لاہور کا شاہی حمام
Shahi Hammam or Royal Bath



لاہور میں واقع مغلیہ دور کے شاہی حمام کی بحالی کے بعد اسے یونیسکو کے میرٹ ایوارڈ سے نوازا گیا ہے
(تحریر و تصاویر: کمیل حسن)

This site is unique since it is the only surviving public bath from the Mughal Era. It was constructed by Ilmuddin Ansari on the orders of the emperor Shah Jehan. The architectural style of this bath is similar to that adopted in other parts of the Islamic world. The baths were magnificent with fountains, steam rooms and dressing rooms.

Timings: Daily 9 A.M- 4 P.M
Admission: Free
Address: Delhi Gate Side, Inner City




  • لاہور کے دلّی درواے کے ساتھ واقع مغل دور کے شاہی حمام کو بہترین بحالی، حفاظت، تزئین و آرائش پر اقوامِ متحدہ کے ادارہ برائے تعلیم و ثقافت یونیسکو کی جانب سے 2016 کا ہیریٹیج ایشیا پیسفک ایوارڈ آف میرٹ دیا گیا ہے۔
  • KUMAIL HASAN

  • یہ حمام مغل بادشاہ شاہ جہاں کے دور میں تعمیر کیے گئے تھے۔
  • KUMAIL HASAN
    یہ شاہی حمام سنہ 1634 میں لاہور کے گورنر حکیم علم الدین انصاری نے تیار کروائے تھے۔

  • ان حماموں کا مقصد دودراز سے لاہور آنے والے مسافروں کو تازہ دم ہونے کی سہولت فراہم کرنا تھا۔

  • مغل دور کی سب سے بڑی فریسکو پینٹگ یعنی چھت پر تعمیر کے دوران ہی بنائی گئی پینٹگ اسی حمام میں موجود ہے۔

  • مغل دور میں تعمیر کی جانے والی عمارتوں میں سے یہ شاہی حمام برصغیر میں وہ واحد عوامی حمام ہے جو اب تک موجود ہے۔