All Pakistani Dramas Lists
Latest Episodes of Dramas - Latest Politics Shows - Latest Politics Discussions

Thread: Shair O Shairi December 2014

      
   
  1. #1
    R oC k iN is offline cAtcH ME
    cATcH mE, iF U cAn....
     
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    U cAn Run But U cAn't HiD
    Posts
    116,656
    Blog Entries
    47
    Quoted
    886 Post(s)

    Exclamation Shair O Shairi December 2014

    !! السلام علیکم






    ! شعرو شاعری کے مقابلے میں خوش آمدید
    ! اس مرتبہ آپکو غزل شیئر کرنی ہے...اور وہ بھی اپنی پسند کی












    -:قوانین








    .شاعر کا نام تحریر کریں -
    ایک فرد صرف ایک غزل شیئر کرسکتا ہے -
    کوئی بھی غزل شیئر کرنے سے ہہلے اس بات کا اطمینان کر لیجیے کہ -
    یہ پہلے سے شیئر تو نہیں کی گئی.. بصورت دیگر آپ کی شیئر کی گئی غزل قبول نہیں کی جائے گی۔


    _ مقابلے کی آخری تاریخ ۲۰ دسمبر ۲۰۱۴ ہے
    کہتے ہیں عشق نام کےگذرے ہیں اک بزرگ
    ہم لوگ بھی مرید اُسی سلسلے کے ہیں



  2. The Following 3 Users Say Thank You to R oC k iN For This Useful Post:

    anz3611 (12-02-2014), soul snatcher (12-14-2014)

  3. #2
    sami691's Avatar
    sami691 is offline Star Member
    Bheegi palkon per naam tumhara
    hai
     
    Join Date
    Mar 2013
    Location
    Rawalpindi
    Posts
    1,140
    Quoted
    24 Post(s)

    Re: Shair O Shairi December 2014



    ALLAMA IQBAL
    Muhammad Sami Ullah

  4. #3
    usmi20's Avatar
    usmi20 is offline Junior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Apr 2010
    Posts
    287
    Quoted
    3 Post(s)

    Post Re: Shair O Shairi December 2014


    [size=4
    آج ملبوس میں ہے کیسی تھکن کی خوشبو
    رات بھر جاگی ہوئی جیسے دُلہن کی خوشبو

    پیرہن میرا مگر اُس کے بدن کی خوشبو
    اُس کی ترتیب ہے ایک ایک شکن کی خوشبو

    موجہ گُل کو ابھی اِذنِ تکلم نہ ملے
    پاس آتی ہے کسی نرم سخن کی خوشبو

    قامتِ شعر کی زیبائی کا عالم مت پُوچھ
    مہرباں جب سے ہے اُس سرد بدن کی خوشبو

    ذکر شاید کسی خُورشید بدن کا بھی کرے
    کُوبہ کُو پھیلی ہُوئی میرے گہن کی خوشبو

    عارضِ گُل کو چُھوا تھا کہ دھنک سی بکھری
    کِس قدر شوخ ہے ننھی سی کرن کی خوشبو

    کِس نے زنجیر کیا ہے رمِ آہو چشماں
    نکہتِ جاں ہے انھیں دشت ودمن کی خوشبو

    اِس اسیری میں بھی ہر سانس کے ساتھ آتی ہے
    صحنِ زنداں میں اِنھیں دشت وطن کی خوشبو
    [/size]
    [/size][/color]


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •  

Log in