
    Thanks for sharing!!

  16. #15
    patriot19472001's Avatar
    patriot19472001 is offline Senior Member
    WELL DONE is better than well
    said!!!
     
    Join Date
    Nov 2009
    Posts
    979
    Blog Entries
    2
    Quoted
    94 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Quote Originally Posted by CaLmInG MeLoDy View Post
    بیحد اچھے عنوان پر بے حد اچھی تحریر ، با مقصد اور سبق سے بھر پور . کاش آپ کی طرح تمام پردیسی سوچنے لگیں تو ، پردیسیوں اور دسیوں کے بیچ ، سوچ اور معیار کی جو بڑی دیوار حائل ہے وہ ختم ہو جائے. انسان پردیس کیا گیا گویا سٹریٹ فارورڈ کے نام پر تمام اخلاقیات ہی پردیس میں کہیں دفن کر آیا، وہاں کی عیش و عشرت کیا دیکھی ، کہ اپنے ہی والدین اور خونی رشتہ رکھنے والے بقیہ تمام رشتے داروں کا سٹیٹس کمتر نظر آنے لگا ، آرام کی ایسی طبیعت پا لی پردیس جا کے گویا ساری زندگی اس آرام پر نچھاور کر دی . کچھ جملے تو آپ کے اتنے عمدہ لگے کے دل کو چو گئے .

    ایک طرف محبتیں ہوتی ہیں اور دوسری طرف ان محبتوں سے جڑی مصلحتیں - آج چھٹی کے دن کی یہ سوچ اسی سلسلے کی ہے -



    پردیس آ کر انسان دو حصّوں میں بٹ جاتا ہے - ایک حصہ سوچوں کا ہے جو ہمیشہ اپنے خاندان اور ملک کے گرد گھومتی ہیں اور ایک حصہ جسم کا ہے جو پردیس میں ہوتا ہے -
    - سب سے پہلی بات کہ پردیس میں جہاں بھی ہوں ہمارا فیملی کے ساتھ کمیونیکشن کا ترازو نہی جھولنا چاہے اس کی قیمت کچھ ہی ادا کرنی پڑے کیوں اگر یہ ترازو دونوں میں سے ایک طرف بھی جھک گیا تو المیے رو نما ہوتے ہیں -

    یہاں اس سارے مضمون کا مقصد صرف ایک ہے کہ اگر انسان پردیس جائے تو اس کے زیر نظر صرف مقاصد ہونے چاہیں جن کی تکمیل کے بعد گھر کی راہ لینی چاہیے - ماں باپ اور بہن بھائیوں کی قربت کا کوئی نعمل بدل نہی ہوتا - جن گلی کوچوں میں وقت گزرا ہو ان کا بھی کوئی نعمل بدل نہیں ہوتا - دولت کبھی انسانوں کی جگہ نہیں لے سکتی - اکیلےاچھا کھانا کھانا کبھی اس مسرت کے پاسنگ نہی ہو سکتا جو مسرت خاندان کے لوگوں کے ساتھ بیٹھ کر کھانے میں ہے اور اچھا تکیہ کبھی اس سکون کا با عث نہیں ہو سکتا جو سکون ماں کی گود میں سر رکھ کے ملتا ہے


    بہت خوبصورت باتیں ، اللہ پاک آپ کو اس کا اجر ضرور دیں آمین. اور آپ کی اس سوچ کو قائم و دائم رکھے آمین.
    ہم میں سے بہت سوں کے اپنے پردیس جا کے پردیسی ہو گئے ہیں.....................................

    ارے واہ ! اج تے بہت عمدہ عمدہ لوگ تشریف لے آیے نیں - آپ کی حوصلہ افزائی کا تہ دل سے شکریہ - آج چھٹی کے دن ذرا دل گھبرا سا رہا تھا تو یہ لکھ دیا -
    الله تعالیٰ آپ کی دعاؤں کو میرے حق میں قبول فرمائیں اور آپ کو ہمیشہ خوش رکھیں - آمین


    - - Updated - -

    Quote Originally Posted by singer_zuhaib View Post
    Assalam o Alaikum...patriot bhai mai jab ksa nahe gaya tha to tab bari chahat thi k jaon,ksa kesa ho ga kese loog kesa rehn sehn,or jab chala gaya tab mera mulk mera pak vohe saudia he tha or phir kabi socha bhi nahe tha k pak ana pare ga,so jo kamaya wahin kharch kia,pak mai koch saving nahe ki,or phir pak ko dekhne,apne gali mohalo or rishte daaro ki muhabat ne esi khich maari k mai daily apne mohalle poncha hota tha,kabi kisi aunty to kabi kisi aunty k ghar betha gup shup laga raha hota tha,par subha ankh khulne pe pata chalta o yaar mai to jeddah he hon,so pak bhi aa gaya ,2month k andar he mai okta gaya tha es sare ahool se,alergy hone lagi thi muje k mai jannat se nikal k dozakh mai aa gaya hon,agar jeddah ko pak se compare kia jaey to jeddah waqiye mai jannat hai,or ab mai vohe hon k har waqt jeddah ponccha howa hota hon unhe galio mai jahaan mera ghar tha,jahaan mai job karta tha,jahaan mai markets ghoomne phirne jata tha or jab ankh khulti hai to ai phir wahin pak mai dhake khane k liye phir se himat karta hon k jab vo din nahe rahe to ye din bhi nahe rahe ge,INSHAALLAH.

    - - Updated - -

    agar ap ki family dubai ya ksa shift ho to i must say that k ap es donia mai he jannat mai hain..yahaan boht problems hain,yahaan survive karna is toomuch diffcult.

    زوہیب - حقیقت میں آپکی خطوط والی پوسٹ کا جواب لکھ رہا تھا میں - لیکن یہ طویل اتنا ہو گیا کہ مجھے علیحدہ سے پوسٹ کرنا پڑا - آپ نے یہاں سیٹل ہونے کی بات کی تو ایسا کرنا ہرگز مشکل نہیں ہے لیکن فیملی میں صرف بیوی بچے نہیں ہوتے ، ماں باپ اور بہن بھائی بھی اتنی ہی اہمیت رکھتے ہیں - سہولیات کے لحاظ سے شاید یہ ہمارے ملک سے کئی گنا بہتر ہی ہو لیکن جنت کی تعریف ہر کسی کی اپنی ہے -

    یاد رکھیے ! اپنے ملک کے علاوہ انسان جہاں بھی جائے چاہے اس کے پاس شہریت ہو یا نہ ہو وہ دوسرے درجے کا شہری ہی ہے -ویسے ہی جیسے کسی ملک میں اقلیت ہوتی ہے -

    آپ کی تشریف آوری کا بیحد شکریہ -

  17. #16
    singer_zuhaib's Avatar
    singer_zuhaib is offline Musafir e Ishq e Haqeeqi
    Talash e Khudi
     
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    Jeddah to Lhr
    Posts
    1,277
    Blog Entries
    14
    Quoted
    480 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Quote Originally Posted by patriot19472001 View Post
    ارے واہ ! اج تے بہت عمدہ عمدہ لوگ تشریف لے آیے نیں - آپ کی حوصلہ افزائی کا تہ دل سے شکریہ - آج چھٹی کے دن ذرا دل گھبرا سا رہا تھا تو یہ لکھ دیا - الله تعالیٰ آپ کی دعاؤں کو میرے حق میں قبول فرمائیں اور آپ کو ہمیشہ خوش رکھیں - آمین - - Updated - -زوہیب - حقیقت میں آپکی خطوط والی پوسٹ کا جواب لکھ رہا تھا میں - لیکن یہ طویل اتنا ہو گیا کہ مجھے علیحدہ سے پوسٹ کرنا پڑا - آپ نے یہاں سیٹل ہونے کی بات کی تو ایسا کرنا ہرگز مشکل نہیں ہے لیکن فیملی میں صرف بیوی بچے نہیں ہوتے ، ماں باپ اور بہن بھائی بھی اتنی ہی اہمیت رکھتے ہیں - سہولیات کے لحاظ سے شاید یہ ہمارے ملک سے کئی گنا بہتر ہی ہو لیکن جنت کی تعریف ہر کسی کی اپنی ہے -یاد رکھیے ! اپنے ملک کے علاوہ انسان جہاں بھی جائے چاہے اس کے پاس شہریت ہو یا نہ ہو وہ دوسرے درجے کا شہری ہی ہے -ویسے ہی جیسے کسی ملک میں اقلیت ہوتی ہے -آپ کی تشریف آوری کا بیحد شکریہ -
    patriot bhai mai to with family he gaya tha or bas na samjhi or jazbaatyaat mai pak ane ka boht bara galat fesla kia jo aaj bhugat raha hon,patriot bhai ye baat mai janta hon k Apni Sar zameen,Matti,Mulk se piyar karna deen mai Imaan ka hissa kehlati hai par mai yahaan ye zaror kehna chahon ga k Jab Imaan wali Azeem Tareen Hasti k Mulk mai ap reh rahe ho to phir kia ap ka mulk or kia ap ki sar zameen,phir vohe ap ka ghar or vohe ap ki sar zameen or vohe ap ka mulk hai.jahaan RABB ka Ghar or RABB k Habeeb Ka bhi ghar mojood ho es se bari REHMAT insaan pe or kia ho gi k in hastio k Ass pass rahe,be shak pak mera mulk hai mai pakistani ho par Mera islami or Deeni ghar Saudia he hai or Mai Chahta ho k RABB muje phir Apne Or Apne Habeeb k ghar bolaey,Ameen.

    - - Updated - -

    mai samajh gaya tha k ye pardes k dukh likhne ki nobat kio ai,agar shaid aaj mai jeddah hota to mai hi ap ki tarhaan pak k liye tarap raha hota,par mai yahaan aa k tarap raha hon,kher lev it.

  18. #17
    Arosa Hya's Avatar
    Arosa Hya is offline Genius Member
    I don't need your attitude...
    I have my own ok e
     
    Join Date
    Feb 2012
    Location
    limits
    Posts
    2,054
    Blog Entries
    1
    Quoted
    221 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Aameen........ nice sharing ye message sb ko zror milna chahiye q hmari society ka boht eham pehlo hai ! is se waqayi family se boht gap aa jata hai agar proper cummunications na hon or bahar jane wale members ko family k tmam mamlat se alag kr dia jata hai or sirf source of income smja jata hai or bahar jane waly family members b khud ko zyada tanha feel krte hain jo unhain naye environment main daal deta hai or phir wo osy e foqiyat dety hain agar acha family communication ho to aisa hergiz nhi ho ga.

  19. #18
    patriot19472001's Avatar
    patriot19472001 is offline Senior Member
    WELL DONE is better than well
    said!!!
     
    Join Date
    Nov 2009
    Posts
    979
    Blog Entries
    2
    Quoted
    94 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Quote Originally Posted by Arosa Hya View Post
    Aameen........ nice sharing ye message sb ko zror milna chahiye q hmari society ka boht eham pehlo hai ! is se waqayi family se boht gap aa jata hai agar proper cummunications na hon or bahar jane wale members ko family k tmam mamlat se alag kr dia jata hai or sirf source of income smja jata hai or bahar jane waly family members b khud ko zyada tanha feel krte hain jo unhain naye environment main daal deta hai or phir wo osy e foqiyat dety hain agar acha family communication ho to aisa hergiz nhi ho ga.
    آپ کا بیحد شکریہ -

  20. #19
    BDunc's Avatar
    BDunc is offline Expert Member
    "Allah's way is the
    best"
     
    Join Date
    Mar 2012
    Posts
    18,540
    Blog Entries
    7
    Quoted
    707 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ

    Ameen...umda.................


  21. #20
    intelligent086 is offline Star Member
    Habib
     
    Join Date
    Mar 2009
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    1,693
    Blog Entries
    71
    Quoted
    28 Post(s)

    Re: پردیس دے دکھ


    یہاں اس سارے مضمون کا مقصد صرف ایک ہے کہ اگر انسان پردیس جائے تو اس کے زیر نظر صرف مقاصد ہونے چاہیں جن کی تکمیل کے بعد گھر کی راہ لینی چاہیے - ماں باپ اور بہن بھائیوں کی قربت کا کوئی نعمل بدل نہی ہوتا - جن گلی کوچوں میں وقت گزرا ہو ان کا بھی کوئی نعمل بدل نہیں ہوتا - دولت کبھی انسانوں کی جگہ نہیں لے سکتی - اکیلےاچھا کھانا کھانا کبھی اس مسرت کے پاسنگ نہی ہو سکتا جو مسرت خاندان کے لوگوں کے ساتھ بیٹھ کر کھانے میں ہے اور اچھا تکیہ کبھی اس سکون کا با عث نہیں ہو سکتا جو سکون ماں کی گود میں سر رکھ کے ملتا ہے
    بہت خوب

Page 1 of 2 12 Last

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •  

Log in