All Pakistani Dramas Lists
Latest Episodes of Dramas - Latest Politics Shows - Latest Politics Discussions

Page 5 of 8 First ... 34567 ... Last

Thread: ايک اور امريکی تحفہ

      
   
  1. #1
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    ايک اور امريکی تحفہ


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    امریکہ کی جانب سے بجلی گھروں پر کام کرنیوالے انجینئرزکو
    توانائی کے شعبے کی کارکردگی بہتر بنانے کی تربیت

    اسلام آباد (۱۱ اپریل ۲۰۱۴ء)___ امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) کی مالی اعانت سے ملک بھر میں بجلی پیدا کرنے والی کمپنیوں کے بیس پاکستانی انجینئرز کو۱۰ اپریل کو منعقدہ ایک تقریب میں تھرمل پروگرام کی تربیت مکمل کرنے پرسرٹیفیکیٹ دیئے گئے۔ یہ کورس ان انجینئرز کو ان کی تکنیکی صلاحیتوں کو بڑھانے اور اس صنعت میں اپنی کارکردگی کو بہتر بنانے اور بجلی گھروں کی دیکھ بھال اور ان کے انتظام وانصرام کی بہترین مشق حاصل کرنے میں مدد دینے کیلئے وضع کیا گیا تھا ۔

    یو ایس ایڈکے انرجی پالیسی پروگرام کے زیراہتمام یہ پروگرام بجلی کے شعبے میں استعدادکار بڑھانے کے وسیع تر منصوبے کا ایک اہم جزو ہے۔ یہ پروگرام حکومت امریکہ کی جانب سے پاکستانی حکومت کی ان کوششوں میں اعانت فراہم کرنے کے عزم کا حصہ ہے جو وہ ملک میں بجلی کی پیداوار میں اضافہ کرنے اورتوانائی کے باکفایت استعمال ، بجلی کی ترسیل، ایندھن کی سپلائی کے بنیادی ڈھانچے اور پالیسی میں اصلاحات کو بہتربنانے کیلئے کررہی ہے۔

    یوایس ایڈ کےدفتر برائے توانائی کے قائم مقام ڈائریکٹر ٹم مورنے، جنہوں نے سرٹیفیکیٹ تقسیم کرنے کی تقریب کی صدارت کی، کہا کہ امریکی حکومت پاکستان میں توانائی کے بنیادی ڈھانچے کو ترقی دینے اور اسے اپ گریڈ کرنے کیلئے حکومت پاکستان کے ساتھ کام کرنے کے حوالے سے پرعزم ہے۔

    امریکی حکومت کی جانب سے پاکستان میں توانائی کے شعبے کیلئے دی جانے والی اعانت کا مقصدملک بھر میں بجلی کی پیداوار بڑھانا ہے جس کے تحت ۲۰۱۴ ءکے آخر تک متوقع طور پر پاکستان کے قومی گرڈ میں ۱۴۰۰ میگاواٹ کا اضافہ کرنا ہے جس سے لگ بھگ ایک کروڑ ساٹھ لاکھ افراد مستفید ہونگے۔اس پروگرام کے ذریعے امریکہ نے تربیلا، جامشورو، گدو اورمظفر گڑھ میں بجلی گھروں کی مرمت اور گومل زام اور ست پارا ڈیموں کی تعمیر مکمل کرنے کیلئے مالی اعانت فراہم کی ہے اور پاکستان بھر میں بجلی کی تقسیم کو بہتر بنانے میں مدد دی ہے۔ان کوششوں کے ذریعے پہلے ہی پاکستان میں بجلی کے شعبے میں ایک ہزار میگاواٹ کا اضافہ کیا جا چکا ہے۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  2. The Following 2 Users Say Thank You to fawad For This Useful Post:

    k-a-q (05-03-2014), m_sherwani (04-23-2014)

  3. #81
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ




    امریکی محکمہ زراعت کی جانب سےپاکستانی کسانوں کی اعانت


    امریکی ادارہ برائے زراعت(یو ایس ڈی اے) اور خشک زمینوں پر زرعی تحقیق کے بین الاقوامی ادارے(آئی سی اے آر ڈی اے) نے مل کر پاکستان میں کاشتکاروں کو کیلے کی فصل کے فاضل مادوں کو مناسب طریقے سے کھاد میں تبدیل کرنے کے لیے تربیتی پروگرام وضع کیا ۔

    سندھ کے محکمہ زراعت ایکسٹنشن کے ڈاکٹر شوکت ابڑو نے اس موقع پر کہا کہ جس چیز کو کسان کوڑاکرکٹ سمجھ کر جلا رہے ہیں وہ در حقیقت ایک قابل قدر شے ہے۔

    سندھ کے کاشتکار پاکستان میں کیلے کی فصل کا نوے فیصد کاشت کرتے ہیں اور روایتی طور پر فصل کی باقیات کو کوڑاکرکٹ کے طور پر جلاتے ہیں ۔ امریکی محکمہ زراعت نے زمین کی زرخیزی اور صحت میں اضافے کے لیے ایگریکلچرل ایکسٹینشن پراجیکٹ کا آغاز کیا تا کہ کاشتکاروں کو زرعی فاضل مادوں کے استعمال سے فصلوں کی پیداوار بڑھانے کے طریقوں پر تربیت دی جا سکے۔ اس سلسلے میں امریکی محکمہ زراعت کی ایک ٹیم نے ٹنڈو الہ یار کے ایک کیلے کے فارم کا دورہ کیا تا کہ اس پروگرام پر پیشرفت کا جائزہ لیا جا سکے۔

    خشک زمینوں پر زرعی تحقیق کا بین الاقوامی ادارہ ان دس پاکستانی اداروں کی رہنمائی کر رہا ہے جو کسانوں کو کیلے کے درخت کے پتوں اور تنوں کے ضائع ہو جانیوالے حصوں کو کھاد میں تبدیل کرنے کے اس منصوبے کا حصہ ہیں ۔ اس طریقے سے تیار شدہ ہ کھاد زمین کی زرخیزی بڑھانے میں معاون ثابت ہوتی ہے۔ اس وقت پاکستان میں تینتالیس ایسے مقامات ہیں جہاں کسان نامیاتی مواد جیسا کہ کیلے کے پتوں اور شاخوں سے کھاد بنانے کا عمل سیکھ سکتے ہیں۔ اس پراجیکٹ کے تحت مزید ایسے مقامات کی نشاندہی کی جائے گی جہاں نامیاتی مواد کو کھاد میں تبدیل کیا جا سکے۔

    امریکی ادارہ برائے زراعت نےیوایس ایڈ کی مالی اعانت کے ذریعے ملک بھر کے کسانوں کو تکنیکی مہارت اور رہنمائی فراہم کی ہے۔ انہوں نے اس امر پر خصوصی توجہ مرکوز کی ہے کہ زرخیزی سے محروم ہونے والی زمین کو کھاد کی فراہمی سے نمی اور نامیاتی مواد کی بحالی کو یقینی بنایا جا سکے۔

    زراعت پاکستانی معیشت کا دوسرا بڑا شعبہ ہے جو خام ملکی پیداوار کا اکیس فیصد سے زائد فراہم کرتاہے۔ دیہات میں بسنے والے باسٹھ فیصد پاکستانیوں کے لیے زراعت روزمرہ زندگی کا جزو لاینفک ہے ۔ امریکی ادارہ برائے زراعت پاکستانی سائنسدانوں اور کاشتکاروں کی اعانت میں پیش پیش ہے تاکہ پاکستان میں زرعی پیداوار کو بڑھا کر معاشی اہداف کے حصول اور غذائی تحفظ کی ضرورت کو پورا کیا جا سکے۔

    امریکی محکمہ زراعت کے مزید پروگرامز کے متعلق جاننے کے لیے براہ مہربانی درج ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کریں۔

    http://www.fas.usda.gov/regions/south-and-central-asia/pakistan


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  4. #82
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ





    صحت مند بچے، صحت مند اور خوشحال مستقبل

    یو ایس ایڈ نے پاکستان ميں دوران پيدائش دم گھٹنے کے واقعات سے بچاؤ کے ليے 418 ہیلتھ ورکرز کو آلات اور تربیت فراہم کی ہے تاکہ وہ "نومولود بچوں کو سانس" لینے میں مدد دے سکیں۔

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  5. #83
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    http://www.usaid.gov/pakistan/interactive-map

    کيا اّپ جانتے ہیں کہ یو ایس ایڈ پاکستان کی ویب سائٹ پر ایک "انٹرایکٹو" نقشہ ہے؟

    اس نقشے کے ذریعے انٹرایکٹو انٹرفیس استعمال کرتے ہوئے آپ یو ایس ایڈ پاکستان کے پروگراموں اور منصوبوں کے بارے میں معلومات حاصل کر سکتے ہیں۔ مطلوبہ معلومات تک پہنچنے کے لئے لنک ميں درج ہدایات پر عمل کریں۔ اگر آپ کے پاس کوئ سوال ہے يا راۓ دينا چاہتے ہیں تو پھر اس پتے پر ای میل کيجيۓ۔

    infopakistan@usaid.gov

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu


  6. #84
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ





    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    زرعی فروخت میں اضافہ اور فنی صلاحیتوں میں بہتری کے لئے امریکی منصوبہ

    اسلام آباد (۶ اگست، ۲۰۱۵ء)__ امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) کے پاکستان میں نئے سربراہ جون گرورکی نے آج زرعی منڈی کی ترقی کے لئے پاک امریکہ مشترکہ منصوبے (اےایم ڈی ) کا افتتاح کیا۔ امریکی حکومت کی مالی اعانت سے شروع کئے گئے اس پروگرام کےتحت ۲۱ ملین ڈالر مالیت پر مشتمل گرانٹس، تربیتی نشستوں اور تکنیکی مہارتوں میں بہتری کے ذریعہ کھیتی باڑی اور جانوروں کے افزائش کے طریقوں میں بہتری لا کرپاکستانی گوشت، سبزیوں، آم اور رس دار پھلوں کی مقامی اور بین الاقوامی منڈیوں تک رسائی بڑھا کر اگلے چار سال کے دوران آمدن کو ۱۴۰ ملین ڈالر مالیت تک فروغ دیا جائےگا۔

    یو ایس ایڈ کے ڈائریکٹر گرورکی نے اس موقع پر اپنے خطاب میں کہا کہ امریکہ پاکستانی زرعی شعبہ کو اہم ترین ترجیح کا حامل سمجھتے ہوئے پاکستان کے لوگوں کے لئے معاشی ترقی اورروزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لئےانتہائی پُر عزم ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ حکومت پاکستان کے اشتراک سے امریکی سرمایہ کاری سے پاکستانی کسانوں اور بین الاقوامی منڈیوں کے مابین روابط کو بڑھایا جائے گا تاکہ ایک خوشحال، مستحکم اور خوراک کے حوالے سے محفوظ ملک بنایا جاسکےگا۔

    اے ایم ڈی پروگرام کو وضع کرنے کا مقصد کسانوں کے لئے دستیاب جدید ترین ، کار آمد اور ماحول دوست مہارتوں کی فراہمی ہے۔ اس پروگرام کے تحت کاروباری مراکز بھی قائم کئے جائیں گے تاکہ کسان، خریدار، اور فروخت کنندہ کے درمیان فاصلوں کو کم کیا جا ئے تاکہ پاکستانی اجناس دنیا بھر کے باورچی خانوں تک رسائی حاسل کر سکیں۔ ایک ایسے ملک میں جہاں ۴۰ فیصد پاکستانی زرعی شعبہ سے منسلک ہیں اور جہاں ملک کی ۲۱ فیصد خام ملکی پیداوار زراعت کے شعبہ سے حاصل کی جا رہی ہو، اس اقدام کے ذریعہ فروخت اور سرمایہ کاری کو ۱۴۰ ملین ڈالر سے زیادہ تک بڑھائے جانے کی امکانات موجود ہیں۔

    یو ایس ایڈ کے معاشی ترقیاتی پروگرام کے تحت ۲۰۱۲ء سے اب تک۲۳۰۰۰ روزگارکے مواقع پیدا کئے گئے ہیں اور ایک لاکھ اٹھارہ ہزار کسانوں کے لئے تقریبا ساٹھ ہزار ہیکٹرز رقبہ پر جدید ترین تکنیک اور انتظامی طور طریقہ متعارف کروائے گئے ہیں۔ یو ایس ایڈ کے معاشی اور زرعی پروگراموں کے بارے میں مزید جاننے کے لئےیہ ویب سائٹ دیکھئے:

    Pakistan | Economic Growth & Agriculture | U.S. Agency for International Development

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu


  7. #85
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ




    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی کی مدد سے پاکستان میں بجلی کی ترسیل اور پاور کمپنیوں کی آمدنی میں اضافہ اسلام آباد (۲۷اگست ، ۲۰۱۵ء) __ پاکستان میں امریکی سفارتخانے کے اقتصادی و ترقیاتی معاونت کے کوارڈینیٹر لیون وسکن اور چئیر مین نیپرا بریگیڈ یر ریٹائرڈ طارق صدوزئی نے امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی کے پاور دسٹریبوشن پروگرام کی کامیاب تکمیل کے حوالے سے مقامی ہوٹل میں منعقدہ ایک تقریب میں شرکت کی۔ دو سو اٹھارہ ملین امریکی ڈالر مالیت کا یہ پانچ سالہ پروگرام امریکی حکومت کی جانب سے پاکستان میں توانائی کے شعبے میں بہتری کے منصوبے کا حصہ ہے۔

    اس پروگرام کے ذریعے سمارٹ میٹرز اور چوری روکنے والے تاروں جیسی جدید اصلاحات کو پاکستان میں متعارف کروایا گیا جس سے بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے نقصان میں کمی اور منافع میں اضافہ ممکن ہو سکے گا۔ اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے لیون وسکن کا کہنا تھا کہ امریکی حکومت توانائی کی بلا تعطل اور مسلسل فراہمی اور ایک روشن و ترقی یافتہ پاکستان کے لیے حکومت پاکستان کے ساتھ مل کر کام کرتی رہے گی۔ پاور دسٹریبوشن پروگرام نے پاکستان کے بجلی کی تقسیم کے نظام میں متعد د جدید ٹیکنالوجیز متعارف کروائی ہیں جس کے نتیجے میں بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی سالانہ آمدنی میں چار سو ملین ڈالر کا اضافہ ہوا اور دو سو میگا واٹ بجلی کی بچت ممکن ہوئی جس سے تیس لاکھ افراد کو بجلی کی فراہمی ممکن بنائی جاسکتی ہے۔

    ۲۰۱۰ء سے ۲۰۱۵ء کےعرصے میں اس پروگرام کے ذریعے بتیس ہزار سے زیادہ توانائی کے ماہرین کو تربیت فراہم کی گئی ، بجلی کے بہاؤ کی رفتار کی پیمائش کے جدید میٹرز کی تنصیب کی گئی اورصارفین کے لیے بلنگ سسٹم میں بہتری لائی گئی ۔ اسی پروگرام کے تحت زرعی پمپس پر بجلی کے ضیاع کو روکنے کے لیے نوے ہزار کپیسٹرز بھی لگائے گئے ، دولاکھ ساٹھ ہزار میٹر طویل تقسیم کار تاروں کو تبدیل کیا گیا اور تقسیم کے نظام میں بہتری کے لیے کئی اور آلات بھی فراہم کیے گئے ۔ توانائی کے شعبے میں امریکہ کی
    جانب سے پاکستان کو دی جانیوالی اعانت کے بارے میں مزید جاننے کے لیے وزٹ کریں


    (
    http://www.usaid.gov/pakistan/energy).


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu


    http://www.facebook.com/USDOTUrdu


  8. #86
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    امریکہ کی جانب سے فاٹا کے متاثرین کی واپسی کیلئے ۳۰ ملین ڈالر اعانت کا اعلان

    پشاور (۴ نومبر ، ۲۰۱۵ء) ___ حکومت ِ ریاستہائے امریکہ نے وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقہ جات کے بے گھر ہونے والے افراد کی اپنے علاقوں میں واپسی کیلئے ۳۰ ملین ڈالر کی اعانت کا اعلان کیا ہے۔

    امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی( یو ایس ایڈ) کی جانب سے فراہم کردہ رقم اسکولوں کی تعمیر نو، روزگار کے لئے تربیت، کاشتکاری کے طریقوں میں بہتری اور طلبہ کیلئے خوراک کے وظائف کی فراہمی کیلئے استعمال ہو گی۔ اقوام متحدہ کے تین اداروں کے ذریعے اس منصوبے پر عمل در آمد کیا جائے گا۔

    یو ایس ایڈ کے مشن ڈائریکٹرجان گرورکی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فاٹا کے عوام بڑے جفاکش ہیں اورہم اُن کے عزم و ارادے اور ہماری اعانت سے فاٹا میں تیزی سے پھلتے پھولتے پرامن مستقبل دیکھنے کے خواہشمند ہیں۔ تقریب میں حکومت ِ پاکستان اور اقوام متحدہ کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔

    یوا یس ایڈ کی اعانت فاٹا سیکرٹریٹ کی واپسی اور بحالی حکمت عملی سے مربوط ہے، جس کا مقصد بے گھر ہونے والے متاثرین کی باعزت واپسی ہے۔ فاٹا کے لگ بھگ بیس لاکھ افراد نے ۲۰۰۸ ء سے اب تک شورش اور بد امنی سے متاثرہ علاقوں سے نقل مکانی کی ہے۔
    امریکہ نے ۲۰۰۹ ء سے اب تک فاٹا میں ترقیاتی منصوبوں کیلئے ایک ارب ڈالر سے زیادہ کی اعانت فراہم کی ہے ، جو کہ اب تک کسی ملک کی طرف سے سب سے بڑی اعانت ہے

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  9. #87
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ





    امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل کی جانب سے نسٹ میں بارہویں سالانہ فلبرائیٹ اینڈ ہیمفری ایلومنائی کانفرنس کا افتتاح

    اسلام آباد (۷ دسمبر، ۲۰۱۵ء)__ پاکستان میں تعینات امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے نیشنل یونیورسٹی آف سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی (نسٹ) کے ریکٹر انجنیئر محمد اصغر کے ہمراہ بارہویں سالانہ فلبرائیٹ اینڈ ہیمفری ایلومنائی کانفرنس میں دو سو سے زائد شرکاء کا خیر مقدم کیا، اس کانفرنس کا انعقاد یونائیٹڈ اسٹیٹس ایجوکیشنل فاؤنڈیشن ان پاکستان (یو ایس ای ایف پی) کے زیر اہتمام نیشنل یونیورسٹی آف سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی (نَسٹ) میں کیا گیا۔ چار سے چھ دسمبر تک ہونے والی یہ کانفرنس مختلف اسکالرز، فلبرائٹ اور ہیمفری کے سابق شرکاء اور پاکستان میں امریکی سفارتخانہ اور واشنگٹن میں بیورو آف ایجوکیشن اینڈ کلچرل افیئرز کے مہمان مقررین کی زیر صدارت گول میز مباحثوں کے ساتھ بارہ سیمینارز پر مشتمل تھی۔

    امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے کہا کہ امریکہ پاکستان کے ساتھ تعلقات کو مستحکم بنانے کے حوالے سےبہت پُرعزم ہے اورہم اس کا اظہار پاکستانیوں کی مدد کیلئے ایسی سرمایہ کاری کےذریعے کرتے ہیں جس میں پاکستانی معاشرے کی خوشحالی اور بہبود مضمر ہو۔ انہوں نے کہا کہ فلبرائٹ اور ہیمفری تبادلہ پروگرام امریکہ اور پاکستان کے درمیان مزید افہام وتفہیم پیدا کرنے میں کردار ادا کرتے ہیں۔

    یو ایس ای ایف پی پاکستان اور امریکہ کی حکومتو ں نے ۱۹۵۰ء میں تشکیل دیا تھا۔ یہ ایک دو ملکی کمیشن ہے جو امریکہ اور پاکستان کے درمیان تعلیمی و پیشہ ورانہ تبادلوں کو فروغ دیتا ہے۔ پاکستان میں فلبرائیٹ پروگرام کو امریکی حکومت کی عالمی فنڈنگ میں سے سب سے زیادہ رقم ملتی ہے ۔ تقریباً چار ہزار پاکستانی فلبرائیٹ پروگرام اور ۲۰۰ افرادنے ہیمفری پروگرام میں شرکت کرچکے ہیں۔

    فلبرائیٹ پروگرام کا نام آنجہانی امریکی سینیٹر جے ولیم فلبرائیٹ کے نام پر رکھا گیا ہے اور اس پروگرام کے تحت امریکہ کے عوام اور دنیا کے دیگر ملکوں کے عوام کے درمیان مفاہمت کو فروغ دینے کی غرض سے تعلیم اور تحقیق کے لئے رقوم فراہم کی جاتی ہیں۔ ہیوبرٹ ایچ ہیمفری فیلوشپ پروگرام کا آغاز آنجہانی سینیٹر اور نائب صدر کی یاد میں اور اُن کی کامیابیوں کے اعتراف میں کیا گیا تھا جس کے تحت ایک سال کے گریجویٹ سطح کے نان ڈگری تعلیمی کورس ورک اور پیشہ ورانہ ترقی کی سرگرمیوں کے لئے ایسے پیشہ ورانہ ماہرین کو امریکہ بھیجا جاتا ہے جو ابھی اپنے کیریئرکے عروج پر نہ پہنچے ہوں۔

    امریکہ پاکستانی شہریوں کے لئے تبادلہ پروگراموں پر ہر سال ۴۰ ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کرتا ہے اور ہر سال تعلیمی اور پیشہ ورانہ پروگراموں میں شرکت کے لئے ۱۳۰۰ سے زیادہ پاکستانیوں کو امریکہ بھیجتا ہے۔ فلبرائیٹ اور ہیمفری پروگراموں اور تعلیمی مواقع کے بارے میں مزید معلومات کے لئے یو ایس ای ایف پی کی درج ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کیجئے:

    http://www.usefpakistan.org

    یہ معلومات پاکستان میں امریکی سفارتخانہ کے درج ذیل سرکاری فیس بک پیج سےبھی حاصل کی جاسکتی ہیں:

    http://www.facebook.com/pakistan.usembassy

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  10. #88
    benice's Avatar
    benice is offline Expert Member
    سبحان اللہ
     
    Join Date
    Jan 2010
    Location
    Karachi
    Posts
    7,563
    Quoted
    1140 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ




    ’امریکہ میں مسلمانوں کے داخلے پر پابندی عائد کی جائے‘


    ڈونلڈ ٹرمپ

    http://www.bbc.com/urdu/world/2015/1...ump_muslims_sh
    بلکل صحیح کہہ رہا ہے۔
    مکمل پابندی لگا دو۔ شاباش ۔




  11. #89
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    امریکی حکومت کی جانب سے فاٹا کے ۱۸،۰۰۰ سے زائد بے گھر خاندانوں کی واپسی کیلئے زرعی اعانت

    اسلام آباد (۵ ِجنوری ، ۲۰۱۶ء)__ امریکی حکومت نے امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) کے تعاون سے وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقہ جات (فاٹا) کے ۱۸،۰۰۰ سے زائدعارضی طور پر بے گھ کسانوں کو اپنے علاقوں میں واپسی پر زرعی اعانت کی ہے۔کسانوں کو فراہم کی گئی زرعی اجناس انہیں ربی کی فصل کی کاشت کے ذریعے منافع کمانے اور اپنے خاندانوں کی کفالت میں مدد دینگی۔

    گزشتہ دسمبر کے دوران ۱۶،۶۵۰ خاندانوں کو گندم کے بیج، کھاد اور سبزیوں کے تھیلے، جبکہ ۲۰۰۰ اضافی خاندان جئی کے بیج اورکھاد فراہم کی گئی تاکہ وہ اپنی فصلوں کی کاشت شروع کر سکیں۔

    یو ایس ایڈ ، اقوام متحدہ کے فوڈ اینڈ ایگریکلچر آرگنائزیشن (ایف اے او)کے تعاون سے فاٹا کے۵۴،۰۰۰ واپس جانے والے خاندانوں کو۲۰۱۵،۱۶ کے دوران اگلی تین فصلوں کی کاشت میں اعانت کریگا۔اس اعانت میں ایف اے او کے کسانوں کے فیلڈ سکول ماڈل میں کاشتکاری میں پانی کے بہتر استعمال، بہتر کاشت کاری کے طریقوں کے بارے میں تربیت، گھریلو پیمانے پر کاشتکاری کے طور طریقوں کی تربیت بھی شامل ہے۔

    فاٹا سیکریٹریٹ کے سسٹین ایبل ریٹرن اینڈ ری ہیبلٹیشن اسٹرٹیجی کے مطابق دسمبر ۲۰۱۶ تک۳۱۱،۰۰۰ خاندا ن واپس فاٹا جائینگے، جن میں سے اکثریت چھوٹے کاشتکاروں پر مشتمل ہے جن کیلئے بغیر مالی اعانت اپنی بنیادی ضروریات پورا کرنا بہت مشکل ہو گا۔امریکی حکومت ان مشکلات کے حل کیلئے جامع پروگراموں کے ذریعے پاکستانی حکومت کی مدد کر رہی ہے۔ ان منصوبوں میں انسانی بنیادوں پر اعانت، ہاؤسنگ، تعلیم اور مالی معاونت کے ذریعے معاشروں کو مستحکم بنانا ہے۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu


    - - Updated - -

    Quote Originally Posted by benice View Post



    ’امریکہ میں مسلمانوں کے داخلے پر پابندی عائد کی جائے‘


    ڈونلڈ ٹرمپ

    http://www.bbc.com/urdu/world/2015/1...ump_muslims_sh
    بلکل صحیح کہہ رہا ہے۔
    مکمل پابندی لگا دو۔ شاباش ۔






    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    ياد رہے کہ امريکی حکومت يا انتظاميہ کے پاس نا تو اس بات کا کوئ اختيار ہے اور نا ہی ہميں اس بات کا کوئ عوامی مينڈيٹ ملا ہے کہ ہم مبالغہ آميز سياسی نعروں اور بيانات پر کوئ قدغن لگائيں يا کسی بھی سياست دان کی جانب سے پيش کيے گۓ دلائل يا نقطہ نظر پر اثرانداز ہونے کی کوشش کريں، چاہے وہ ملک کی باگ ڈور سنبھالنے والی حکومت کی رائج پاليسيوں سے کتنے ہی متصادم، متنازعہ اور مختلف کیوں نا ہوں۔ تاہم يہ کوئ انہونی يا غير مثالی امر نہيں ہے کہ سياسی مہم کے دوران اپنے ايجنڈے کی تشہير کے ليے کسی سياسی شخصيت کی جانب سے مختلف موضوعات پر بحث وتکرار کے ليے تند وتيز جملے اور متنازعہ موقف پيش کيا گيا ہو۔ تمام دنيا ميں اس کی مثاليں موجود ہيں۔ پاکستان ميں بھی ايسی مثاليں موجود ہيں جب سياست دانوں اور افراد کی جانب سے مختلف وجوہات کی بنياد پر امريکی حکومت پر انتہائ مضحکہ خيز الزامات اور ہماری پاليسيوں پر کڑی نقطہ چينی کی گئ ہے۔

    تاہم يہ امر توجہ طلب ہے کہ کچھ راۓ دہندگان بغير کسی تامل کے ايک امريکی سياسی شخصيت کے بيانات کو امريکہ ميں اجتماعی سوچ سے تعبير کر رہے ہيں اور دانستہ امريکہ کی منتخب حکومت اور صدر کے بيانات اور پاليسيوں کو نظرانداز کر رہے ہيں جن ميں متعدد بار اس سوچ کا اعادہ کيا گيا ہے کہ ہم اسلام اور مسلمانوں کے ساتھ حالت جنگ ميں ہرگز نہيں ہيں۔

    ميں آپ کو يقين سے کہہ سکتا ہوں کہ امريکی آئين اور رائج قوانين اس بات کو يقینی بناتے ہيں کہ تمام شہريوں اور رہائشيوں کو نفرت پر مبنی جرائم سے مکمل تحفظ فراہم کيا جاۓ اور محرکات سے قطع نظر ان جرائم کا ارتکاب کرنے والوں سے کوئ نرمی نا برتی جاۓ۔

    ميں آپ کی توجہ اس جانب مبذول کروانا چاہتا ہوں کہ 911 کے واقعے کے بعد جسٹس ڈيپارٹمنٹ نے مسلم، عرب، مشرق وسطی اور ايشيا سے تعلق رکھنے والے افراد کے خلاف تشدد کے واقعات کے ضمن ميں قريب 800 واقعات کی تحقيقات کروائ۔ اب تک ان ميں 48 ملزمان کے خلاف مقدمات کی سماعت ہوئ ہے اور 41 افراد کو سزائيں بھی دی جا چکی ہيں۔ 911 کے واقعے کے بعد جسٹس ڈيپارٹمنٹ نے تعصب پر مبنی واقعات ميں اسٹيٹ اور مقامی انتظاميہ کی مدد سے 160 مقدمات درج کيے ہيں۔

    آپ اس بارے ميں تفصيلات اس ويب لنک پر پڑھ سکتے ہیں۔

    http://www.justice.gov/sites/default/files/opa/legacy/2009/06/05/muslim-protect-effort.pdf


    مارچ 2011 ميں واشنگٹن کے ايک تھنک ٹينک سينٹر فار سيکورٹی پاليسی نے ايک تحقيق پيش کی جس ميں يہ واضح کيا گيا مذہبی تعصب پر مبنی جرائم يعنی کہ "ہيٹ کرائم" جو کہ امريکی مسلمانوں کے خلاف ہوۓ ان ميں سال 2001 کے بعد سے بتدريج کمی واقع ہوئ ہے اور ان کی تعداد سينکڑوں ميں رہ گئ ہے اور يہ تعداد يہوديوں کے خلاف ہونے والے متعصب جرائم کے مقابلے ميں کم ہے۔

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu


  12. #90
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ



    بے گھر اور خوارک کی کمی کے شکار افراد کوراشن کی فراہمی کیلئے
    امریکہ کی جانب سے۲۰ ملین ڈالر کی اعانت


    اسلام آباد (۲۷ جنوری، ۲۰۱۶ء)__ امریکی حکومت نے وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں (فاٹا) کے عارضی طور پر بے گھر ہونے والے تقریباً ۱۲ لاکھ افراد، ۷۵ ہزار متاثرین زلزلہ اور پاکستان میں غذائیت کی کمی کاشکار ایک لاکھ ۵۳ ہزار ۵ سو خواتین اور بچوں کو خوراک کی فراہمی میں معاونت کے لئے امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) کے ذریعے حال ہی میں ۲۰ ملین ڈالر فراہم کئے ہیں۔

    یہ نئی امریکی معانت اقوام متحدہ کے پروگرام برائے خوراک (ڈبلیو ایف پی) کے زیر انتظام فراہم کی جائے گی، جو حکومت پاکستان کی جانب سے فراہم کردہ تقریباً چالیس ہزارمیٹرک ٹن گندم کو غذائیت سے بھرپور مقوی آٹے میں تبدیل کرے گا۔ اس کے علاوہ، ڈبلیو ایف پی ان افراد کو غذائیت کی فراہمی کے لئے ۹ ہزار میٹرک ٹن سے زائد خصوصی غذائی اشیاء تقسیم کرے گا۔

    یو ایس ایڈ کے مشن ڈائریکٹر جان گرورک نے کہا کہ امریکی حکومت غذائیت کی کمی کے خطرے کاشکار عورتوں، مردوں اور بچوں کی محفوظ اور غذائیت سے بھرپور خوراک تک رسائی کو بہتر بنانے کے لئے پاکستان کی مدد کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ انسانی ہمدردی کی بنیادپر امداد اور انسانی ترقی میں معاونت کے لئے پاکستان کے ساتھ دیرپا بنیاد وں پر کام کرنے کے لئے پُرعزم ہے۔

    یو ایس ایڈ کی ۲۰ ملین ڈالر کی یہ اعانت "ٹوئیننگ پروگرام" کے لئے فراہم کی جانے والی رقم کا حصہ ہے جو حکومت پاکستان، ڈبلیو ایف پی اور بین الاقوامی امدادی اداروں کا مشترکہ پروگرام ہے۔ اس پروگرام کے تحت حکومت پاکستان کی جانب سے عطیہ کردہ گندم کو غذائیت سے بھرپور مقوی آٹے میں تبدیل کیا جاتا ہے، جسے خیبر پختونخواہ اور وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں کے بے گھر ہونے والے افراد میں تقسیم کیا جاتا ہے۔ امدادی اداروں کی رقوم کو گندم کی پسائی، گندم کے آٹے کو غذائیت سے بھرپورمقوی بنانے، اسے محفوظ طریقے سے ذخیرہ کرنے، اس کی نقل و حمل اور تقسیم کی لاگت کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔ یو ایس ایڈ اس ‘‘ٹوئیننگ پروگرام’’ کے لئے رقم فر اہم کرنے والا سب سے بڑا بین الاقوامی ادارہ ہے، اس تازہ ترین معاونت کے بعد یو ایس ایڈ کی اس پروگرام کے لئے ۲۰۱۳ء سے اب تک مجموعی معاونت ۷۵ ملین ڈالر تک پہنچ گئی ہے۔

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  13. #91
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    خیبر پختونخوا اور فاٹا سے تعلق رکھنے والی ۱۸۵ دائیوں کے لئے امریکی تربیت

    اسلام آباد (۱۸ فروری ِ ۲۰۱۶ء)__ امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) پاکستان کے مشن ڈائریکٹر جان گرورک نے خیبرپختونخواہ اور وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں سے تعلق رکھنے والی اُن ۱۸۵ خواتین کو آج یہاں مبارکباد دی جنہوں نے دائیوں کے لئے تربیت کا ڈیڑھ سالہ کورس مکمل کیا۔ اس پروگرام کے لئے امریکہ نےمالی اعانت فراہم کی۔

    مشن ڈائریکٹر گرورک نے اس موقع پر اپنے خطاب میں کہا کہ صحتمند خاندان ایک صحتمند قوم کی بنیاد ہوتا ہے اس لئے انہیں خوشی محسوس ہو رہی ہے کہ امریکہ اس پروگرام اور دیگر منصوبوں کے ذریعہ پاکستان کے ساتھ ملکر کام کرکے پاکستان کے صحت کے شعبہ کو مضبوط کر رہا ہے۔

    اس پروگرام کے دوران تربیت حاصل کرنے والی دائیوں نے اپنی اس خواہش کا اظہار کیا کہ کس طرح وہ چاہتی ہیں کہ زچہ و بچہ کی شرح اموات کوکم کیا جائےاورمقامی سطح پر صحت سے متعلق دیگر مسائل حل کئے جائیں۔ اپنی تربیت کے دوران جو یو ایس ایڈ کے ٹریننگ فار پاکستان پروگرام کے تحت فراہم کی گئی، شرکاء نےمقامی سطح پر زچگی کے وقت مدد، نارمل ولادت اور خطرات سے بروقت آگاہی سے متعلق تربیت حاصل کی تاکہ مریضہ کو بروقت مرکز صحت تک بھیجا جا سکے۔

    یو ایس ایڈ کےتقریباِ چونتیس ملین ڈالر مالیت کے ٹریننگ فار پاکستان پروگرام کے تحت توانائی، معاشی ترقی، زراعت، تعلیم اور صحت سمیت مختلف شعبوںمیں تربیت دی جاتی ہے۔ اس پروگرام کے تحت مئی ۲۰۱۷ء تک یو ایس ایڈ چھ ہزار پاکستانیوں کو تربیت دینے کا ارادہ رکھتا ہے۔ پاکستان کے شعبہ صحت میں یو ایس ایڈ کی سرگرمیوں کے بارے میں مزید جاننے کے لئے مندرجہ ذیل ویب سائٹ پر جائیے :

    www.usaid.gov/pakistan/health

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  14. #92
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ





    امریکہ کی جانب سے پاکستان میں مخلوط نسل کی مکئی کے بیج کی پیداوار کا آغاز

    اسلام آباد (۱۷فروری ِ ۲۰۱۶ء)__ امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یوایس ایڈ) کے مشن ڈائریکٹر جان گرورک نے آج یہاں نیشنل ایگریکلچرل ریسرچ سینٹر میں پاکستانی تحقیقی اداروں اور نجی شعبہ کو مکئی کی نئی اقسام کے بیج فراہم کئے۔نئی اقسام کی مکئی کی نشاندہی اور فراہمی یوایس ایڈ کے ایگریکچرل انوویشن پروگرام نے پاکستان ایگریکلچرل ریسرچ کونسل کے تعاون سے کی ،جس کا مقصد پاکستان میں معیاری قسم کی مخلوط مکئی کے بیج کی پیداوار بڑھانے کے عمل کو مہمیز دینا ہے۔

    یوایس ایڈکے مشن ڈائریکٹر جان گرورک نے اِس موقع پر اظہارِخیال کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ اور پاکستان ملک بھر میں کاشتکاروں کے روزگار کو بہتر بنانے اورکروڑوں پاکستانیوں کو غذائیت سے بھرپور خوراک تک زیادہ رسائی کا مشترکہ نصب العین رکھتے ہیں اور جب امریکہ اور پاکستان مل جل کر کام کرتے ہیں تو پاکستان میں زراعت کے شعبہ اور دیگر میدانوں میں ترقی اور خوشحالی کے اہداف حاصل کرتے ہیں

    راولاکوٹ، آزادکشمیر سے تعلق رکھنے والے ایک کسان محمد صادق نےکہا کہ یہ بیج آنے والے کئی برسوں تک میری فصل کے معیار کو بہتر بنائیں گے۔ میں پاکستان کی زرعی ترقی میں اعانت پر امریکی عوام کا مشکور ہوں۔

    یوایس ایڈ کا ایگریکچرل انوویشن پروگرام۳۰ ملین ڈالر مالیت کا چار سالہ پروگرام ہے جو گندم، مکئی ، چاول ، مویشی، پھل اور سبزیوں کے متعلق جدید طور طریقوں کے فروغ کے ذریعہ پیداوار اور آمدن میں اضافے کے لئے وضع کیا گیا ہے۔ آج تقسیم کئے گئے مکئی کے بیج خشک سالی اور گرمی کی شدت سے مزاحمت کرنے والی تیار کی گئی نسل سے تعلق رکھتے ہیں اور کیڑے مکوڑوں کے حملوں سے بھی مقابلہ کرتے ہیں اور مٹی میں نائیٹروجن کی کم مقدار میں بھی پیداوار دیتے ہیں۔

    ایگریکچرل انوویشن پروگرام کے بارے میں مزید معلومات کے درج ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کریں:

    http://aip.cimmyt.org/


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  15. #93
    benice's Avatar
    benice is offline Expert Member
    سبحان اللہ
     
    Join Date
    Jan 2010
    Location
    Karachi
    Posts
    7,563
    Quoted
    1140 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ






  16. #94
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ





    امریکی سفیر کی جانب سے پانی، توانائی وخوراک کی سلامتی کے متعلق کانفرنس کا افتتاح

    اسلام آباد (۱۶ فروری، ۲۰۱۶ء)__ امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل ، وفاقی وزیر منصوبہ بندی و اصلاحات پروفیسر احسن اقبال اور نسٹ کے ریکٹر انجینئر محمد اصغر نےآج نیشنل یونیورسٹی آف سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی اسلام آباد میں پانی ،توانائی و خوراک کی سلامتی کے باہمی تعلق کے بارےمیں کانفرنس کا افتتاح کیا۔اس کانفرنس کا مقصددنیا بھر میں موسمیاتی تبدیلیوں، آبادی میں اضافہ، معاشی ترقی اور پانی ، توانائی و خوراک کے بڑھتے ہوئے استعمال کے اثرات کے بارے میں تبادلہ خیال اور ان مسائل کے ممکنہ حل تلاش کرنا ہے۔

    سفیر ڈیوڈ ہیل نے اس موقع پر اظہارِ خیال کرتے ہوئے کہا کہ پانی ، توانائی اور خوراک زندگی کے تین بنیادی ضروریات ہیں اور یہ ضروری اجزاء ایک پیچیدہ عمل کے ذریعہ ہم تک پہنچتے ہیں اور بڑھتی ہوئی آبادی اور موسمیاتی تبدیلیاں اِس عمل کو متاثر کررہیں ہیں۔ اس چیلنج سے نبردآزما ہونے کے لئے ہمیں مل جل کر نت نئے خیالات، نئے اشتراک ِکار اور جدت پر مبنی حل تلاش کرنے کی ضرورت ہے۔

    دوروزہ کانفرنس میں حکمت عملی وضع کرنے والے ماہرین، سائنس دان اور نجی کاروباری شعبے سے تعلق رکھنے والی شخصیات پانی ، توانائی اور زراعت کے درمیان تعلق کے بارے میں تبادلہ خیال کریں گے۔ شرکاء ان حل کے بارے میں غور وخوض کریں گے جن سےخوراک ، پانی اور توانائی کی سلامتی کو یقینی بنانے کے لئے واضع سرکار ی پالیسیاں تشکیل دینے اور وسائل کے مؤثر استعمال کو یقینی بنایا جاسکے۔یہ کانفرنس دونوں ملکوں کے درمیان پانی، توانائی اور خوراک کی سلامتی کے کلیدی شعبوں میں جاری اس تعاون کی عکاسی کرتی ہے جو صدر باراک اوبامہ اور وزیر اعظم نوازشریف نے اکتوبر ۲۰۱۵ء میں ہونے والی ملاقات طے پایا تھا۔

    انجینئر محمد اصغر نے کہا کہ پانی اور خوراک کی سلامتی ایسے بین الاقوامی معاملات سے نمٹنے کے لئے سرحدوں پار تعاون کی اہمیت کو کم نہیں کیا جاسکتا ۔یہ وہ مسائل ہیں جو سرحدوں سے ماوریٰ ہیں اور ان کے حل سے تمام لوگ استفادہ کرسکتے ہیں چاہے وہ کہیں بھی رہتے ہوں۔

    امریکہ اورپاکستان توانائی کے شعبہ میں تعاون اور قدرتی گیس اور آلودگی سے پاک توانائی کے ماخذ جیسا کہ شمسی توانائی، ہوا سے حاصل ہونے والی توانائی ، جیو تھرمل اور ہائیڈرو انرجی کے شعبوں میں نجی سرمایہ کاری کو ترغیب دینے کے لئے مل جل کر کام کرنے کی ایک طویل تاریخ رکھتے ہیں۔ دونوں ملکوں نے دسمبر میں پیرس میں اکیس ملکوں کی موسمیاتی تبدیلی کے متعلق کانفرنس میں ایک سمجھوتے پر زور دیا تھااور آلودگی سے پاک توانائی کے لئے اشتراک اور تزویراتی مذاکرات کے ذریعہ مشترکہ طورپر سرگرم ِ عمل ہیں۔

    پانی ، توانائی اور خوراک کی سلامتی کی مشترکہ کانفرنس کے بارے میں مزید معلومات کے لئے درج ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کریں:

    http://www.nust.edu.pk/INSTITUTIONS/Schools/SCEE/Institutes/NICE/Events/Pages/WEF-Conf.aspx

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu





  17. #95
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ






    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    امریکی سفارتخانہ کی جانب سے ’’دی لیڈرز سمٹ ‘‘میں علاقائی رابطے کا فروغ

    امریکی سفارتخانہ کے ناظم الامور جوناتھن پریٹ نے "دی لیڈرز سمٹ" میں علاقائی معاشی روابط کے ثمرات اور پاکستان کیلئے امریکی اعانت کے بارے میں اظہار خیال کیا۔ اس ایک روزہ کانفرنس کے انعقاد میں "نٹ شیل فورم "اور جنگ میڈیا گروپ جیسے اداروں نے تعاون کیا ۔ کانفرنس میں ،جس کا موضوع "دی بگ ری تھنک" تھا ، جدت طرازی، قیادت، توانائی، ثقافت، تنوع، کاروباری حکمت عملی اور بحران سے نمٹنے کے انتظام سے متعلق امور پر بات چیت کی گئی۔

    ناظم الامور جوناتھن پریٹ نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ علاقائی روابط کے حوالے سے ہم نے ایک ایسی حکمت عملی وضع کی ہے جو پڑوسی ملکوں کے درمیان تجارت کو فروغ دے گی اور ان کےباہمی تعلقات کو بہتر بنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اگر خطہ بہتر کاروباری تعلقات سے منسلک ہو جائے تو ہمیں امید ہے کہ اس سے سیاسی تعلقات میں بہتری لانے میں مدد ملے گی۔

    جوناتھن پریٹ نےمزید کہا کہ امریکہ اور پاکستان نے علاقائی روابط اور ادغام کو فروغ دینے کیلئے مشترکہ طور پر متعدد اقدامات کئے ہیں جن میں سڑکوں کی تعمیر نو اور کسٹمز کی چیک پوسٹوں کو توسیع دینا شامل ہے۔

    جوناتھن پریٹ نے کہا کہ امریکہ اور پاکستان اسٹریٹجک ڈائیلاگ کے ذریعےتعلیم ، تبادلہ پروگراموں اور توانائی سمیت دیگر شعبوں میں بھی مل کر کام کررہے ہیں۔

    تیسری سالانہ لیڈرز سمٹ میں ، جس کا اہتمام امریکی سفارتخانہ کے انٹرنیشنل وزیٹر لیڈرشپ پروگرام میں شرکت کرنے والے پاکستانی محمد اظفر احسن نے کیا تھا، کاروباری رہنماؤں، سرکاری حکام اور ماہرین تعلیم سمیت تقریباً ۵۰۰ شخصیات نے شرکت کی۔ امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) کے قائم مقام مشن ڈائریکٹر جیمز پیٹرز نے بھی کانفرنس میں اظہار خیال کیا، جس میں انہوں نے قیادت، اخلاقیات اور معاشرے سے متعلق امور پر توجہ مرکوز کی

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu


  18. #96
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ




    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ




    نوجوان رہنماؤں کیلئے پاک-امریکہ الومینائی نیٹ ورک یوتھ ایکٹیوزم کانفرنس کا انعقاد

    اسلام آباد (۱۰ ِاپریل، ۲۰۱۶ء)__ اسلام آباد کی مقامی آبادیوں میں معاشرتی خدمات سرانجام دینے کی غرض سے نوجوانوں کو متحرک کرنے کیلئے پاک-امریکہ الومینائی نیٹ ورک (پی یو اے این) کی تین روزہ کانفرنس اختتام پذیر ہوگئی۔ورکشاپس، گروہی مباحثوں اور اہم تقاریر کے بعد آؤٹ ریچ سرگرمیوں کا آغاز ہوا جن کی نوجوانوں کو اپنے معاشروں کی بہتر انداز کی خدمت کرنے کے سلسلے میں ضرورت پڑتی ہے۔ پاکستان اور جنوبی ایشیاء میں امریکی حکومت کی اعانت سے جاری تبادلہ پروگراموں کے سابق طالب علموں نے اسلام آباد میں منعقدہ اس تقریب میں شرکت کی جس کا اہتمام امریکی سفارتخانہ اور پی یو اے این نے مشترکہ طور پر کیا تھا۔

    معاون امریکی وزیر خارجہ برائے تعلیمی و ثقافتی امور ایون رائن نے ۸ اپریل کو اس کانفرنس کا افتتاح کیا تھا۔

    معاون امریکی وزیر خارجہ ایون رائن نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور خطے سے تعلق رکھنے والے نوجوان رہنما ؤں کے طور پر آپ سب اپنے خطے میں لوگوں کی خدمت کرنے کیلئے نوجوانوں کو تیار کرنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اپنی خدمات اور اپنے اپنے ملکوں کیلئے اپنے عزم کی بدولت آپ اپنے ملکوں کو معاشی لیڈر بننے کی راہ پر گامزن رکھیں گے جو خوشحال اور محفوظ جنوبی ایشیاء کی کلید ہے۔

    تین روزہ کانفرنس کے دوران امریکی حکومت کے تبادلہ پروگراموں کے سابقہ شرکاء نے موسمیاتی تبدیلیوں کے خاتمے،متشدد انتہا پسندی کے سدباب اور انسانی حقوق کے فروغ کے موضوعات پر مختلف ورکشاپس میں حصہ لیا، جس کا مقصد انہیں اپنے معاشروں میں مثبت تبدیلی کے حوالے سے ان کو متاثر کرنا تھا۔ شرکاء نے فنڈ ریذنگ سے متعلق ڈیجیٹل سکلز، کمیونیکیشن اور اپنے خیالات کو حقیقت میں تبدیل سے متعلق سرگرمیوں کے حوالے سے قیمتی معلومات حاصل کیں۔فلبرائٹ پروگرام کے سابق شریک اور ایوارڈ یافتہ طبیعات دان پرویز ہود بھائی،کوہ پیما ثمینہ بیگ اور فلمساز حیا فاطمہ نے بھی شرکا ء سے خطاب کیا۔

    ۲۰۱۴ کے گلوبل انڈر گریجویٹ تبادلہ پروگرام کی شریک صائمہ رحمان نے اپنے خطاب میں کہا کہ کانفرنس میں شرکت سے ہمیں مختلف نوجوان افراد اور معاشرے کے رہنماؤں سے ملاقات کا زبردست موقع ملا۔اس کانفرنس میں شرکت کے بعد ہم اپنے معاشروں میں دیرپا اور فیصلہ کن کردار ادا کر سکتے ہیں۔

    امریکی حکومت ہر سال ۴۰ ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کے ذریعے ۱۳۰۰ سےزائد پاکستانیوں کو تعلیمی اور پیشہ وارانہ پروگراموں میں شرکت کیلئے امریکہ بھیجتی ہے۔ پی یو اے این طلبہ اور پیشہ ور افراد پر مشتمل ایک ایلومینائی نیٹ ورک ہےجنہوں نے امریکی حکومت کے مالی اعانت سے چلنے والے پروگراموں میں شرکت کی ہے۔پاکستان بھر میں ۱۵۰۰۰ ہزار سابقہ شرکاء کے ساتھ پی یو اے این کا شمار اپنی نوعیت کے دنیا کے بڑے نیٹ ورکس میں ہوتا ہے۔ پی یو اے این باقاعدگی سے پاکستان بھر میں مختلف تقریبات کا انعقاد کرتی ہے جن میں سروس پراجیکٹس، لیڈرشپ ٹریننگ، گول میز مباحثے اور سماجی سرگرمیاں شامل ہیں۔ پی یو اے این اور اس کانفرنس کے بارے میں مزید جاننے کیلئے درج ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کریں۔

    http://www.facebook.com/pakalumni

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  19. #97
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ






    امریکی سفیر کامعذور افراد کیلئےسرگرم کارکنوں کی کوششوں کو خراج تحسین

    پاکستان میں تعینات امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے اسپیشل ٹیلنٹ ایکسچینج پروگرام (اسٹیپ) کے زیر اہتمام اسلا م آباد میں منعقد ایک کانفرنس کے دوران سماجی کارکنوں کی جانب سے معذور خواتین کو بااختیار بنانے اور ان کی اعانت کیلئے کوششوں کو جاری رکھنے کی حوصلہ افزائی کی۔

    امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے خطاب کے دوران کہا کہ ہمارا اسٹیپ کے ساتھ اشتراک ِکار کا مقصد معذور خواتین کیلئے وسائل کے حوالے سے آگہی بڑھانا ہے، تربیت کے ذریعے خواتین کی افرادی قوت میں شمولیت اور عوام میں جسمانی معذور افراد کےحقوق بارے میں شعوربیدارکرنا ہے۔

    امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے اس بات کی تائید کی کہ معذور خواتین کی برابری کی بنیاد پر شرکت کو ہر جگہ یقینی بنایا جا رہا ہے اور یہ ایک ایسا مسئلہ ہے جسے ہم حل کر سکتے ہیں اورہمیں لازمی طورپرایسا کرنا چاہیے۔اس کانفرنس میں،جس کا انعقاد امریکی سفارتخانہ کی مالی اعانت سے کیا گیا ، پاکستان بھر سے سماجی کارکنوں نے شرکت کی اوراس میں معذور خواتین کو بااختیار بنانے کے حوالے سے اقدامات پر غور کیا گیا۔ کانفرنس میں دیرپا ترقی کے اہداف اور ترقی میں صنف اورمعذوری کے کردار کے حوالے سے مباحثے کا بھی اہتمام کیا گیا ۔

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  20. #98
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ



    بے گھر اور خوارک کی کمی کے شکار افراد کوراشن کی فراہمی کیلئے
    امریکہ کی جانب سے۲۰ ملین ڈالر کی اعانت

    امریکی حکومت نے وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں (فاٹا) کے عارضی طور پر بے گھر ہونے والے تقریباً ۱۲ لاکھ افراد، ۷۵ ہزار متاثرین زلزلہ اور پاکستان میں غذائیت کی کمی کاشکار ایک لاکھ ۵۳ ہزار ۵ سو خواتین اور بچوں کو خوراک کی فراہمی میں معاونت کے لئے امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) کے ذریعے حال ہی میں ۲۰ ملین ڈالر فراہم کئے ہیں۔

    یہ نئی امریکی معانت اقوام متحدہ کے پروگرام برائے خوراک (ڈبلیو ایف پی) کے زیر انتظام فراہم کی جائے گی، جو حکومت پاکستان کی جانب سے فراہم کردہ تقریباً چالیس ہزارمیٹرک ٹن گندم کو غذائیت سے بھرپور مقوی آٹے میں تبدیل کرے گا۔ اس کے علاوہ، ڈبلیو ایف پی ان افراد کو غذائیت کی فراہمی کے لئے ۹ ہزار میٹرک ٹن سے زائد خصوصی غذائی اشیاء تقسیم کرے گا۔

    یو ایس ایڈ کے مشن ڈائریکٹر جان گرورک نے کہا کہ امریکی حکومت غذائیت کی کمی کے خطرے کاشکار عورتوں، مردوں اور بچوں کی محفوظ اور غذائیت سے بھرپور خوراک تک رسائی کو بہتر بنانے کے لئے پاکستان کی مدد کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ انسانی ہمدردی کی بنیادپر امداد اور انسانی ترقی میں معاونت کے لئے پاکستان کے ساتھ دیرپا بنیاد وں پر کام کرنے کے لئے پُرعزم ہے۔

    یو ایس ایڈ کی ۲۰ ملین ڈالر کی یہ اعانت "ٹوئیننگ پروگرام" کے لئے فراہم کی جانے والی رقم کا حصہ ہے جو حکومت پاکستان، ڈبلیو ایف پی اور بین الاقوامی امدادی اداروں کا مشترکہ پروگرام ہے۔ اس پروگرام کے تحت حکومت پاکستان کی جانب سے عطیہ کردہ گندم کو غذائیت سے بھرپور مقوی آٹے میں تبدیل کیا جاتا ہے، جسے خیبر پختونخواہ اور وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں کے بے گھر ہونے والے افراد میں تقسیم کیا جاتا ہے۔ امدادی اداروں کی رقوم کو گندم کی پسائی، گندم کے آٹے کو غذائیت سے بھرپورمقوی بنانے، اسے محفوظ طریقے سے ذخیرہ کرنے، اس کی نقل و حمل اور تقسیم کی لاگت کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔ یو ایس ایڈ اس ‘‘ٹوئیننگ پروگرام’’ کے لئے رقم فر اہم کرنے والا سب سے بڑا بین الاقوامی ادارہ ہے، اس تازہ ترین معاونت کے بعد یو ایس ایڈ کی اس پروگرام کے لئے ۲۰۱۳ء سے اب تک مجموعی معاونت ۷۵ ملین ڈالر تک پہنچ گئی ہے۔

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu


  21. #99
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ





    میوزک میلہ ۲۰۱۶ میں شائقین کا جنون اورثقافتوں کا ملاپ

    اسلام آباد (۲۴ ِاپریل، ۲۰۱۶ء)__ رواں ہفتے کے اختتام پر اسلام آباد میں ایک بار پھر میوزک میلہ کی واپسی ہوئی اور پاکستان نیشنل کونسل آف دی آرٹس (پی این سی اے) پاکستان میں موسیقی کی دنیا کا مرکز بن گیا۔امریکی سفارتخانہ اور فاؤنڈیشن آف آرٹس اینڈ کلچر (ایف اے سی ای) کے اشتراک سے میوزک میلہ میں گزشتہ تین دن کے دوران ۱۵،۰۰۰ سے زائد شائقین نے شرکت کی اور ۳۰ کے قریب پاکستانی، امریکی اور عالمی شہرت یافتہ فنکاروں کے فن سے لطف اندوز ہوئے۔

    امریکی بینڈ گروپو فینٹسما نے جمعہ کو اپنے شاندار فن سے میلہ لوٹ لیااور اپنے لاطینی فنک ساؤنڈ سے شائقین کو محظوظ کیا۔امریکی اور لاطینی موسیقی کے حسین امتزاج اور عالمی موسیقی کے اثر سے نو افراد پر مشتمل بینڈ نے اپنی گریمی ایوارڈ یافتہ البم ای ون ایگزیسٹینشیل پرفارمنس سے شائقین سے زبردست داد وصول کی۔ہفتے کی رات چمکدار روشنیوں کے نیچےامریکی ستار نوازایمی میذویسکی نے ستار، طبلہ اور انڈو-جیز کے امتزاج سے شاندار پذیرائی حاصل کی۔

    اس سال میوزک میلہ میں جن دیگر نمایاں فنکاروں نے فن کا مظاہرہ کیا ان میں نوری،رضوان معظم قوال، جاوید بشیر، اریب اظہر،زوئی ویکاجی، اور قوالستان کے عمران عزیز اور علی سیٹھی شامل تھے۔ اس سال کے فنکاروں پر تبصرہ کرتے ہوئے ایف اے سی ای کے کریٹیو ڈائریکٹر اریب اظہر نے کہا کہ میوزک میلہ کے اس تیسرےسال میں اس سے بہتر ین کارکردگی کی توقع نہیں کی جا سکتی تھی۔ انہوں نے کہا کہ یہ ہماری خوش قسمتی ہے کہ ہمیں پاکستان اور بین الاقوامی باصلاحیت فنکاروں کے ساتھ کا م کرنے کا موقع ملاا ورمختلف اقسام کی موسیقی بشمول فولک،روک اور پاپ کے بہترین نمونے دیکھنے کو ملے۔

    فنکاروں نے میوزک میلہ کے دوران نئے ابھرنے والے اور پرانے موسیقی سے جڑے افراد کیلئے ورکشاپ کا اہتمام بھی کیا ۔ ایمی میذویسکی اور گروپوفینٹسما اور دیگر فنکاروں نے موسیقی اور گلوبلائزیشن کے موضوع پر ایک پینل مباحثے میں بھی شرکت کی۔ دیگر سیشنز میں علی نور اور علی حمزہ کی گیت نگاری پر ورکشاپ کے علاوہ موسیقی کےآن لائن فروغ کیلئے امریکی موسیقی کی تشہیر کی ماہرٹریسٹاییگر سے گفتگو بھی شامل تھی۔

    امریکی سفارتخانہ پاکستان میں مختلف آرٹس پروگراموں کیلئے سالانہ ۱۰۰ ملین روپے کی اعانت فراہم کرتا ہے۔ ہر سال امریکی حکومت کی مالی امداد سے درجنوں پاکستانی موسیقار ساؤتھ بائی ساؤتھ ویسٹ میوز ک فیسٹول میں پاکستانی شوکیس ، دوستی میوزک فیسٹول اور ڈینئیل پرل ورلڈ میوزک ڈیز میں شرکت کرتے ہیں۔

    میوزک میلہ کے بارے میں مزید جاننے کیلئے درج ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کیجئے

    www.musicmela.org


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu



  22. #100
    fawad is offline Senior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Mar 2008
    Posts
    980
    Quoted
    51 Post(s)

    Re: ايک اور امريکی تحفہ



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ




    بچوں میں پڑھنے کی عادتوں کو فروغ دینے سے متعلق یو ایس ایڈ گرانٹس کی کامیاب تکمیل


    امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) نے ابتدائی عمر سے ہی بچوں میں پڑھنے کی عادت اور مہارت پیدا کرنے کی حوصلہ افزائی کے لئے ۱۸ چھوٹی گرانٹس کی کامیاب تکمیل پر ایک تقریب منعقد کی۔

    یو ایس ایڈ پاکستان ایجوکیشن آفس کی ڈائریکٹر نتاشہ ڈی مرکن نے اس موقع پر کہا کہ ہمیں کمیونٹی کی سطح پر پڑھنے کی سرگرمیوں کے لئے گرانٹس کے لئے غیر معمولی درخواستیں ریکارڈ تعداد میں موصول ہوئیں۔ ان گرانٹس سے والدین کو ایسی سرگرمیوں میں شریک کرنے میں مدد ملی، جن سے بچوں کی پڑھنے کی صلاحیتیں مستحکم ہوں گی اور بچوں کی تفریحی اور زندگی بھر سیکھنے کی جستجو کے لئے پڑھنے کی عادت کو فروغ ملے گا۔

    یو ایس ایڈ پاکستان ریڈنگ پراجیکٹ کے تحت فراہم کی جانے والی ان گرانٹس کے تحت تین ماہ پر محیط سرگرمیوں کے لئے معاونت فراہم کی گئی۔ یونیورسٹی ٹاؤن، کراچی میں گورنمنٹ گرلز پرائمری اسکول نے اساتذہ اور والدین کی ملاقاتوں کا اہتمام کیا، والدین کو کہانی سنانے جیسی سرگرمیوں میں شریک کیا اور اپنی گرانٹ کے ذریعے ایک ینگ ریڈر پرائز قائم کیا۔

    گورنمنٹ گرلز پرائمری اسکول کی ہیڈ ٹیچر مسرت خان نے کہا کہ اس سرگرمی کے بعد ہمارے اسکول میں بچوں کے اندراج میں نمایا ں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بچوں کے والدین ہمیں بتاتے ہیں کہ بچے اب صبح جلدی اٹھتے ہیں اور بہت لگن کے ساتھ اسکول جاتے ہیں۔

    یو ایس ایڈ کے فنڈ سے چلنے والے پاکستان ریڈنگ پراجیکٹ کے تحت پورے پاکستان میں صوبائی اور علاقائی تعلیمی محکموں کو بنیادی تعلیم حاصل کرنے والے بچوں میں پڑھنے کی صلاحیتیں بہتر بنانے کے لئے معاونت کی جاتی ہے۔ پاکستان میں تعلیم کے شعبے میں امریکی معاونت کے بارے میں مزید معلومات کے لئے درج ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کیجئے۔

    https://www.usaid.gov/pakistan/education

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu




Page 5 of 8 First ... 34567 ... Last

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •  

Log in