All Pakistani Dramas Lists
Latest Episodes of Dramas - Latest Politics Shows - Latest Politics Discussions

Thread: پرانی تاریخ کو روتے رہو۔

      
   
  1. #1
    benice's Avatar
    benice is offline Expert Member
    سبحان اللہ
     
    Join Date
    Jan 2010
    Location
    Karachi
    Posts
    7,566
    Quoted
    1140 Post(s)

    Thumbs down پرانی تاریخ کو روتے رہو۔


    جب اسلام کی بات ہو
    تو ترقی کا لیکچر پلایا جاتا ہے۔
    اور جب ترقی کی بات کرو
    تو تاریخ کا رونا رونا شروع کر دیتی ہے یہ قوم ۔

    چلو ترقی کا پہیہ آخر روک ہی لیا کسی بدبخت نے۔
    اب پوری قوم ڈنڈے بجائے۔



    میٹرو منصوبہ:’تاریخی عمارتوں کے قریب تعمیر روکنے کا حکم


    http://www.bbc.com/urdu/pakistan/201...ork_stopped_zz



  2. #2
    A_Sattar's Avatar
    A_Sattar is offline Expert Member
    JUST PML-N... & MIAN SAHIB
     
    Join Date
    May 2014
    Location
    USA
    Posts
    3,309
    Quoted
    1106 Post(s)

    Re: پرانی تاریخ کو روتے رہو۔

    ایسے کچھ پاگل لوگ آج سے 24 برس پہلے موٹر وے کی بھی اسی طرح مخالفت کیا کرتے تھے ۔ اب بڑی شان سے اسی موٹر وے پہ گاڑی دوڑاتے ہوئے اسلام آباد اور لاہور کے درمیان آتے جاتے رہتے ہیں ۔ جتنی مشکلوں اور رکاوٹوں کے بعد موٹر وے بنی تھی اسی طرح اورنج ٹرین بھی انشااللہ بن جائے گی ۔ اور یہی بھونکنے والے کسی آئندہ بننے والے منصوبے کے متعلق بھونکنا شروع کر دیں گے ۔

  3. #3
    jabbarjee's Avatar
    jabbarjee is offline Junior Member
    Edit>
     
    Join Date
    Dec 2012
    Posts
    338
    Quoted
    39 Post(s)

    Re: پرانی تاریخ کو روتے رہو۔

    Quote Originally Posted by A_Sattar View Post
    ایسے کچھ پاگل لوگ آج سے 24 برس پہلے موٹر وے کی بھی اسی طرح مخالفت کیا کرتے تھے ۔ اب بڑی شان سے اسی موٹر وے پہ گاڑی دوڑاتے ہوئے اسلام آباد اور لاہور کے درمیان آتے جاتے رہتے ہیں ۔ جتنی مشکلوں اور رکاوٹوں کے بعد موٹر وے بنی تھی اسی طرح اورنج ٹرین بھی انشااللہ بن جائے گی ۔ اور یہی بھونکنے والے کسی آئندہ بننے والے منصوبے کے متعلق بھونکنا شروع کر دیں گے ۔

    ارادے جن کے پختہ ہوں نظر جن کی خدا پر ہو
    تلاطم خیز موجوں سے وہ گھبرایا نہیں کرتے
    بس یقین محکم کے ساتھ ہمت جواں رکھنے کی ضرورت ہے۔ترقی کے سفر کی راہ میں روڑے اٹکانے والے انشا اللہ نا مراد ہی رہیں گے۔

  4. #4
    A_Sattar's Avatar
    A_Sattar is offline Expert Member
    JUST PML-N... & MIAN SAHIB
     
    Join Date
    May 2014
    Location
    USA
    Posts
    3,309
    Quoted
    1106 Post(s)

    Re: پرانی تاریخ کو روتے رہو۔

    ہے تو ذرا موضوع سے ہٹ کے ۔ لیکن بی بی سی کا یہ مضمون پڑھیں
    کیا بی بی سی کو بھی نواز شریف اور شہباز شریف نے خرید لیا ہے ؟
    لاہور انفارمیشن ٹیکنالوجی کی راہ پر گامزن
    لاہور میں اگر گاڑی کا تیل بدلوانا ہو۔ بیڑی تبدیل کروانی ہو یا گاڑی کی کوئی اور خرابی دور کروانا ہو تو میکنک کی دکانوں کے چکر لگانے کی ضرورت نہیں۔ بلکہ ٹیکنالوجی کی بدولت اب یہ سروس آپ کے دروازے پر دستیاب ہو سکتی ہے۔
    شائستہ ذوالفقار ایک ورکنگ ویمن ہیں جو گذشتہ چھ ماہ سے ویب سائٹ پر بکنگ کروا کے گاڑی کی مرمت گھر پر ہی کروا رہی ہیں۔
    شائستہ ذوالفقار کا کہنا ہے کہ ’بہت آسانی ہوگئی ہے۔ پہلے تو فکر رہتی تھی کہ میکنک گاڑی کے پرزے ہی نہ نکال لے۔ اب گھر بیٹھے بیٹھے میں نے آن لائن بکنگ کروائی۔ میکنیک آیا میری آنکھوں کے سامنے کام کر کے چلا بھی گیا۔ میں تو بہت مطمئن ہوں۔‘


    یہ سروس ’آٹو جینی‘ نامی کمپنی کی جانب سے شروع کی گئی۔ آٹو جینی لاہور یونیورسٹی آف منیجمنٹ سائنسز کے سابق طلبہ کی ایک کمپنی ہے۔ جو ویب سائٹ اور اپنے فیس بک پیج پر آرڈر لے کر گھروں اور دفاتر میں گاڑیوں کی مرمت کا کام کرتی ہے۔ کمپنی کے سی ای او حسن سمی کا کہنا ہے کہ ان کی کمپنی کا کاروبار تیزی سے بڑھ رہا ہے۔

    ’آٹو انڈسٹری گذشتہ برس پاکستان میں 33 فیصد بڑھی ہے۔ تو ہماری مارکیٹ بھی بڑھ رہی ہے۔ ہم نے دس ماہ پہلے کام شروع کیا تھا۔ اور ابتدا میں عام صارفین پر توجہ دی لیکن اب ہم کمپنیوں سے رابطے میں ہیں۔ ایک کمپنی سے اوسطاً 50 سے 60 گاڑیوں کے دیکھ بھال کا کام ہمیں مل سکتا ہے۔‘
    آٹو جینی لاہور کے بعد کراچی اور اسلام آباد میں اپنی سروس شروع کر رہی ہے اور اپنی موبائل فون ایپ بھی بنا رہے ہیں۔
    پاکستان میں تھری جی اور فور جی کی آمد کے بعد یہ دنیا بھر میں آئی ٹی کمپنیوں کی سرمایہ کاری کے لیے ایک پرکشش مارکیٹ کے طور پر ابھرا ہے۔
    گذشتہ برس ملک میں ٹیکنالوجی کی بنیاد پر کام کرنے والی 29 نئی کمپنیوں یا سٹارٹ اپس میں تین کروڑ پچاس لاکھ ڈالرز کی غیر ملکی سرمایہ کاری ہوئی ان میں سے 24 کمپنیاں لاہور کی ہیں۔

    پاکستان میں نوکریوں کے حصول کا سب سے بڑا ویب پورٹل روزی ڈاٹ پی کے گاڑیوں کی خرید و فروخت کی سب سے بڑی ویب سائٹ پاک ویلز اور جائیداد کی آن لائن خرید و فروخت کا سب سے بڑا ویب پورٹل زمین ڈاٹ کام بھی لاہور سے ہی چلائے جارہے ہیں۔
    زمین ڈاٹ کام میں گذشتہ نوے لاکھ ڈالر کی غیر ملکی سرمایہ کاری ہوئی جس کے بعد اس کی مزید توسیع کی جا رہی ہے۔
    ذیشان علی خان زمین ڈاٹ کام کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیں۔ برطانیہ سے تعلیم یافتہ ہیں۔ انھوں نے پاکستان میں آن لائن پراپرٹی کا کاروبار تقریباً دس سال پہلے شروع کیا تھا۔ یہ جب سے لاہور میں ہی قیام پذیر ہیں۔
    ذیشان علی کا کہنا ہے کہ ’ویسے کاروباری مواقع کے حساب سے کراچی کو ملک کا سب سے اہم شہر سمجھا جاتا ہے۔ لیکن صورتحال یہ ہے کہ بہت سی بین الاقوامی آئی ٹی کمپنیاں لاہور میں سرمایہ کاری کر رہی ہیں۔ اس کی وجہ یہاں سیکورٹی کی بہتر صورتحال ہے۔ جب باہر سے سرمایہ کار آتے ہیں تو وہ ذہن میں ایسا خیال لے کر آتے ہیں کہ ایک پسماندہ جگہ جا رہے ہیں۔ لیکن لاہور میں آئی ٹی کا جو انفراسٹرکچر بنایا گیا ہے وہ اس سے بہت متاثر ہوتے ہیں۔ اور اس کا موازنہ جنوبی امریکہ اور میکسیکو جیسے ملکوں سے کرتے ہیں۔‘
    لاہور میں آٹی ٹی کے شعبے میں ہونے والی اس تیز ترقی کی وجہ یہاں موجود پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے ’پلان ایکس‘ اور لاہور یونیورسٹی آف منیجمنٹ سائنسز کے’سینٹر آف انٹرپرنئیرشپ‘ جیسے ’ٹیک انکوبیٹر‘ یا ٹیکنالوجی کو فروغ دینے کے ادارے ہیں۔
    ان ’انکوبیٹرز‘ میں ٹیکنالوجی سے متعلق کاروباری آئیڈیاز رکھنے والے نوجوانوں کی نہ صرف حوصلہ افزائی کی جا رہی ہے بلکہ انھیں تکنیکی اور مالی مدد بھی فراہم کی جا رہی ہے۔
    ان دو منصوبوں کے بدولت اب شادی کے انتظامات ہوں سبزی کی خرید و فروخت یا پھر روزمرہ کا کوئی اور کام لاہور میں اب سٹارٹ اپ کمپنیوں کے ذریعے آن لائن کرنے کا رجحان فروغ پا رہا ہے۔
    سٹارٹ اپس کا فائدہ صرف کاروبار کرنے والی کمپنیوں کو نہیں بلکہ اس کے ذریعے فراہم کی جانے والی سروسز نے عام لوگوں کی زندگی کو بھی کافی آسان بنا دیا ہے۔
    http://www.bbc.com/urdu/pakistan/201...hahore_gini_fz
    پھر کچھ بھونکنے والے کہتے ہیں کہ پنجاب میں کونسی ترقی ہوئی ہے ؟ سڑک بنانے سے کونسی ترقی ہوتی ہے ؟
    ان بے شرموں کو یہ مضمون پڑھائیں جس میں غیر ملکی سرمایہ کار کہہ رہے ہیں کہ لاھور میں سکیورٹی کے حالات بہتر ہیں ۔
    آئی ٹی کا انفرا اسٹرکچر بھی باقی جگہوں کے نسبت بہتر ہے ۔
    کہاں ہیں وہ کے پی کے میں گڈ گورنینس والے ؟ کہاں وہ مگر مچھ کا نام دینے والے اور والیاں ؟
    بے غیرت لوگ

  5. #5
    A_Sattar's Avatar
    A_Sattar is offline Expert Member
    JUST PML-N... & MIAN SAHIB
     
    Join Date
    May 2014
    Location
    USA
    Posts
    3,309
    Quoted
    1106 Post(s)

    Re: پرانی تاریخ کو روتے رہو۔


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •  

Log in